PDA

View Full Version : نشے میں مست رہتا تھا میں



ساجد تاج
12-15-2012, 11:14 PM
نشے میں مست رہتا تھا میں



دن رات شراب پیتا رہتا تھا میں
اور اللہ کی یاد سے غافل رہتا تھا میں

یوں تو یاد تھا مہ خانے کا ہر اِک رستہ مجھے
پر مسجد کا راستہ ہر بار بھول جاتا تھا میں

سوچا کرتا تھا اکثر تنہائی میں بیٹھ کر
کیا ہوں اور کیا کرتا رہتا تھا میں

دور رہ کر اللہ سے کیسے اپنی زندگی سنوارتا
ناداں تھا جو اپنے انجام سے بے خبر رہتا تھا میں

وہ کرتا ہے اپنے بندوں سے پیار جانتا تھا ہمیشہ سے
بہت موقع عطا کیئے اُس نے پر ہدایت نہ لیتا تھا میں

جاہل تھا اور جہالت میں ہی ڈوبا رہا تمام عمر
نشے کی حالت میں دوسروں کی عزت اُچھالتا تھا میں

نہیں موقع کہ اب مانگ لوں معافی اپنے خالق سے
کھڑا ہوں موت کی دہلیز پر جس ڈرتا رہتا تھا میں

مت ہونے دینا حاوی اپنے اوپر اس لعنت کو ساجد
جسے پی کر اللہ سے بغاوت کرتا رہتا تھا میں

بےباک
12-16-2012, 09:04 AM
نہیں موقع کہ اب مانگ لوں معافی اپنے خالق سے
کھڑا ہوں موت کی دہلیز پر جس ڈرتا رہتا تھا میں

مت ہونے دینا حاوی اپنے اوپر اس لعنت کو ساجد
جسے پی کر اللہ سے بغاوت کرتا رہتا تھا میں

بہت شاندار اور بے حد جاندار سچائی ،
اللہ آپ پر اپنے انعامات نوازے ، آمین

تانیہ
12-16-2012, 01:43 PM
جزاک اللہ ،،،بہت سچ

ساجد تاج
12-16-2012, 10:29 PM
پسند کرنے کا شکریہ بے باک بھائی
اور تانیہ سسٹر کا بھی شکریہ

سقراط
12-17-2012, 12:43 AM
بہترین سبق آموز
شکریہ

ساجد تاج
12-19-2012, 05:44 PM
پسند کرنے کا شکریہ بھائی

admin
12-19-2012, 08:50 PM
میرا بھی شکریہ کریں
میں نے بھی پسند کیا ہے

فضاءسحر
12-19-2012, 09:14 PM
میرا بھی شکریہ کریں
میں نے بھی پسند کیا ہے

نگار
12-19-2012, 09:49 PM
نہیں موقع کہ اب مانگ لوں معافی اپنے خالق سے
کھڑا ہوں موت کی دہلیز پر جس ڈرتا رہتا تھا میں


خوبصورت شاعری پیش کرنے پہ آپ کا بہت بہت شکریہ

ساجد تاج
12-23-2012, 12:19 PM
پسند کرنے کا شکریہ ، اور حوصلہ بڑھانے کے لیے بھی شکریہ

جس نے پسند کیا اُن کو ہم نے پسند کیا مطلب شکریہ ادا کر کے