PDA

View Full Version : قاضی حسین احمد صاحب کا انتقال ہو گیا ،



بےباک
01-06-2013, 03:15 AM
http://i1.tribune.com.pk/wp-content/uploads/2012/08/426363-QaziHussainAhmadq-1345925467-848-640x480.JPG
http://i1.tribune.com.pk/wp-content/uploads/2012/12/484674-professorghafoorahmedphotoirfanali-1356536657-423-640x480.jpg
جماعت اسلامی کے سابق امیر قاضی حُسین احمد ، چوہتر برس کی عمر میں انتقال کرگئے ہیں ۔ وہ دل کے عارضے میں مبتلا تھے۔ انا للہ و انا الیہ راجعون ۔
طبیعت خراب ہونے پر انہیں آج ہی اسلام آباد منتقل کیا گیا تھا۔ جہاں وہ دل کا دورہ پڑنے سے انتقال کرگئے ۔
انکی نمازجنازہ ، آج سہ پہر تین بجے ، جناح پارک پشاور میں ادا کی جائِے گی ۔
قاضی حُسین احمد ، چار مرتبہ جماعت اسلامی کی امیر رہ چکے ہیں ۔
صدر مملکت آصف علی زرداری اور وزیر اعظم راجہ پرویز اشرف نے ، قاضی حُسین کے انتقال پر اہل خانہ سے تعزیت کرتے ہوئے گہرے دکھ کا اظہار کیا ہے ۔
قاصی حسین احمد ممتاز مذہبی سکالر تھے اور امریکہ کی دہشت گرد مخالف مہم اور افغانستان میں جاری لڑائی میں امریکہ کی شمولیت کے مخالف تھے۔
وہ صوبہ خیبر پختون خواہ کے شہر نوشہرہ کے گاؤں زیارت کاکا میں 1938 میں پیدا ہوئے تھے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
جماعت اسلامی پاکستان کے پروفیسر غفور احمد مرحوم کے بعد قاضی حسین احمد کی وفات یقینا ایک بہت بڑا خلا پیدا ہوا ہے ،
اللہ تعالی مرحومین کو جنت میں جگہ عطا فرمائے ، آًمین

سید انور محمود
01-06-2013, 03:47 AM
انا لله و انا اليه راجعون
پاکستان سے ایک اور شریف سیاستدان ہم سے جدا ہوگے۔ اللہ تعالی انکے گھروالوں اور عزیزوں کو صبر عطا فرمائے۔ آمین

pervaz khan
01-06-2013, 12:56 PM
انا لله و انا اليه راجعون

بےباک
01-06-2013, 08:47 PM
قاضی حسین احمد 1938ء میں ضلع نوشہرہ (صوبہ سرحد) کے گاؤں زیارت کاکا صاحب میں پیدا ہوئے اور اپنے دس بہن بھائیوں میں سب سے چھوٹے تھے۔
انہوں نے ابتدائی تعلیم گھر پر اپنے والد مولانا قاضی محمد عبدالرب سے حاصل کی پھر اسلامیہ کالج پشاور سے گریجویشن کے بعد پشاور یونیورسٹی سے جغرافیہ میں ایم ایس سی کی۔

تعلیم مکمل کرنے کے بعد جہانزیب کالج سیدو شریف میں بحیثیت لیکچرار تین برس تک پڑھاتے رہے۔ اس کے بعد ملازمت جاری نہ رکھ سکے اور پشاور میں اپنا کاروبار شروع کردیا اور سرحد چیمبرآف کامرس اینڈ انڈسٹری کے نائب صدر منتخب ہوئے۔

دوران تعلیم اسلامی جمعیت طلبہ پاکستان میں شامل رہنے کے بعد قاضی حسین 1970 میں جماعت اسلامی کے رکن بنے اور 1978 میں جماعت اسلامی پاکستان کے سیکرٹری جنرل بنے اور1987 میں جماعت اسلامی پاکستان امیر منتخب کر لیے گئے۔

اور چار مرتبہ امیرمنتخب ہوئے۔

قاضی حسین احمد 1985 ءمیں چھ سال کےلیے سینیٹ آف پاکستان کے ممبر منتخب ہوئے۔ 1992 ءمیں وہ دوبارہ سینیٹرمنتخب ہوئے تاہم انہوں نے حکومتی پالیسیوں پر احتجاج کرتے ہوئے بعد ازاں سینٹ سے استعفٰی دے دیا۔ 2002 کے عام انتخابات میں قاضی صاحب دو حلقوں سے قومی اسمبلی کے رکن منتخب ہوئے۔

تحریک نظام مصطفٰی کے دوران گرفتاری کے علاوہ افغانستان پر امریکی حملوں اور یورپ میں رسول اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کی شان میں گستاخی پر مبنی خاکوں پر احتجاج کے دوران انہیں گرفتار کیاگیا۔ دوران گرفتاری انہوں نے متعدداہم مقالہ جات لکھے، جو بعد میں کتابی صورت میں شائع ہوئے۔

قاضی حسین احمدکے دو بیٹے اور دو بیٹیاں ہیں۔

قاضی صاحب کو اپنی مادری زبان پشتو کے علاوہ اردو،انگریزی،عربی اور فارسی پر عبور حاصل تھا۔
انا للہ و انا الیہ راجعون

گلاب
01-06-2013, 10:45 PM
انا لله و انا اليه راجعون ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
جماعت اسلامی پاکستان کے پروفیسر غفور احمد مرحوم کے بعد قاضی حسین احمد کی وفات یقینا ایک بہت بڑا خلا پیدا ہوا ہے ،
اللہ تعالی مرحومین کو جنت میں جگہ عطا فرمائے ، آًمین

بےباک
01-07-2013, 08:07 AM
http://ummatpublication.com/2013/01/07/images/news-12.gif

شاہنواز
01-07-2013, 08:29 PM
اللہ پاک مرحوم قاضی حسین کو جنت الفردوس میں جگہ عطا فرمائیں آمین

عبادت
01-08-2013, 03:17 AM
انا للہ و انا الیہ راجعون

سیما
02-28-2013, 06:51 AM
انا لله و انا اليه راجعون