PDA

View Full Version : کیا اندھیروں کے دکھ کیا اجالوں کے دکھ



سقراط
12-11-2010, 11:45 PM
کیا اندھیروں کے دکھ کیا اجالوں کے دکھ
جب ہرا دیں مقدر کی چالوں کے دکھ
جن کی آنکھیں نہیں وہ نہ روئیں کبھی
جان جائیں اگر آنکھ والوں کے دکھ
میری منزل کہاں ہمسفر ہے کدھر
مار ڈالیں گے اب ان سوالوں کے دکھ
تم ملے ہو تمھاری محبت نہیں
ہجر سے بڑھ گئے ہیں وصالوں کے دکھ
دو گھڑی کے لیے پاس بیٹھو اگر
بھول جائیں گے ہم کتنے سالوں کے دکھ
میری سوچوں کے جلتے ہوئے دشت سے
چھین لے آکے اپنے خیالوں کے دکھ

بے باک جی کے نام

صباحت
12-18-2010, 12:34 PM
جن کی آنکھیں نہیں وہ نہ روئیں کبھی
جان جائیں اگر آنکھ والوں کے دکھ

بہترین..زبردست..واہ جی واہ

آزاد خان
12-18-2010, 01:42 PM
بہھت اچھی غزل ھے مگر جن کی آنکھں نھی ھوتی ان کے دل روتے ھیں

تانیہ
12-20-2010, 10:34 PM
بہت زبردست،،،،واہ واہ ...نائس شیئرنگ

سقراط
12-01-2011, 10:46 PM
شکریہ شکریہ

عبادت
12-02-2011, 02:12 AM
اسلام علیکم

بہت خوب سقراط ویر

سقراط
04-25-2013, 01:50 AM
th_smilie_schild

نگار
07-11-2014, 04:08 AM
میری منزل کہاں ہمسفر ہے کدھر
مار ڈالیں گے اب ان سوالوں کے دکھ


بہترین شاعری ارسال کرنے پہ آپ کا شکریہ

سقراط
07-11-2014, 03:02 PM
تم ملے ہو تمھاری محبت نہیں
ہجر سے بڑھ گئے ہیں وصالوں کے دکھ
دو گھڑی کے لیے پاس بیٹھو اگر
بھول جائیں گے ہم کتنے سالوں کے دکھ

saba
07-11-2014, 04:02 PM
دو گھڑی کے لیے پاس بیٹھو اگر
بھول جائیں گے ہم کتنے سالوں کے دکھ
میری سوچوں کے جلتے ہوئے دشت سے
چھین لے آکے اپنے خیالوں کے دکھ
زبردست بہت اچھی غزل شئیر کی آپ نے