PDA

View Full Version : شہزادہ ولید بن طلال ۔ عرب دنیا کا امیر ترین شہزادہ ،



بےباک
04-08-2013, 07:02 PM
http://ummatpublication.com/2013/04/08/images/story9.gif
اسکے بعد آپ کو اس کے طیارے کے بارے بتاتے ہیں ۔جو اس نے خریدا ہے ،ایربس 380 ۔جس کو اڑن محل کہا جاتا ہے ، یعنی فلائنگ پیلیس۔
http://en.rian.ru/images/17819/66/178196637.jpg
طیارے کا اندرونی منظر ۔۔ جناب شہزادہ ولید بن طلال اپنی کرسی پر بیٹھے ہوئے ہیں ،
http://www.therichest.org/cdn/590/220/75/c/wp-content/uploads/feature68-e1355764842310.jpg
http://i.dailymail.co.uk/i/pix/2009/06/05/article-1190780-0538FCA3000005DC-654_964x373.jpg
http://i.dailymail.co.uk/i/pix/2009/06/05/article-1190780-053533AA000005DC-991_964x526.jpg
http://3.bp.blogspot.com/-fWA5rUUcBXo/UGGx7EF2WWI/AAAAAAAADh4/4G7nwqKEHho/s1600/A3805.jpg
http://2.bp.blogspot.com/-ZMkQJW0nKK4/UGGyBuKMHGI/AAAAAAAADiA/ALAnjTVWIWA/s1600/Prince-Alwaleed-bin-Talal-20.jpg
http://2.bp.blogspot.com/-uNtXeXSxqA0/UGGyCxXwkFI/AAAAAAAADiI/vMDPL3Cb8BY/s1600/Prince-Alwaleed-bin-Talal-21.jpg
اس جہاز کے بارے یہاں پر تفصیل دیکھ لی جائے ،
http://thirikoodapuram.blogspot.com/2012/09/saudi-prince-al-waleed-bin-talal.html
ذاتی سفر کے لئے "سپر جمبو" استعمال کرنے والی پہلی شخصیت شہزادہ ولید بن طلال کے ذاتی ہوائی جہاز کی قیمت پانچ سو ملین ڈالرز

سعودی عرب کے شاہی خاندان کے کھرب پتی شہزادہ ولید بن طلال دنیا کے پہلے شخص ہیں جو ذاتی سفر کے لیے ایک بڑے ہوائی جہاز کا استعمال کر رہے ہیں۔ ان کے نئے ملکیتی طیارے "سپر جمبو" ایئر بس A 380 کی کل مالیت پانچ سو ملین ڈالرز سے زیادہ ہے۔

"العربیہ ڈاٹ نیٹ" کے مطابق شہزادہ ولید بن طلال بن عبدالعزیز کے پاس موجود ذاتی ملکیت میں زیر استعمال یہ ہوائی جہاز 2012ء میں دنیا کے دیگر ذاتی جہاز رکھنے والوں کے طیاروں میں سب سے زیادہ گراں قیمت ہے۔

برطانوی اخبار "ڈیلی میل" نے شہزادہ ولید کے طیارے پر ایک رپورٹ میں روشنی ڈالی ہے۔ رپورٹ کے مطابق ویسے تو اس طرح کے ایئر بس میں کم سے کم 600 مسافر سفر کر سکتے ہیں تاہم شہزادہ ولید بن طلال نے اپنے ذاتی مقاصد کے لیے اس میں کچھ مخصوص تبدیلیاں کرائی ہیں۔ اس میں ایک آرام کمرہ بنایا گیا ہے جس میں شہزادے کے پچیس معاونین قیام کر سکیں گے۔

شہزادہ ولید بن طلال نے جدید ترین سہولیات سے آراستہ "سپر جمبو" طیارے کی تیاری کا آرڈر کمپنی کو سنہ 2009ء میں دیا گیا تھا۔ عمومی طور پر اس طرح کے طیاروں کی قیمت تین سو ملین ڈالزز کے لگ بھگ ہوتی ہے، تاہم شہزادہ ولید بن طلال کے طیارے کو خصوصی طور پر تیار کیا گیا ہے۔

"سپر جمبو" ایئر بس دنیا بھر کے مسافر بردار طیاروں میں سب سے بڑا جہاز سمجھا جاتا ہے۔ دو منزلہ اس طیارے میں بیک وقت چار انجمن کام کرتے ہیں، جو طیارے کے حد رفتار میں کسی بھی دوسرے طیارے کی نسبت زیادہ تیز رفتاری کا باعث بنتے ہیں۔

کمپنی کے سپر جمبو طیاروں کی پیداوار سنہ 2005ء میں شروع ہوئی تھی اور اس کے پہلے مسافر طیارے نے 27 اپریل 2005ء کو جنوبی فرانس کے شہر ٹولوز کے ہوائی اڈے سے اڑان بھری تھی۔

سپر جمبو A 380 ایئر بس ایک طرف سے 15200 کلومیٹر تک پرواز کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ یعنی یہ چین میں ہانگ کانگ سے امریکی ریاست پوسٹن تک ایک ہی مرحلے میں سفر مکمل کر سکتا ہے۔ فی گھنٹہ اس کی رفتار نو سو کلو میٹر ہے۔ سنہ 2009ء کے آخر میں دنیا بھر میں اس طیارے کی 200 آرڈرز آئے تھے جن میں عملا فی الحال کمپنی صرف 14 طیارے فراہم کر سکی ہے۔

بےباک
04-08-2013, 07:17 PM
http://www.superyachttimes.com/articles/Image/Editorial/Superyachts/2012-08-Kingdom-5KR/Kingdom-5KR-19-big.jpg
http://www.superyachttimes.com/articles/Image/Editorial/Superyachts/2012-08-Kingdom-5KR/Kingdom-5KR-16-big.jpg
http://www.superyachttimes.com/articles/Image/Editorial/Superyachts/2012-08-Kingdom-5KR/Kingdom-5KR-03-big.jpg
http://www.superyachttimes.com/articles/Image/Editorial/Photo-of-the-Day/2012/2012-06-26-Kingdom-5KR-big.jpg
اوپر والے حصے میں اڑتے محل کو آپ نے دیکھا ، اب اس بحری محل کو دیکھ لیا آپ نے ،
شہزادہ ولید بن طلال نے اس بحری جہاز کو اپنی بیٹی ریم بن طلال کو ھدیہ دیا ہے ،
اس مضمون کی تیاری میں یہاں سے مدد لی گئی ہے ،

http://unitech-matters.com/unitech/index.php?option=com_content&task=view&id=149

بےباک
04-08-2013, 07:31 PM
http://unitech-matters.com/unitech/images/Interesting_Facts/waleed_bin_talal/alwaleed_21.jpg

دنیا کا بلند ترین ٹاور جس کی تعمیر جدہ ۔سعودی عرب میں ہونا ہے ، اس کی تیار کردہ فوٹو ابھی سے دیکھ لیں ، ایک کیلو میٹر اونچا ہے ،
http://www.ibda3world.com/wp-content/uploads/2011/08/01_01.jpg
http://s1.ibtimes.com/sites/www.ibtimes.com/files/styles/picture_this/public/2012/10/04/2011/08/03/142734-saudi-billionaire-prince-alwaleed-speaks-during-a-news-conference-in-r.jpg
http://static.guim.co.uk/sys-images/Guardian/Pix/maps_and_graphs/2013/2/21/1361473255977/Tall-buildings-001.png

منصوبے پر 4 ارب 60 کروڑ ریال لاگت آئے گی شہزادہ الولید بن طلال جدہ میں دنیا کا طویل ترین ٹاور تعمیر کریں گے
سعودی عرب کے ارب پتی شہزادے الولید بن طلال نے ساحلی شہر جدہ میں دنیا کا طویل ترین ٹاور تعمیر کرنے کے منصوبے کا اعلان کیا ہے جس پر چار ارب ساٹھ کروڑ ریال(ایک ارب تئیس کروڑ ڈالرز) لاگت آئے گی۔

شہزادہ ولید بن طلال نے اس ٹاور کی تعمیر کے لیے سعودی عرب کی سب سے بڑی تعمیراتی فرم بن لادن گروپ کے ساتھ معاہدے پر دستخط کر دیے ہیں۔ایک ہزار میٹر سے زیادہ طویل ٹاور شہزادہ ولید کی کمپنی کنگ ڈم ہولڈنگ کے جدہ کے نواح میں تعمیراتی منصوبے کنگ ڈم سٹی میں تعمیر کیا جائے گا اور یہ منصوبہ پانچ سال کے عرصے میں مکمل ہو گا۔

شہزادہ ولید نے منگل کے روز دارالحکومت ریاض میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ''جدہ میں اس ٹاور کی تعمیر سے ایک مالیاتی اور معاشی پیغام جائے گا جسے نظرانداز نہیں کیا جانا چاہیے''۔ انھوں نے کہا کہ اس کا ایک سیاسی پیغام بھی ہے اور ہم دنیا کو یہ بتانے جا رہے ہیں کہ سعودی شہری اپنے گردونواح میں جو کچھ رونما ہو رہا ہے، جو انقلابات برپا ہو رہے ہیں،اس سب کے باوجود اپنے ملک میں سرمایہ کاری کررہے ہیں۔

جدہ ٹاور جب پانچ سال کے بعد مکمل ہوگا تو یہ دبئی کے 828میٹر طویل برج خلیفہ کی جگہ لے لے گا جو اس وقت دنیا کا طویل ترین ٹاور ہے۔ برج خلیفہ کو عمار پراپرٹیز نے تعمیر کیا ہے اور اس پر ڈیڑھ ارب ڈالرز لاگت آئی تھی۔ جدہ ٹاور میں ایک ہوٹل، سروس اپارٹمنٹس، لگژری دفاتر اور کمرے ہوں گے۔ اس کا ڈیزائن امریکی فرم ایڈرائن اسمتھ اور گورڈن گل تیار کرے گی۔

سعودی عرب کے فرمانروا شاہ عبداللہ کے بھتیجے شہزادہ الولید نے بتایا کہ ''ٹاور کی اونچائی ایک ہزار میٹر سے زیادہ ہوگی لیکن اس کی حتمی بلندی کو خفیہ رکھا جائے گا۔یہ بالکل ایک ہزار میٹر نہیں ہوگی بلکہ اس سے بھی زیادہ ہوسکتی ہے اور چند ایک لوگوں کواس کی حتمی اونچائی کا علم ہو گا''۔

کنگڈم ہولڈنگ نے ایک بیان میں بتایا ہے کہ ٹاور کی تعمیر کے لیے 33۰35 فی صد حصص کے ساتھ جدہ اکنامک کمپنی کے نام سے ایک فرم قائم کردی گئی ہے۔ اس کے علاوہ ابرار انٹرنیشنل ہولڈنگ کمپنی کے پاس بھی 33۰35 فی صد حصص ہوں گے جبکہ بن لادن گروپ کے 16۰63 فی صد اور کاروباری شخصیت عبدالرحمان شربتی کے 16۰67 فی صد حصص ہوں گے۔

شہزادہ ولید کا کہنا تھا کہ جدہ میں ٹاور کی تعمیر ایک بڑی تبدیلی کا پیش خیمہ ثابت ہوگی۔یہ سعودی عرب کے لیے ایک فخر ہو گا۔ اس وقت جدہ کو اس طرح کی عمارت کی ضرورت تھی۔چالیس لاکھ آبادی والے جدہ شہر میں کنگ ڈم ٹاور اور ''مملکت شہر'' بھی 75 ارب ریال کی لاگت سے تعمیر کیے جا رہے ہیں۔ توقع ہے کہ یہ دونوں منصوبے آیندہ دس سال میں پایہ تکمیل کو پہنچیں گے۔


اس کے بعد والے صفحات میں اس کی بائیک اور قیمتی کار کے بارے جلد ہی تفصیل دی جائے گی ،

سقراط
04-08-2013, 08:43 PM
واہ جناب کیا بات ہے

نگار
04-09-2013, 12:02 AM
اضافی معلومات پہنچانے پہ آپ کا بہت بہت شکریہ

عبادت
04-10-2013, 12:53 AM
زبردست واہو کمال کی معلومات دی شکریہ