PDA

View Full Version : یونانی معشیت



انجم رشید
07-18-2013, 06:59 AM
یونان: اصلاحات کا قانون منظور، ہزاروں افراد بے روزگار
آخری وقت اشاعت: جمعرات 18 جولائ 2013 ,* 00:07 GMT 05:07 PST

http://wscdn.bbc.co.uk/worldservice/assets/images/2013/04/28/130428223439_greek__parliament_304x171_reuters_noc redit.jpg حکومت کی جانب سے کفایت شعاری کی مہم کے خلاف کئی مظاہرے ہوئے ہیں


یونان کی پارلیمان نے سرکاری شعبے میں اصلاحات کے لیے ایک نئے قانون کی منظوری دی ہے جس سے ملک میں ہزاروں افراد کی ملازمت ختم ہو جائے گی۔
اصلاحات کے قانون کی منظوری سے یونان کو بیل آؤٹ پروگرام کے تحت چھ ارب اسی کروڑ ڈالر کا قرض ملے گا۔قانون کے حق میں ایک سو چالیس ووٹ جبکہ اس کی مخالفت میں ایک سو ترپن ووٹ پڑے۔
ایوان میں قانون پر بحث کے دوران ہزاروں افراد نے پارلیمنٹ کی عمارت کے باہر احتجاج کیا جبکہ وزیراعظم اینٹونئیس سمارس نے کہا کہ معیشت کی بہتری کے لیے اُن کے پاس اخراجات میں کمی سے سوا کوئی اور راستہ نہیں ہے۔
نئے قانون کے تحت تقریباً چار ہزار سے زائد ملازمتیں ختم ہوں گی جبکہ سال کے اختتام تک مزید پچیس ہزار ملازمین کو ’موبیلٹی پول‘ میں ڈال دیا گیا۔
یونان میں اکثریت کا کہنا ہے کہ ان پچیس ہزار افراد کی ملازمتیں بھی ختم ہو جائیں گی۔
یورپی یونین، پورپی سنٹرل بینک اور بین الااقوامی مالیاتی فنڈ کے مطالبات کو پورا کرنے کے لیے سنہ 2014 تک یونان کو گیارہ ہزار ملازمتیں ختم کرنا ہوں گی۔
اس سے قبل کفایت شعاری کے اقدامات کے نتیجے میں تنخواہوں میں کمی کی گئی تھی۔
ایتھنز میں بی بی سی کے نامہ نگار کرس مورس کا کہنا ہے کہ تمام اقدامات کے باوجود بھی یونان کا قرض ناقابلِ برداشت حد تک بڑھ گیا ہے۔انھوں نے کہا کہ اس کا مطلب یہ ہے کہ یونان کو قرض چُکانے کے لیے مزید قرض لینا ہو گا۔
یونان میں بے روزگاری کی شرح ستائیس فیصد ہے اور حکومت کے خلاف لوگوں میں پائے جانے والے غصے کے سبب گزشتہ چند برسوں میں چار حکومتیں تبدیل ہوئی ہیں۔
مئی 2010 سے یونان کی معشیت کا انحصار یورپی یونین اور آئی ایم ایف سے ملنے والے قرضوں پر ہے۔
نامہ نگاروں کا کہنا ہے یونان میں مالیاتی بحران کی بڑی وجہ ٹیکس چوری ہے۔
بی بی سی اردو

نگار
07-20-2013, 06:41 PM
اضافی معلومات پہنچانے پہ آپ کا بہت بہت شکریہ