PDA

View Full Version : رضاۓ الہی اور غلام؛



تا بی
08-23-2013, 02:23 PM
ایک شخص کا ایک غلام تھا جو بہت محنتی اور ایماندار تھا اس کی ماں، بیوی اور بچے بھی اس کے ساتھ تھے.
ایک دن وہ کام پہ نہ آیا تو اس کے مالک نے سوچا کہ مجھے اس کی تنخواہ میں کچھ اضافہ کر دینا چاہیئے تاکہ وہ اور دلجمعی سے کام کرے اور آئندہ غائب نہ ہو.
...
اگلے دن مالک نے اس کی مقررہ تنخواہ سے کچھ زیادہ پیسے اسے دیے جو اس نے خاموشی سے رکھ لیۓ اور کچھ نہ کہا، لیکن کچھ دنوں بعد جب وہ دوبارہ غیر حاظر ہوا تو اس کے مالک نے غصے میں آ کر اس کی تنخواہ میں کیا گیا اضافہ ختم کرنے کا فیصلہ کیا اور اگلے دن پھر اس کو پہلے والی تنخواہ ہی دی، غلام نے اب بھی خاموشی اختیار کی اور کچھ نہ کہا تو مالک نے
پوچھا؛ "جب میں نے اضافہ کیا تو تم خاموش رہے اور اب جب کمی کی تو پھر بھی خاموش ہو کیوں؟"
تب غلام نے جواب دیا؛ "جب میں پہلے دن غیر حاظر تھا تو اس کی وجہ بچے کی پیدائش تھی اور آپ کی طرف سے تنخواہ میں اضافے کو میں نے وہ رزق خیال کیا جو وہ اپنے ساتھ لے کے کر آیا، اور جب میں دوسری مرتبہ غیر حاظر تھا تو اس کی وجہ میری ماں کی وفات تھی اور آپ کی طرف سے تنخواہ میں کمی کو میں نے وہ رزق خیال کیا جو وہ اپنے ساتھ واپس لے گئی".


آپ سب کو تابی کی طرف سے جمعہ مباذک ھو۰ ...
پاک رب آپ سب کی جائیز دعائیں قبول کرے
اور سب کو خوش رکھے آمین ثم آمین.




حضرت علی رضی الله هو تعالی عنہ کا ارشاد ھے۰۰۰

دل سے دوسروں کےلئیے دعامانگ کے دیکھو
کبھی اپنےلئیے دعامانگنے کی ضرورت نہیں پڑے گی.۰۰۰
دعاؤں میں یاد رکھیے گا...