PDA

View Full Version : پاکستان میں چینی سفیر لیوجیان کاخصوصی کو انٹرویو



گلاب خان
12-14-2010, 09:13 PM
چینی وزیراعظم وین جیابائو کے آئندہ دورہ پاکستان کے دوران دونوں ملکوں کے درمیان 20 معاہدوں اوریاداشتوں پر دستخط ہونے کا امکان ہے ،اس بات کااظہار پاکستان میں تعینات چینی سفیر لیو جیان نے ریڈیو پاکستان ،پی ٹی وی اور اے پی پی کے ساتھ پینل انٹرویو میں کیا انہوں نے کہا کہ اس بات کی توقع ہے کہ دونوں ممالک معاشی وتجارتی تعاون کے پانچ سالہ منصوبہ کو حتمی شکل دیں گے ۔پاکستان اورچین کے درمیان مثالی سیاسی وتزویراتی دوستی موجود ہے اور چینی وزیراعظم کے دورہ کے دوران دونوں اطراف سے تبادلہ خیالات ہوگاکہ معاشی ودیگر شعبوں میں تعاون کوکیسے بڑھایا جائے ۔انہوں نے کہا کہ چین کی ترجیح ہوگی کہ پاکستان سے معاشی تعاون کووسیع تر کیا جائے اور یہ چینی وزیراعظم کی پاکستانی لیڈر شپ سے بات چیت کے ایجنڈے کا اہم ترین نکتہ ہوگا ،اس کے ساتھ ہی توانائی اور مواصلات کے شعبوں میں تعاون بھی ایجنڈے کا اہم حصہ ہوگا انہوں نے انکشاف کیا کہ پاکستان چین کا جنوبی ایشیاء میں دوسرا ور دنیا میںتیسرا بڑا تجارتی پارٹنر ہے اور پاکستان چین کیلئے درآمدات کا تیسرا بڑا ذریعہ ہے اور برآمدات کی پانچویں بڑی منڈی ہے۔ایک سوال کے جواب میں چینی سفیر لیو جیان نے کہا کہ دونوں ممالک کے درمیان دوطرفہ تجارت کا حجم رواں سال کے پہلے نو ماہ میں 6.22 ارب ڈالر تک پہنچ گیا ہے ،اور یہ 29فیصد کی بڑھوتری ظاہر کررہا ہے ،اس دوران پاکستان سے چین کی درآمدات 1.169ارب ڈالر رہی ہیں جوکہ پچھلے سال کے مذکورہ دورانیے کے مقابلے میں 36فیصد اضافہ ہے ۔ایک اورسوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ستمبر تک چین نے پاکستان میں 19ارب ڈالر کے منصوبے یاتو مکمل کیے یا ان کے معاہدوں پر دستخط کیے ہیں ۔پاکستان اورچین کے درمیان بہترین سیاسی ،معاشی ،تجارتی تعلقات وتعاون خطے میں امن اوراستحکام کی ضمانت ہیں۔انہوں نے کہا کہ چینی وزیراعظم کے حالیہ دورہ پاکستان کے دوران وزیراعظم سید یوسف رضاگیلانی کو چین کے سرکاری دورہ کی دعوت دی جائے گی جبکہ صدر مملکت آصف علی زرداری چین کے 6اور وزیراعظم سید یوسف رضاگیلانی تین دورے کرچکے ہیں جوکہ دونوں ممالک کے درمیان تعلقات کو مضبوط بنانے میں اہم کردارکے حامل ثابت ہوئے ،ان دوروں کے دوران دونوں ممالک معیشت اور دیگر شعبوں میں ایک دوسرے کے تجربات سے مستفید ہوئے ۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ چین کی یہ اولین ترجیح ہے کہ دونوں ممالک کے عوام کے درمیان رابطوں کو فروغ دیا جائے کیونکہ ہم سمجھتے ہیں کہ مذکورہ اقدام سے پاک چین دوستی اپنی بلندیوں تک پہنچے گی ۔چین ،پاکستانی طلباء کیلئے مزید سکالرشپس کااعلان کرے گا اور مزید پاکستانی نوجوانوں کو چین آنے کی دعوت دی جائے گی ۔ایک اورسوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ چین پاکستان کو سیلاب کی تباہ کاریوں کے بعد بحالی اور تعمیرنو کے مرحلے میں مکمل مدد فراہم کرتا رہے گا ۔انہوں نے کہا کہ چین ،پاکستان کی دہشت گردی کے خاتمے کیلئے کی جانیوالی کوششوں کو خراج تحسین پیش کرتا ہے ،چین دہشت گردی کے خاتمے کیلئے پاکستان کی حکمت عملی کی مکمل حمایت کرتا ہے اور پاکستان کی قربانیوں کااحترام کرتا ہے ۔آخرمیں انہوں نے کہا کہ میں پاکستان سے محبت کرتا ہوں اور امید ہے کہ جلد ہی اردو سیکھ جائوں گا ۔مجھے یقین ہے کہ آپ کواگلا انٹرویو اردو میں دوں گا ۔

بےباک
12-14-2010, 11:04 PM
بہت خوب لکھا اور تبصرہ کیا ، شکریہ