PDA

View Full Version : دنیا کے عجیب و غریب مقابلے



سقراط
11-01-2013, 04:41 PM
دنیا کے عجیب و غریب مقابلے

1172
اگر آپ گارا فٹبال کھیل رہے ہیں تو آپ تقریباﹰ ایک میٹر تک بھی میدان کی زمین میں دھنس سکتے ہیں۔ یہ کھیل فن لینڈ کے ان علاقوں میں ایجاد ہوا تھا، جو دلدلی ہیں۔ گزشتہ تیرہ برسوں سے وہاں اس کھیل کے عالمی مقابلے منعقد ہوتے ہیں۔

1173
کیچڑ والے پانی میں تیراکی کے دوران چشمے صرف اس وجہ سے لگائے جاتے ہیں کہ غوطے لگاتے ہوئے گدلا اور نمکین پانی آنکھوں میں نہ جائے۔ ویلز میں واقع اس 55 میڑ لمبے نالے میں گزشتہ 25 برسوں سے عالمی مقابلے کرائے جا رہے ہیں۔ شریک کھلاڑیوں کو لازمی طور دو چکر لگانا ہوتے ہیں۔ یہاں کے مٹیالے پانی میں غسل کو صحت کے لیے اچھا قرار دیا جاتا ہے۔

1174
کسی ڈھلوان سے لڑکھڑاتے ہوئے نیچے گرنا کوئی آسان کام نہیں۔ اس کھیل میں کھلاڑی کی گردن اور ہڈیوں کو بھی نقصان پہنچ سکتا ہے۔ اس عجیب و غریب دوڑ کا انعقاد برطانیہ کے علاقے کوپرز ہل میں کیا جاتا ہے۔ گزشتہ 200 برسوں سے پنیر کا ایک پہیہ نما بڑا سا ٹکڑا نیچے کی طرف لڑھکایا جاتا ہے اور شرکاء کو اسے نیچے پہنچنے سے پہلے پکڑنا ہوتا ہے۔

1175
عمومی طور پر غوطہ خوری کے مقابلوں میں سب سے پہلے ہاتھ یا بازو پانی کو لگنے چاہییں لیکن 'سپلیش ڈائیو' نامی اس کھیل میں سب سے پہلے کھلاڑی کے کولہے پانی سے ٹکراتے ہیں۔ آسٹریا سے شروع ہونے والے اس کھیل کے سن 2006ء سے عالمی مقابلے بھی منعقد کرائے جاتے ہیں۔

1176
اس کھیل میں ربڑ کے بوٹوں کو اتنی دور پھیکنا ہوتا ہے، جتنا کہ کوئی بھی کھلاڑی پھینک سکتا ہے۔ اس کھیل میں عالمی ریکارڈ فن لینڈ کے ایک باشندے کا ہے، جس نے ایک بوٹ 68,03 میٹر دور پھینکا تھا۔ روایات کے مطابق یہ کھیل فن لینڈ کے مچھیروں نے ایجاد کیا تھا۔ جہاں موسم گرما میں دن انتہائی طویل اور سرما میں انتہائی چھوٹے ہو جاتے ہوں، وہاں ایسا خیال آ ہی سکتا ہے۔

سقراط
11-01-2013, 04:44 PM
1177
اس کھیل کے شرکاء کو خواتین کو اٹھا کر مختلف رکاوٹیں عبور کرنا ہوتی ہیں۔ جس خاتون کو اٹھایا جاتا ہے، اس کی عمر کم از کم 17 برس ہونی چاہیے اور وزن 49 کلوگرام۔ اس کھیل کی یہ بھی شرط ہے کہ اٹھائی جانے والی عورت کھلاڑی کی بیوی نہیں ہونی چاہیے تاہم متعلقہ کھلاڑی اپنی کسی ہمسائی یا پھر کسی دوست عورت کو اٹھا سکتا ہے۔


1178
جی ہاں، یہ کوڑے کے کنٹینر ہیں، جنہیں گاڑیوں کے طور پر استعمال کیا جا رہا ہے۔ اس مقابلے میں کوڑے کے ڈبوں کی رفتار 60 کلومیٹر فی گھنٹہ تک پہنچ سکتی ہے۔ جرمنی سے شروع ہونے والے اس کھیل کے قوانین کے مطابق کوڑے کا ڈبہ صاف، خالی اور بے آواز ہونا چاہیے۔ اس کھیل میں کوڑے کے ایسے کنٹینر استعمال کیے جاتے ہیں، جن میں 120 لٹر کوڑا کرکٹ ڈالا جا سکتا ہو۔


1179
یہ کھیل باکسنگ اور شطرنج کا ایک غیرمعمولی امتزاج ہے۔ اس میں کھلاڑیوں کو چار چار منٹ دورانیے کے شطرنج کے چھ راؤنڈ کھیلنا ہوتے ہیں اور دو دو منٹ دورانیے کے باکسنگ کے پانچ راؤنڈز میں حصہ لینا ہوتا ہے۔


1180
اونچی ایڑی والی جوتیوں کے ساتھ صرف چلنا ہی مشکل ہے، دوڑنا تو اس سے بھی کئی گنا مشکل اور دردناک ہوتا ہے۔ اس کھیل میں خواتین 'ہائی ہیلز' پہنے دوڑ لگاتی ہیں۔ اس دوڑ کے ذریعے بڑے بڑے ڈیپارٹمنٹل اسٹور عوام کی توجہ حاصل کرنے کی کوشش کرتے ہیں۔ جیتنے والی خواتین کو ایک ووچر دیا جاتا ہے، جس کے بدلے وہ بہت زیادہ خریداری کر سکتی ہیں، سب سے پہلے شاید کسی آرام دہ جوتے کی شاپنگ۔


مصنف:آندریاس زیمونز / امتیاز احمد

ایم-ایم
11-02-2013, 06:12 PM
دلچسپ معلومات کے لئے شکریہ

تانیہ
11-03-2013, 01:31 PM
دلچسپ شیئرنگ ۔۔۔۔تھینکس

کنگ ناصر
07-18-2016, 06:43 PM
زبردست لا جواب سقراط صاحب۔۔۔۔۔