PDA

View Full Version : خوف سے بچیے اور اللہ کے نزدیک ہوجائیے !!!



ملہار
12-07-2013, 04:37 PM
خوف زدہ انسان پتوں کی کھڑکھڑاہٹ سے ڈرتا ہے۔

وہ آنے والوں سے ڈرتا ہے۔
وہ ہر ایک سے ڈرتا ہے۔
اپنے ماضی سے ڈرتا ہے، اپنے حال سے ڈرتا ہے۔
اپنے مستقبل سے ڈرتا ہے، بلکہ اپنے پرائے یہاں تک کہ اپنے ہی سائے سے ڈرتا ہے۔

خوف اگر ایک بار دل میں بیٹھ جائے تو پھر وجہ کے بغیر ہی خوف پیدا ہوتا رہتا ہے۔

ڈرے ہوئے انسان کے لئے ہر امکان ایک ٹریجڈی ہے۔

اس کے لئے ہر واقعہ ایک حادثہ ہے ۔

خوف زدہ انسان خود کو اس بھری دنیا میں تنہا محسوس کرتا ہے۔
خوف احساسِ تنہائی ضرور پیدا کرتا ہے۔
خوف زدہ انسان کی مثال ایسے ہے، جیسے کسی وسیع صحرا میں تنہا مسافر کو رات آجائے۔

اور جب انسان اپنے وجود سے بے خبر ہو، اسے اپنے وجود کا احساس بھی مشکل سے ہوتا ہے۔

خوف سے بچنے کا واحد، مناسب اور سہل طریقہ یہی ہے کہ انسان میں خدا کا خوف پیدا ہو جائے۔

یہ خوف، ہر خوف سے نجات دلاتا ہے۔

انسان اپنے آپ کو اللہ کے سپرد کر دے تو ہر خوف ختم ہو جاتا ہے۔
اگر منشائے الہٰی کو مان لیا جائے تو نہ زندگی کا خوف رہتا ہے نہ موت کا۔نہ امیری کا ، نہ غریبی کا۔
نہ عزت کی تمنا ، نہ ذلت کا ڈر۔
یہ سب اس کے انداز ہیں۔ وہ جو چاہے عطا کرے۔ ہمیں راضی رہنا ہے۔
ورنہ ہماری سر کشی اور خود پسندی کی سزا صرف یہی ہے کہ ہمیں اندر سے دبوچ لیا جائے۔

تو کوشش کیجیے کہ اللہ کی ذات کے سوا کسی سے خوفزدہ نہ ہوں کیونکہ یہ خوف ہی تو ہے جو انسان ہر غلط کام کرنے پر آمادہ ہوجاتا ہے ہر ایک کی زیادتی برداشت کر نے پر مجبور کرتا ہے ۔"

بےباک
12-07-2013, 08:00 PM
جزاک اللہ ۔۔

خوف زدہ انسان پتوں کی کھڑکھڑاہٹ سے ڈرتا ہے۔

تانیہ
12-08-2013, 07:31 PM
جزاک اللہ