PDA

View Full Version : کافر کافر سارے ہی کافر۔۔۔۔۔۔۔۔۔



ایم-ایم
12-20-2013, 11:58 AM
پھولوں کی خوشبو بھی کافر
لفظوں کا جادو بھی کافر

یہ بھی کافر ۔۔ وہ بھی کافر
تو بھی کافر ۔۔۔ میں بھی کافر

فیض بھی کافر ۔۔ منٹو بھی کافر
بھٹو بھی کافر ۔۔۔ جناح بھی کافر

برگر کافر ۔۔ پیزا کافر
طبلہ کافر ۔۔ ڈھول بھی کافر

پیار بھرے دو بول بھی کافر
وارث شاہ کی ہیر بھی کافر
حبیب جالب کا دستور بھی کافر

چاہت کی زنجیر بھی کافر
بیٹی کی گڑیا بھی کافر
ہنسنا کافر ، خوشی کے گانے کافر
ٹخنو سے نیچے لٹکے تو اپنی یہ شلوار بھی کافر

فن بھی اور فنکار بھی کافر
یونیورسٹی کے اندر کافر، باہر کافر
میلے ٹھیلے سب کافر کافر

مندر میں تو چلو بت ہوتا ہے
مسجد کے بھگوان بھی کافر
کچھ مسجد کے اندر کافر
کچھ مسجد کے باھر کافر

مسلم ملک میں اکثر کافر
کافر۔۔۔۔۔۔۔ کافر
تم بھی کافر۔۔ یہ مسلک اور وہ مسلک

شروح سے لے کر آخر تک
اکرم اس خون ریزی پر جو نہ بولے وہ بھی کافر

:treeswing:

تحفہ برائے تکفیری حضرات