PDA

View Full Version : خلائی تہذیب



گلاب خان
12-15-2010, 07:49 PM
مغربی دنیا پچھلے 20 سال سے ایک انوکھی تحقیق میں مشغول ہے ۔ یہ ہے خلا میں زندہ مخلوقات کی آواز کو سننا: (Listening for life in space)

بظاہر اس تلاش کا محرک جدید علما کا وہ مفروضہ ہے جس کو ارتقا کہا جاتا ہے ۔ مغربی علما نے زندگی کی جو ارتقائی توجیہہ کی ہے ، اس کے مطابق لازم آتا ہے کہ وسیع خلا میں دوسرے مقامات پر بھی اسی طرح زندگی کی انواع موجود ہوں جس طرح وہ ہماری زمین پر پائی جاتی ہیں ۔ خلا میں سفر کا ایک خاص مقصد ان زندگیوں سے ملاقات ہے ۔ اس مفروضہ پر ان کو اتنا یقین ہے کہ اس کا ایک خاص نام بھی دے دیا گیا ہے ۔ یعنی بالائے خلا تہذیب (Extraterrestrial civilisation)

اس کے علاوہ امریکہ میں اور دوسرے ترقی یافتہ ملکوں میں خاص طرح کے بہت بڑ ے بڑ ے اینٹینا (Antenna) لگائے گئے ہیں جن کو عام زبان میں ریڈیائی کان (Radio ears) کہتے ہیں ۔ ان مشینوں سے بالائے خلا میں سگنل بھیجے جاتے ہیں اور حساس قسم کے آلات ہر وقت تیار رہتے ہیں کہ اوپر سے آنے والے متوقع سگنل کو سن سکیں ۔

ایک مبصر نے ان کوششوں پر تبصرہ (ٹائم میگزین 21 مارچ 1983) کرتے ہوئے اس کی روح کو ان مختصر لفظوں میں بیان کیا ہے : اگر تم واقعۃً وہاں ہو تو اپنے دوستوں سے بولو:
If you are really there, please call to your friends.

زمین پر زندگی اور شعور کا وجود ساری معلوم کائنات میں ایک انتہائی نادر اور مستثنیٰ واقعہ ہے ۔ چونکہ یہ شعور اپنا خالق آپ نہیں ، اس لیے اس کا وجود لازمی طور پر تقاضا کرتا ہے کہ یہاں زندگی اور شعور کا ایک اور خزانہ زیادہ بڑ ی سطح پر موجود ہو جو زمین کی زندگی اور شعور کا سرچشمہ ہو۔ حقیقت یہ ہے کہ زندہ انسان کی موجودگی زندہ خدا کی موجودگی کا ثبوت ہے ۔ جدید انسان اس امکان کو بالواسطہ انداز میں تسلیم کرتا ہے ۔ البتہ وہ اس وجود کو خلائی زندگی قرار دے کر یہ ظاہر کرنا چاہتا ہے کہ یہ وجود ہماری ہی طرح کا ایک وجود ہے نہ کہ ہم سے برتر کوئی وجود۔ وہ محض ایک خلائی تہذیب ہے نہ کہ کوئی خالق اور مالک خدا۔