PDA

View Full Version : غم بہ دل، شکر بہ لب، مست و غزل خواں چلیے



جاذبہ
05-09-2014, 08:50 PM
غم بہ دل، شکر بہ لب، مست و غزل خواں چلیے​
جب تلک ساتھ ترے عمرِ گریزاں چلیے​

رحمتِ حق سے جو اس سَمت کبھی راہ ملے​
سوئے جنّت بھی براہِ رہِ جاناں چلیے​

نذر مانگے جو گلستاں سے خداوندِ جہاں​
ساغرِ مے میں لیے خونِ بہاراں چلیے​

جب ستانے لگے بے رنگیِ دیوارِ جہاں​
نقش کرنے کوئی تصویرِ حسیناں چلیے​

کچھ بھی ہو آئینۂ دل کو مصفّا رکھیے​
جو بھی گزرے، مثلِ خسروِ دوراں چلیے​

امتحاں جب بھی ہو منظور جگر داروں کا​
محفلِ یار میں ہمراہِ رقیباں چلیے
:rose::rose::rose::rose::rose::rose::rose::rose:

تانیہ
05-10-2014, 09:26 AM
واہ واہ
بہت خوب

جاذبہ
05-10-2014, 08:43 PM
آداب ، شکریہ شکریہ