PDA

View Full Version : وی پی آئی مجرم ۔یوسف رضا گیلانی اور امین فہیم ۔ ملک دشمن



بےباک
05-30-2014, 07:48 AM
http://ummat.net/2014/05/30/images/news-03.gif

بےباک
05-31-2014, 12:34 PM
http://ummat.net/2014/05/31/images/story1.gif

زیرک
06-08-2014, 05:54 PM
مجرم جرم ثابت ہونے پہ لکھتے ہیں جناب
ویسے آپ کے قلم کو کبھی شریفوں کے خلاف لکھتے نہیں دیکھا گیا، ذرااس کی وضاحت کیجئے گا۔

حبیب صادق
06-09-2014, 12:01 AM
آگے آگے دیکھیئے ہوتا ہے کیا۔۔۔۔۔۔۔۔

بےباک
06-09-2014, 09:52 AM
یہ سب ملزم ہی رہیں گے ، بے فکر رہیں ، کسی کا جُرم ثابت نہی ہو گا ،جیسا کہ سابقہ ادوار میں ہوتا رہا ہے ، انصاف اتنا دیر سے اور مقدمات اتنے لمبے ہو جاتے ہیں کہ دس بیس سال تک فیصلے نہی ہوتے ، گواہ مار دیے جاتے ہیں
فائلیں غائب کر دی جاتی ہیں ، جج اٹھا لئے جاتے ہیں ، فائلیں دب جاتی ہیں ، کرپشن کا پیسہ اتنا زیادہ ہوتا ہے کہ تحقیقی اداروں کو مکمل خریدا جا سکتا ہے ، یہ سب ہی بڑے آدمیوں کے کھیل ہیں ،چھوٹا آدمی تو دس روپیہ کے لئے
بیس بیس سال اندر رہتا ہے ،
سب مایا کا کھیل ہے ، مقدمات ہمارے ملک میں کبھی ثابت نہی ہوتے ،مجرمین بہت ہی کم سزا پاتے ہیں ، زرداری صاحب نے کئی سال جیل بھگتی ، مگر جب وہ اقتدار میں آئے تو انہوں نے کیوں ان کیسوں پر ان کے خلاف جھوٹے الزام لگانے والوں پر گرفت نہ کی ، اب بھی جب سابق وزراء پر مقدمات بنائے گئے تو یہ صدا سنائی دی ، کہ موجودہ حکمران اس طرح مقدمات نہ بنائیں ،یا ایسا کام نہ کریں کہ کل ان کی باری آئے تو وہ برداشت نہ کر سکیں ، عجیب بات کی گئی ہے ، قانون اور انصاف کو آواز نہی دی گئی بلکہ دھمکی دی گئی ہے ،
اس ملک میں مُک مکا کا دور ایک عرصے سے چل رہا ہے ،مجھے اس حمام میں سب ہی ننگے دکھائی دیتے ہیں ۔بے نظیر مرحومہ کے قاتلوں کو 5 سالہ دور میں جب سزا نہی دلوا سکے اور نہ ہی تحقیق مکمل ہوئی ،اسی طرح ضیاء الحق کے قاتلوں کو ان کا بیٹا وزیر ہونے کے باوجود تلاش نہ کر سکا ، تو حیرت ہوتی ہے،
نواز شریف اور اس کا دور حکومت دوسرے حکمرانوں کی طرح کوئی قابل فخر نہی رہا ، مگر۔۔۔۔۔۔۔۔۔ وہ کیا وجہ ہے کہ 5 ، 5 سال کا وقت حکومت میں گزارنے کے باوجود بڑے مگر مچھوں کو ہمیشہ ہی نظر انداز کیا گیا ،
مونس الہی ، پنجاب بینک ،مجرم ہوتے ہوئے بھی ملزم ہی رہتا ہے ، اور جرم ثابت ہی نہی ہونے دیتا ، مدعی ہی غائب ہو جاتا ہے یا پھر چمک یا پھر دھمک ۔ یا پھر اس کے رشتے دار ہی اٹھا لئے جاتے ہیں اور پھر وہ مکھن سے بال نکالنے کی طرح صاف نکل جاتے ہیں ،

یہ سارا نظام ہی تبدیل کرنا ہو گا ، یہ نظام متعفن ہو چکا ہے، قانون میں سقم ہیں ، اقراء پروری ہے ،ثوابدیدی اختیارات بے حد وسیع ہیں ، قانون میں جگہ جگہ رخنے ہیں ،ظلم اور ظالم کو بچانے کے لئے سب پہنچ جاتے ہیں ،
مظلوم وہیں پھنسا ہوا آہیں بھرتا رہتا ہے او ر آسمان کی طرف دیکھتا رہتا ہے ۔

سید انور محمود
06-14-2014, 06:00 AM
میرئے محترم بے باک صاحب
لگتا ہے زیرک صاحب کے سوال پر آپ جذباتی ہوگے تھے۔
ویسے خیال رکھیں آئندہ آپ ان کے بارے میں لکھیں تو "وی آئی پی مجرم صاحبان" لکھیں کیونکہ یہ دونوں صاحبان پیر بھی ہیں۔ آپکو اس لیے بتارہے ہیں کہ کل ہوسکتا آپکو ان سے پانی پر دم کروانا پڑئے۔

بےباک
06-14-2014, 07:06 AM
شکریہ جناب ، آپ نے سچ کہا ،
آئیندہ احتیاط کروں گا
جزاک اللہ

زیرک
06-14-2014, 07:23 PM
بے باک جی آپ کی باتیں اپنی جگہ بجا ہیں مگر آپ انصاف کا ایک اصول نظر انداز کر رہے ہیں جس الزام پر عدالت فیصلہ نہ دے تب تک وہ شخص مجرم نہیں ملزم ہی رہتا ہے۔آپ نے یہاں مقدمات کی طوالت کے بارے میں کچھ ارشاد فرمایا ہے تو ایسا صرف ایک پارٹی کے ساتھ نہیں ہوتا، سبھی کے ساتھ ایسا ہو رہا ہے۔یہاں تو جج حضرات بھی قانون کے مطابق نہیں بلکہ اپنی پسند کے مطابق فیصلے کرتے ہیں۔جو چہرہ اچھا نہیں لگتا اسے تو روز عدالت میں گھسیٹا جاتا ہے اور جن کے چہرے اچھے لگیں اور بریف کیس بھاری ہوں تو ان کے مقدمات اس رفتار سے چلتے ہیں کچھوا بھی اس کے مقابلے میں تیز رفتار ثابت ہو۔
آپ جس اخبار کے تراشے لگاتے ہیں کیا آپ سمجھتے ہیں کہ وہ سچ لکھتا ہے کہ اس کے علاوہ کسی اور کی خبر کم دیکھی گئی ہے۔ لکھنا ہے تو خود لکھیں کسی اورکا ملبہ اٹھا کر اپنے گھر ڈھیر مت کریں۔
اگر لکھنا چاہتے ہیں تو جو جو غلط کر رہا ہے اس کے خلاف لکھیں، صرف چند افراد کو ٹارگٹ مت کریں۔
کبھی شریفوں کے کاموں اور ان کے عدالتی مقدمات پر بھی قلم اٹھا لیں تو میں ہی نہیں قلم بھی یہ کہے گا کہ آج کچھ نیا کام ہوا ہے۔