PDA

View Full Version : چلا گیا ہے وہ لیکن نشان اب بھی ہیں



حبیب صادق
06-09-2014, 12:40 AM
چلا گیا ہے وہ لیکن نشان اب بھی ہیں

کہ اس کے سوگ میں پسماندگان اب بھی ہیں

یہ اور بات کہ رہنا مرا گوارا نہیں
تمہارے شہر میں خالی مکان اب بھی ہیں

یہ عشق ہے کہ تجھے چھوڑ بھی نہیں سکتے
وگرنہ تجھ سے تو ہم بدگمان اب بھی ہیں

ہمیں تو پہلے بھی تم سے گلہ نہیں تھا کوئی
اور اب کے ہے بھی تو ہم بے زبان اب بھی ہیں

ندیم بھابھہ

بےباک
06-09-2014, 09:35 AM
یہ عشق ہے کہ تجھے چھوڑ بھی نہیں سکتے
وگرنہ تجھ سے تو ہم بدگمان اب بھی ہیں

ہمیں تو پہلے بھی تم سے گلہ نہیں تھا کوئی
اور اب کے ہے بھی تو ہم بے زبان اب بھی ہیں

بہت ہی خؤب ، زبردست