PDA

View Full Version : حدیثِ دل



حبیب صادق
06-10-2014, 08:32 AM
کبھی تو بن جائے گا سہارا
کسی افق کا کوئی ستارہ
اسی تمنا میں مضطرب ہے
عجیب شے ہے یہ دل ہمارا

گزرتے جھونکوں کے کارواں نے
یونہی کوئی راگنی سنا دی
توا س کے خوابوں میں جاگ اٹھتی
ہے خوبصورت سی شہزادی

بہار کی رت میں جب ہوائیں
سلگتی خوشبو اڑا کے لائیں
تواس کے ہر سمت شور کرتی
ہیں بیتے لمحوں کی اپسرائیں

جہاں کہیں ایک پل کسی نے
اسے کبھی پیار سے بلایا
یہ ایسا مورکھ ہے جان لے گا
بس اب خوشی کا زمانہ آیا
منڈیریں چپ ہیں ستارے جھلمل
ہوا میں گم ہے وہ ماہ کامل
سنا ہوا کو، فسانے غم کے
ارے مرے دل، ارے مرے دل

٭٭٭

بےباک
06-10-2014, 11:06 AM
بہار کی رت میں جب ہوائیں
سلگتی خوشبو اڑا کے لائیں
تواس کے ہر سمت شور کرتی
ہیں بیتے لمحوں کی اپسرائیں

بہت ہی خوب

جاذبہ
06-10-2014, 11:11 AM
کبھی تو بن جائے گا سہارا
کسی افق کا کوئی ستارہ
اسی تمنا میں مضطرب ہے
عجیب شے ہے یہ دل ہمارا
:smiley026::smiley026:عمدہ انتخاب :smiley026::smiley026: