PDA

View Full Version : نہیں جذبے کسی بھی قیمت کے​



حبیب صادق
06-11-2014, 02:26 AM
نہیں جذبے کسی بھی قیمت کے​
ہم ہیں حیران اپنی حیرت کے​

اِس میں آخر عجب کی بات ہے کیا​
تم نہیں تھے مری طبیعت کے​

پُوچھ مت بےشکایتی کا عذاب​
کیا عجب عیش تھے شکِایت کے​

یہ جو آنسُو ہیں، رُخصتی آنسُو​
یہ عطیے ہیں دل کی عادت کے​

ہم ہی شیعوں کے مجتہد ہیں مغاں​
ہم ہی مُفتی ہیں اہلسنت کے​

ہم تو بس خُون تھُوکتے ہیں میاں​
نہیں خُوگر کسی مشقت کے​

یہ جو لمحے وصال کے ہیں میاں​
ہیں یہ لمحے تمام ہجرت کے​

جون، یزدان و آدم و ابلیس​
ہیں عجب معجزے حکایت کے​

بےباک
06-11-2014, 06:27 AM
بہت خوب،
جون ایلیا کا کلام شاندار ہے