PDA

View Full Version : حمزہ بابا پشتو شعر



نگار
07-06-2014, 04:23 AM
1551
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ۔۔۔۔

saba
07-06-2014, 11:57 AM
اس کا ترجمہ بھی کر دینا تھا خان صاحب

نگار
07-06-2014, 05:58 PM
ترجمہ آنے تک آپکے بال سفید نہ ہو جائیں اس لیے کوشش نہیں کی

saba
07-06-2014, 06:01 PM
ہاہااہاہاہا،بہت اچھے اب اآپ نے اپنی نالائقی کا خود اظہار کر دیا۔ہاہاہا

نگار
07-06-2014, 06:04 PM
مجھ سے تو اچھے اچھے ٹیچر بھاگ جاتے ہیں پتہ نہیں کیوں ھاھاھاھاھاھاھاھاھاھاھاھاھ ااھا

نگار
07-07-2014, 03:36 AM
اس کا ترجمہ بھی کر دینا تھا خان صاحب

نام سنیں میں نے چار ہیں
نازل ہوئی کتابیں بھی چار ہیں

چار فرشتوں کے ہاتھ میں نظام ہے
مسلک چار اور امام بھی چار ہیں

چار کندھوں پہ جانا سفر تیرا
جنازہ میں تکبیر بھی چار ہیں

رحمان کہتا ہے دوست چار کو رکھو
تیرے قبر کی دیواریں بھی چار ہیں


یہ لیں صبا محترمہ اس کا ترجمہ رحمان بابا کی غزل کا