یہ شاعر کا ہی حوصلہ ہے ، کہ زہر مانگ رہا ہے ، شراب کہہ کر ، اور اپنی طرف اشارہ کر رہا ہے کہ ہم لوگ زہر پی کر جینے کے بہانے ڈھونڈتے ہیں ،
شاعرانہ ذوق اچھا ہے ،جاذبہ جی