شاعر اور غزل

منظوم افسانہ



چاند کی کرنوں سے غزل کی بھیک مانگی
اس نے کاسے میں دو بوندیں نچوڑ دیں
کہ غزل آنکھوں کی ٹھنڈک ہو جائے
سیپ نے مروارید دیئے