نتائج کی نمائش 1 تا: 2 از: 2

موضوع: ظلم پھر ظلم ہے

  1. #1
    معاون
    تاريخ شموليت
    Jul 2012
    پيغامات
    83
    شکریہ
    2
    30 پیغامات میں 39 اظہار تشکر

    ظلم پھر ظلم ہے

    السلام علیکم و رحمتہ اللہ و برکاتہ

    زبان سے کہہ دیا لا الہ تو کیا حاصل
    دل و نگاہ مسلمان نہیں تو پھر کچھ بھی نہی

    ظلم پھر ظلم ہے

    ارشاد نبی :
    نبی اکرم ﷺ نے فرمایا ،" کفر سے حکومت چل سکتی ہے مگر ظلم سے حکومت قائم نہی رہ سکتی "۔
    ( جامع صغیر )
    ظلم پھر ظلم ہے، حد سے بڑھ جاتا ہے تو پھر مٹ جاتا ہے ۔

    رنگ لائے گا شہیدوں کا لہو ۔
    جو حکومت اللہ کے نازل کردہ احکام کے مطابق حکم نہ کرئے تو ایسے لوگ کافر ہیں
    (المائدہ :44)

    جو اللہ کے نازل کردہ احکام کے مطابق حکم نہ کرئے تو ایسے لوگ ظالم ہیں ۔
    (المائدہ : 45)

    جو اللہ کے نازل کردہ احکام کے مطابق حکم نہ کرئے ایسے لوگ فاسق ہیں ۔
    (المائدہ :47)

    ارشادہ باری تعالٰی :
    آپ نبی اکرم ﷺ فرما دیں ، تم ایمان نہی لائے لیکن یوں کہو کہ اسلام میں داخل ہوۓ ہیں اور ابھی ایمان ہمارے دلوں میں داخل نہی ہوا
    ( الحجرات : 14)

    مظلوم کی دعا رد نہی ہوتی متکبر اور ظالم کا زمانہ اقتدار بہت قیل ہوتا ہے، جب کوئی حکومت تکبر کرتی ہے تو ظلم پر اتر اتی ہے اخرکار ظلم کا انجام زوال ہے ۔
    رب العزت ظالم کو پسند نہی کرتا ہے اور ان کی جگہ ایک نئ قوم لاکھڑا کرتا ہے ۔

    ارشاد باری تعالٰی :
    اور جو اللہ اور اسکے رسول اکرم ﷺ کی نافرمانی کرئے گا ( قائم کردہ ) حدوں سے اگے بڑھے گا ( اللہ ) اسے ہمیشہ رہنے والے عذاب میں مبتلا کر دئے گا۔
    (النساء14:4)

    ارشادباری تعالٰی :
    یہ وہ لوگ ہیں اگر ہم انہیں زمین میں اقتدار عطا کریں تو نظام میں صلوة قائم کرتے ہیں ، زکوة دیتے ہیں لوگوں کو نیکی کا حکم دیتے ہیں اور برائیوں سے روکتے ہیں (اور خوب اچھی طرح سمجھتے ہیں کہ) سارے کاموں کا انجام اللہ کے لیے ہے۔
    (الحج 22: 41)

    ارشاد نبویﷺ :
    خبردار ! تم میں سے ہر ایک راعی ہے اور تم سے ہر ایک سے اسکی رعیت کے بارے سوال کیا جائے گا ۔ پس جو امام لوگوں پر حاکم ہے اس سے اسکی رعایا کے بارے میں پوچھا جائے گا ۔مرد اپنے گھر کا ذمہ دار ہے اس سے اسکے ماتحت افراد کے بارے پوچھا جائے گا ۔ عورت اپنے خاوند کے گھر اور اسکے بچوں کی زمہ دار ہے اس سے اسکے بارے پوچھا جائے گا اور آدمی کا غلام اپنے آقا کے مال کے مال کا ذمہ دار ہے اس سے اسکے متعلق سوال کیا جائے گا ۔
    (مشکوة المصابیح )

    ارشاد نبوی :
    نبی اکرم ﷺ نے فرمایا ، " قوم کی امامت وہ کرئے جو ان سب سے زیادہ قرآن پڑھا ہوا ہو ، اگر قراءت میں سب برابری کا درجہ رکھتے ہوں تو پھر سب زیادہ عالم سنت ہو وہ امامت کرئے ۔ اس میں بھی سب برابر ہوں تو پھر وہ امامت کرئے جو ہجرت میں مقدم ہو اُس میں بھی سب برابر ہو تو عمر میں سب سے زیادہ ہو ( وہ امامت کرئے )
    ( مشکوة المصابیح )

    جب کوئی حکومت اتی ہے تو جاتے ہوئے اپنے قدموں کے نشان چھوڑ جاتی ہے ضاء الحق نے اپنے زمانے میں ٹی وی اناونسر اور نیوزکاسٹر کو ہدایت کی کہ سر ڈھانک کر نیوز کے پروگرام کرئے ۔اورمشرف کے اتے ہی عورتوں کے سروں سے دوپٹے غائب ہوگۓ ، اور ایسے اسٹیج شو شروع ہوگۓ جن کے لباس اور کردارباعث سنسر تھے اور ایسی فلمیں منظر عام پر ائیں جو مغربی تہزہب کی دلدہ تھیں یہ ایک مسلمان ملک کے لیے باعث شرم ہیں اور سنسر کے قابل تھے انہیں کھلی چھٹی دے رکھی تھی ۔

    عوام میں غیر محرم جوڑوں کو گومنے کی آزادی اور پولیس کوانہیں پوچھنے پر پابندی عائد کی دی گئ !
    جس قوم کی بنیاد میں فحاشی رچا دی جاے اور نوجوان نسل کو اسکی طرف راغب کردیا جاے تو اسکی قوم کی بنیادیں گرجاتی ہیں نوجوان نسل قوم کی بنیاد ہے اور اس بنیاد پر عمارت کی تعمیر کا تصور دھندلا ہوجاتا ہے قوم لوط پر عذاب کی وجہ اس قوم

    کی فحاشی اور بدکرادری تھی
    قوم لوط علیہ السلام ؑ کی تباہی :

    ’آخر کار پوپھٹتے ہی ان کو ایک زبردست دھماکے نے آن گھیرا اور ہم نے اس بستی کو الٹ دیا اور ان پر پکی ہوئی مٹی کے پتھروں کی بارش برسادی۔ اس واقعے میں ان لوگوں کے لئے بڑی نشانیاں ہیں جو صاحبِ فراست ہیں۔ اور وہ علاقہ (جہاں یہ واقعہ پیش آیا تھا) گزرگاہ عام پر واقع ہے۔ اس میں سامانِ عبرت ہے ان لوگوں کے لئے، جو ایمان والے ہیں۔‘‘
    (سورۃ الحجر۔ آیات 73 تا 76

    اس وقت تک قوم ترقی کے راستے پر گامزان نہی ہوسکتی جبتک حاکم وقت قران کےضباطہ پر عمل پیرا نہ ہو ،
    اللہ تعالی پاکستان کو بھی ایسا حاکم عطا فرماے جو حضرت عمر فاروق رضی اللہ عنہ کی پیروی کرنے والا ہو آمین

    خنجر چلے کسی پر ہم تڑپے ہیں امیر
    سارے جہاں کا درد ہمارے جگر میں ہے

    خوش رہیں خوشیاں باٹیں
    اللہ نگہبان
    [size=x-large][align=center] قران ایک مکمل ضابطہ حیات ہے علم کے بغیر عمل کرنا ممکن نہیں
    اور اچھے عمل کے بغیر انسان کی نجات نہیں، قران کا علم حاصل کرو اور فلاح پاو
    [/align][/size]

  2. اس مفید مراسلے کے لئے درج ذیل رُکن نے روشن خیال کا شکریہ ادا کیا:

    بےباک (03-28-2016)

  3. #2
    منتظم اعلی بےباک کا اوتار
    تاريخ شموليت
    Nov 2010
    پيغامات
    6,153
    شکریہ
    2,112
    1,226 پیغامات میں 1,598 اظہار تشکر

    جواب: ظلم پھر ظلم ہے

    ظلم کو جڑ سے اکھاڑ دینا چاھئے ،
    ظالم اور مظلوم دونوں کی مدد کریں ،
    ظالم کو ظلم کرنے سے روکیں اور مظلوم کی مدد کریں ،
    جزاک اللہ خیر
    ہم کو کمال حاصل ہے غم سے خوشیاں نچوڑ لیتے ہیں ۔
    اردو منظر ٰ معیاری بات چیت

آپ کے اختيارات بسلسلہ ترسيل پيغامات

  • آپ نئے موضوعات پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ جوابات نہیں پوسٹ کر سکتے ہیں
  • آپ اٹیچمنٹ پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ اپنے پیغامات مدون نہیں کر سکتے ہیں
  •  
Cultural Forum | Study at Malaysian University