نتائج کی نمائش 1 تا: 2 از: 2

موضوع: کبھی تو نے خود بھی سوچا

  1. #1
    ناظم خاص تانیہ کا اوتار
    تاريخ شموليت
    Nov 2010
    مقام
    گجرات
    پيغامات
    7,873
    شکریہ
    949
    881 پیغامات میں 1,108 اظہار تشکر

    کبھی تو نے خود بھی سوچا

    کبھی تو نے خود بھی سوچا، کہ یہ پیاس ہے تو کیوں ہے
    تجھے پا کے بھی مرا دل جو اداس ہے تو کیوں ہے
    مجھے کیوں عزیز تر ہے یہ دھواں دھواں سا موسم
    یہ ہوائے شام ہجراں، مجھے راس ہے تو کیوں ہے
    تجھے کھو کے سوچتا ہوں، مرے دامن طلب میں
    کوئی خواب ہے تو کیوں ہے کوئی آس ہے تو کیوں ہے
    میں اجڑ کے بھی ہوں تیرا، تو بچھڑ کے بھی ہے میرا
    یہ یقین ہے تو کیوں ہے، یہ قیاس ہے تو کیوں ہے
    مرے تن برہنہ دشمن، اسی غم میں گھل رہے ہیں
    کہ مرے بدن پہ سالم، یہ لباس ہے تو کیوں ہے
    کبھی پوچھ اس کے دل سے کہ یہ خوش مزاج شاعر
    بہت اپنی شاعری میں جو اداس ہے تو کیوں ہے
    ترا کس نے دل بجھایا، مرے اعتبار ساجد
    یہ چراغ ہجر اب تک، ترے پاس ہے تو کیوں ہے
    شاعر اعتبار ساجد

  2. #2
    ناظم
    تاريخ شموليت
    Feb 2011
    پيغامات
    3,081
    شکریہ
    21
    91 پیغامات میں 134 اظہار تشکر

    RE: کبھی تو نے خود بھی سوچا

    واہ بہت خوب۔ شکریہ

متشابہہ موضوعات

  1. ایسے ہو جائیں گے ایسا تو کبھی سوچا نہ تھا
    By گلاب خان in forum میری پسندیدہ شاعری
    جوابات: 3
    آخری پيغام: 12-14-2012, 09:13 PM
  2. کبھی ساحل تو کبھی سیل ِ خطر ٹھہرے گی
    By سیدہ سارا غزل in forum میری شاعری
    جوابات: 4
    آخری پيغام: 05-03-2012, 03:25 PM
  3. جوابات: 1
    آخری پيغام: 04-03-2012, 01:34 PM
  4. جوابات: 1
    آخری پيغام: 04-03-2012, 10:01 AM
  5. کبھی تو کچھ کہو تم بھی
    By علی عمران in forum شعر و شاعری
    جوابات: 1
    آخری پيغام: 11-22-2010, 11:57 AM

آپ کے اختيارات بسلسلہ ترسيل پيغامات

  • آپ نئے موضوعات پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ جوابات نہیں پوسٹ کر سکتے ہیں
  • آپ اٹیچمنٹ پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ اپنے پیغامات مدون نہیں کر سکتے ہیں
  •  
Cultural Forum | Study at Malaysian University