نتائج کی نمائش 1 تا: 2 از: 2

موضوع: ہم سے کیا پوچھتے ہو ہجر میں کیا کرتے ہیں

  1. #1
    ناظم خاص تانیہ کا اوتار
    تاريخ شموليت
    Nov 2010
    مقام
    گجرات
    پيغامات
    7,873
    شکریہ
    949
    881 پیغامات میں 1,108 اظہار تشکر

    ہم سے کیا پوچھتے ہو ہجر میں کیا کرتے ہیں

    ہم سے کیا پوچھتے ہو ہجر میں کیا کرتے ہیں

    تیرے لوٹ آنے کی دن رات دعا کرتے ہیں

    اب کوئی ہونٹ نہیں ان کو چرانے آتے

    میری آنکھوں میں اگر اشک ہوا کرتے ہیں

    تیری تو جانے ،پر اے جان تمنا ہم تو

    سانس کے ساتھ تجھے یاد کیا کرتے ہیں

    کبھی یادوں میں تجھے بانہوں میں بھر لیتے ہیں

    کبھی خوابوں میں تجھے چوم لیا کرتے ہیں

    تیری تصویر لگا لیتے ہیں ہم سینے سے

    پھر ترے خط سے تری بات کیا کرتے ہیں

    گر تجھے چھوڑنے کی سوچ بھی آئے دل میں

    ہم تو خود کو بھی وہیں چھوڑ دیا کرتے ہیں
    شاعر وصی شاہ

  2. #2
    ناظم
    تاريخ شموليت
    Feb 2011
    پيغامات
    3,081
    شکریہ
    21
    91 پیغامات میں 134 اظہار تشکر

    RE: ہم سے کیا پوچھتے ہو ہجر میں کیا کرتے ہیں

    واہ بہت خوب۔ شکریہ

متشابہہ موضوعات

  1. پوچھتے ہیں وہ کہ غالب کون ہے
    By ٹارزن in forum سوانح حیات
    جوابات: 0
    آخری پيغام: 12-26-2012, 10:31 PM
  2. جوابات: 0
    آخری پيغام: 07-26-2012, 03:18 PM
  3. سنا ہے لوگ اُسے آنکھ بھر کے دیکھتے ہیں
    By ایم-ایم in forum احمد فراز
    جوابات: 3
    آخری پيغام: 04-16-2012, 10:28 AM
  4. دیکھنا کچھ ہے، دیکھتے کچھ ہیں
    By گلاب in forum میری پسندیدہ شاعری
    جوابات: 1
    آخری پيغام: 03-31-2012, 12:53 PM
  5. جوابات: 2
    آخری پيغام: 03-31-2012, 12:53 PM

آپ کے اختيارات بسلسلہ ترسيل پيغامات

  • آپ نئے موضوعات پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ جوابات نہیں پوسٹ کر سکتے ہیں
  • آپ اٹیچمنٹ پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ اپنے پیغامات مدون نہیں کر سکتے ہیں
  •  
Cultural Forum | Study at Malaysian University