نعمان نے کہا دادی ماں دادی ماں میں نے سپرہیرو بننا ہےدادی ماں ہنسی۔ نعمان نے کہا دادی ماں سپر ہیرو کیسے بنتے ہیں۔دادی ماں نے کہا کہ سپر ہیرو بننے کے لیے ملک سے محبت ہونا بہت ضروری ہے۔نعمان نےکہا دادی ماں سپر ہیرو جیسی جادوئی طاقتیں کیسے حاصل کرتے ہیں۔دادی ماں نے کہا بیٹا سپر ہیرو بننے کے لیے جادوئی طاقتوں کی ضرورت نہیں ہوتی۔بیٹا سپرمین ،سپائڈر مین ،بین ٹین وغیرہ اصلی سپر ہیرو نہیں ہیں۔سپر ہیرو ہوتے ہیں لیکن سپر مین ،بین ٹین وغیرہ جیسے نہیں ہوتے۔پاکستان کے سپر ہیرو بھی ہیں۔ عبدالستار ایدھی،قائد اعظم ،علامہ اقبال،میجر عزیز بھٹی وغیرہ پاکستان کے ہیرو ہیں۔بیٹا ان کے پاس جادوئی طاقتیں نہیں تھیں بلکہ خدمت خلق اور حب الوطنی کا جذبہ تھا۔بیٹا آگر تم بھی سپر ہیرو بننا چاہتے ہو تو لوگوں کی مدد کرو آگر کسی کی کوئی بھی مشکل ہو تو آپ اسکی مشکل کو دور کرنے میں اس کی مدد کرو۔کسی کو تنگ نہ کرو۔وطن کی ترقی میں بڑھ چڑھ کر حصہ لو۔نعمان نے کہا لیکن دادی ماں میں ملک کی ترقی میں کس طرح حصہ لے سکتا ہوں۔دادی ماں نے کہا بیٹا آپ پڑھ لکھ کر ملک کی خدمت کرسکتے ہو۔نعمان نے کہا آج سے میں ہر کسی کی مدد کروں گا اور خوب دل لگا کر پڑھوں گا۔سید علی مجتبی،میرپور آزاد کشمیر