نتائج کی نمائش 1 تا: 2 از: 2

موضوع: نازِ بیگانگی میں کیا کچھ تھا

  1. #1
    ناظم خاص تانیہ کا اوتار
    تاريخ شموليت
    Nov 2010
    مقام
    گجرات
    پيغامات
    7,869
    شکریہ
    949
    880 پیغامات میں 1,107 اظہار تشکر

    نازِ بیگانگی میں کیا کچھ تھا

    نازِ بیگانگی میں کیا کچھ تھا

    حسن کی سادگی میں کیا کچھ تھا

    لاکھ راہیں تھیں لاکھ جلوے تھے

    عہدِ آوارگی میں کیا کچھ تھا

    آنکھ کھلتے ہی چھپ گئی ہر شے

    عالمِ بے خودی میں کیا کچھ تھا

    یاد ہیں مرحلے محبّت کے

    ہائے اس بے کلی میں کیا کچھ تھا

    کتنے بیتے دنوں کی یاد آئی

    آج تیری کمی میں کیا کچھ تھا

    کتنے مانوس لوگ یاد آئے

    صبح کی چاندنی میں کیا کچھ تھا

    رات بھر ہم نہ سو سکے ناصر

    پردۂ خامشی میں کیا کچھ تھا
    شاعر ناصر کاظمی

  2. #2
    ناظم
    تاريخ شموليت
    Feb 2011
    پيغامات
    3,081
    شکریہ
    21
    91 پیغامات میں 134 اظہار تشکر

    RE: نازِ بیگانگی میں کیا کچھ تھا

    واہ بہت خوب ۔ شکریہ

متشابہہ موضوعات

  1. میں نے مِٹِّی سے مُحَبّت کا صِلہ مانگا تھا
    By تا بی in forum میری پسندیدہ شاعری
    جوابات: 1
    آخری پيغام: 02-15-2013, 06:15 PM
  2. کل رات ہم سخن کوئی بُت تھا خدا کہ میں
    By ایم-ایم in forum احمد فراز
    جوابات: 1
    آخری پيغام: 04-16-2012, 10:24 AM
  3. تمھارے خط میں نیا اک سلام کس کا تھا
    By تانیہ in forum متفرق شاعری
    جوابات: 1
    آخری پيغام: 04-03-2012, 12:03 PM
  4. جوابات: 2
    آخری پيغام: 01-15-2011, 11:21 PM
  5. پتھر تھا مگر برف کے گالوں کی طرح تھا
    By گلاب خان in forum میری شاعری
    جوابات: 4
    آخری پيغام: 12-26-2010, 10:07 PM

آپ کے اختيارات بسلسلہ ترسيل پيغامات

  • آپ نئے موضوعات پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ جوابات نہیں پوسٹ کر سکتے ہیں
  • آپ اٹیچمنٹ پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ اپنے پیغامات مدون نہیں کر سکتے ہیں
  •  
Cultural Forum | Study at Malaysian University