نتائج کی نمائش 1 تا: 3 از: 3

موضوع: حکایتِ مولانا رومیؒ ، شیر کی زندگی اور انسان کی موت

  1. #1
    رکنِ خاص
    تاريخ شموليت
    Jun 2014
    پيغامات
    504
    شکریہ
    158
    105 پیغامات میں 122 اظہار تشکر

    حکایتِ مولانا رومیؒ ، شیر کی زندگی اور انسان کی موت

    حکایتِ مولانا رومیؒ ، شیر کی زندگی اور انسان کی موت
    حضرت عیسیٰ ؑایک روز جنگل میں جا رہے تھے۔ ساتھ ایک شخص تھا۔ عرض کرنے لگا حضرت! مجھے بھی مردوں کو زندہ کرنے کا ڈھب بتا دیجیے۔ آپؑ نے فرمایا معجزات عطا کرنا اللہ کے اختیار میں ہے جس کو وہ اہل سمجھتا ہے عطا کرتا ہے ہر شخص عصا پھینک کر اژدہا نہیں بنا سکتا۔ نہ اژدہا کے منہ میں ہاتھ ڈال کر اسے پھر لاٹھی بنا سکتا ہے۔ اژدہا کے منہ میں ہاتھ وہی ڈالتا ہے جسے اژدہا بنانا آتا ہے۔یہ سن کر وہ بولا یا روح اللہؑ اگر میری یہ عرض قابل پذیرائی نہیں تو میرے سامنے مردہ زندہ کر کے دکھا دیجیے۔ یہ ہڈیاں پڑی ہیں ان میں قم باذن اللہ کہہ کر روح پھونک دیجیے۔ حضرت عیسیٰؑ نے اللہ تعالیٰ سے عرض کیا کہ یا اللہ یہ شخص بڑا ضدی ہے اپنا نفع نقصان نہیں سوچتا تیرا حکم ہو تو اسے معجزہ دکھا دوں۔ حکم ہوا جب یہ اپنی ہلاکت خود خریدتا ہے تو تم بری الذمہ ہو۔ الغرض حضرت عیسیٰؑ نے ان ہڈیوں پر قم باذن اللہ پڑھا تو ایک بڑا غضبناک سیاہ شیر بن کر اٹھ کھڑا ہوا اور اس نے جست کر کے اس شخص کے سر پر ایسا سخت پنجہ مارا کہ اس کا بھیجا نکل کر باہر جا پڑا اور وہ شخص تڑپ کر ایک دم میں سرد ہو گیا۔ حضرت عیسیٰؑ نے شیر سے کہا تو نے اٹھتے ہی اس کا کام کیوں تمام کر دیا۔ شیر بولا اس لیے کہ اس نے آپؑ کو ناحق تکلیف دی۔حضرت عیسیٰؑ نے پوچھا پھر تو نے اس کا خون کیوں نہیں پیا۔ شیر نے جواب دیا میرا رزق دنیا سے اٹھ چکا ہے مولانا یہ حکایت بیان کرتے ہیں:




    صید خود ناخوردہ رفتہ از جہاں

    جمع کردہ مال رفتہ سوئے گور

    دشمناں در ماتم او کردہ شور

    یعنی دنیا میں بہت سی مثالیں ملیں گی کہ طمع سے مال جمع کرتے رہے مگر کھانا قسمت میں نہ ہوا۔ پھر فرماتے ہیںکہ تو اس شیر کے مارے ہوئے کی طرح اپنے نفس کی زندگی کا کیوں طالب ہے؟ یہ نفس تجھے آخر ہلاک کر کے چھوڑے گا۔ تو کتا نہیں ہے پھر ہڈی پر کیوں عاشق ہے؟ تیری آنکھ کیسی ہے کہ اس میں بینائی نہیں؟ بزرگوں کا امتحان نہ لے اس میں سوائے رسوائی کے او رکچھ حاصل نہ ہو گا۔



  2. اس مفید مراسلے کے لئے درج ذیل رُکن نے حبیب صادق کا شکریہ ادا کیا:

    بےباک (11-04-2019)

  3. #2
    منتظم اعلی بےباک کا اوتار
    تاريخ شموليت
    Nov 2010
    پيغامات
    6,149
    شکریہ
    2,109
    1,222 پیغامات میں 1,594 اظہار تشکر

    جواب: حکایتِ مولانا رومیؒ ، شیر کی زندگی اور انسان کی موت

    عقل والوں کے لئے سبق آموز
    ہم کو کمال حاصل ہے غم سے خوشیاں نچوڑ لیتے ہیں ۔
    اردو منظر ٰ معیاری بات چیت

  4. اس مفید مراسلے کے لئے درج ذیل رُکن نے بےباک کا شکریہ ادا کیا:

    حبیب صادق (11-10-2019)

  5. #3
    رکنِ خاص
    تاريخ شموليت
    Jun 2014
    پيغامات
    504
    شکریہ
    158
    105 پیغامات میں 122 اظہار تشکر

    جواب: حکایتِ مولانا رومیؒ ، شیر کی زندگی اور انسان کی موت

    شکریہ۔۔۔۔۔

اس موضوع کے کلیدی الفاظ (ٹیگز)

آپ کے اختيارات بسلسلہ ترسيل پيغامات

  • آپ نئے موضوعات پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ جوابات نہیں پوسٹ کر سکتے ہیں
  • آپ اٹیچمنٹ پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ اپنے پیغامات مدون نہیں کر سکتے ہیں
  •  
Cultural Forum | Study at Malaysian University