نتائج کی نمائش 1 تا: 2 از: 2

موضوع: بول، کہ لب آزاد ہیں تیرے

  1. #1
    ناظم خاص تانیہ کا اوتار
    تاريخ شموليت
    Nov 2010
    مقام
    گجرات
    پيغامات
    7,873
    شکریہ
    949
    881 پیغامات میں 1,108 اظہار تشکر

    بول، کہ لب آزاد ہیں تیرے

    بول، کہ لب آزاد ہیں تیرے
    بول، زباں اب تک تیری ہے
    تیرا ستواں جسم ہے تیرا
    بول، کہ جان اب تک تیری ہے
    دیکھ کہ آہن گر کی دوکان میں
    تند ہیں شعلے سرخ ہے آہن
    کھلنے لگے قفلوں کے دھانے
    پھیلا ہر اک زنجیر کا دامن
    بول، یہ تھوڑا وقت بہت ہے
    جسم و زباں کی موت سے پہلے
    بول، کہ سچ زندہ ہے اب تک
    بول، جو کچھ کہنا ہے کہہ لے
    شاعر فیض احمد فیض

  2. #2
    ناظم
    تاريخ شموليت
    Feb 2011
    پيغامات
    3,081
    شکریہ
    21
    91 پیغامات میں 134 اظہار تشکر

    RE: بول، کہ لب آزاد ہیں تیرے

    واہ بہت خوب۔ شکریہ

متشابہہ موضوعات

  1. نومبر کی انگڑائیاں اور احتیاطیں
    By محمدمعروف in forum طب اور صحت
    جوابات: 2
    آخری پيغام: 12-01-2012, 01:56 PM
  2. لفظ تیری یاد کے سب بے صدا کر آئے ہیں
    By گلاب خان in forum میری پسندیدہ شاعری
    جوابات: 1
    آخری پيغام: 08-14-2012, 08:58 AM
  3. بول کہ لب آزاد ہیں تیرے
    By ایم-ایم in forum فیض احمد فیض
    جوابات: 1
    آخری پيغام: 04-16-2012, 10:43 AM
  4. میں تو لفظ لفظ تیری تیری ذات ہوں
    By عرفان in forum متفرق شاعری
    جوابات: 2
    آخری پيغام: 04-03-2012, 01:03 PM
  5. میں تیرے نال
    By تانیہ in forum ڈایزئننگ
    جوابات: 0
    آخری پيغام: 11-30-2010, 04:54 PM

آپ کے اختيارات بسلسلہ ترسيل پيغامات

  • آپ نئے موضوعات پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ جوابات نہیں پوسٹ کر سکتے ہیں
  • آپ اٹیچمنٹ پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ اپنے پیغامات مدون نہیں کر سکتے ہیں
  •  
Cultural Forum | Study at Malaysian University