نتائج کی نمائش 1 تا: 3 از: 3

موضوع: فیصل آباد کا مشہور جھنگ بازار

  1. #1
    رکنِ خاص
    تاريخ شموليت
    Jun 2014
    پيغامات
    1,356
    شکریہ
    438
    426 پیغامات میں 446 اظہار تشکر

    فیصل آباد کا مشہور جھنگ بازار

    فیصل آباد کا مشہور جھنگ بازار

    غضنفر ناطق
    فیصل آباد کے مرکزی آٹھ بازار ایک دوسرے کے ساتھ واقع ہونے کے باوجود ایک دوسرے سے مختلف ہیںاور ہر بازار اپنی الگ شناخت رکھتا ہے۔ بیوپار، کاروبار، اثر اور کلچر کے اعتبار سے ہر بازار کی حیثیت واہمیت دوسرے سے اتنی جدا ہے کہ کارخانہ بازار میں گزرنے والے کو بھول کر احساس نہیں گزر سکتا کہ وہ کچہر ی بازار میں ہے۔ اِن آٹھ بازاروں کے نام اُن کے رخ کی مناسبت سے رکھے گئے ہیں۔ جو بازار جس شہر یا قصبے کے رخ پہ واقع ہے اُسی نسبت سے اُس کا نام رکھا گیا۔ اِن بازاروںمیں ایک بازار مشہور لوگ داستان کی کردار ’’ہیر‘‘ کے شہر جھنگ کے نام پہ جھنگ بازار ہے۔ برطانوی پرچم سے مماثل شہر کے آٹھ بازاروں میں چار تنگ اور چار کشادہ بازار ہیں۔ جھنگ بازار کشادہ بازار ہے اور کشادگی کا یہ عالم بھی چشم کشا ہے۔ کچھ چھاپڑی والے 1947 ء سے یہاں بیٹھے ہیں اور کئی ایک تو بیٹے اور پوتے، باپ دادا کی جگہ کام کر رہے ہیں۔ یہاں تجاوزات میراث کی طرح نسل در نسل چلتی ہیں۔ کوئی سخت گیر افسر آتا ہے اور چند روزہ تجاوزات ہٹائو مہم ختم ہوتی ہے اور بازار میں پھر تجاوزات کی بھر مار ہو جاتی ہے۔ یہ ہیر کے شہر سے نسبت ہے کہ اتفاق… جھنگ بازار کے بالکل شروع میں داہنی طرف ایک بانسری فروش کا ٹھیلہ ہے، جو بانسری بجا کر لوگوں کو اپنی طرف متوجہ کرتا ہے۔ درد کی ’’تانیں‘‘ سن کر اہلِ دل کے قدم رکیں نہ سہی ذراسی دیر کو آہستہ ضرور ہوتے ہیں، کچھ دل جلے بانسری خریدتے ہیں اور یوں بانسری فروش کچھ روپے کمانے میں کامیاب ہوتا ہے۔ شہر کے مرکزی آٹھ بازاروں میں جہاں لاکھوں، کروڑوں کا کاروبار ہوتا ہے وہاں ایک آدھ بانسری بھی بکتی ہے۔ جھنگ بازار میں اِسی بانسری فروش کے قرب میں ایک ریسٹورنٹ ہے جہاں کے مرغن کھانے شہر والوں کو مرغوب رہے ہیں۔ گھی اور مصالحہ میں پکے کھانے پسند کرنے والے یہاں کھچے چلے آتے۔ سستی گارمنٹس اور سستی سبزیاں، پھل اِس بازار کو عوامی بازار بناتے ہیں۔ بازار کے تقریباً وسط میں ریگل سینما کی عمارت ہے۔ یہ سینما قیامِ پاکستان سے پہلے کا ہے۔ کتنے فلمی ستاروں کو چمک دمک دینے والے اِس سینما کی عمارت اب بوسیدگی کا شکار ہو چکی ہے۔ نصف عمارت مارکیٹ میں بدل چکی ہے اور نصف عمارت عدالت میں فیصلہ ہو جانے کے بعد دکانوں اور مارکیٹ میں بدل جائے گی اور ریگل سینما بس اِک یاد بن کر رہ جائے گا۔ریگل سینما جہاں کتنے لوگوں نے زندگی کی اوّلین فلم دیکھی ہوں گی۔ کوئی اپنے امی ، ابو کے ساتھ پہلی بار سینما گیا ہو گا اور کوئی اپنی نئی نویلی دلہن کو فلم دِکھانے لے گیا ہو گا اور فلم کم اپنی دلہن کو زیادہ دیکھتا ہو گا۔ دلہن کی شرمیلی آنکھیں آج بھی اُسے فلم کے کسی سین کی طرح یاد ہوں گی۔ اِس سینما میں کوئی اپنی محبوبہ کے ساتھ دیکھی فلموں کو آج تک نہ بھولا ہو گا۔ دل والے جو یہاں کبھی دل لگانے آتے تھے، یہاں سے دل تھام کر گزرا کریں گے کہ سینما نہیں رہے گا۔ ریگل روڈ کے بائیں طر ف لسوڑی شاہ کا مزار ہے جہاں عقید ت مند حاضری کے لیے آتے ہیں۔ مزار کی عقبی گلی میں حزیں لدھیانوی رہائش پذیر رہے اور یہیں قرب میں نصرت فتح علی خاں کا گھر تھا۔ نصرت کی زندگی کے بیشتر سال اِدھر ہی گزرے۔ یہاں برتنوں کی دکانیں ہیں جہاں نئے برتنوں کی فروخت اور پرانے برتنوں کی خریداری ہوتی ہے۔ پیتل، تانبے، کانسی اور سلور کے پرانے برتن شہر بھر سے یہاں لائے جاتے ہیں۔ پرانے برتن آگ میں تپ کر کسی نئے سانچے میں ڈھلتے ہیںاور پھر ہاتھوں ہاتھ لیے جاتے ہیں۔ نئے سے پرانے اور پرانے سے نئے کا سفر کہاں رکا ہے۔ یہیں مچھلی فروش ہیں سردی کے دِنوں میں خوب مچھلی بکتی ہے۔ جھنگ بازار کے وسط میں دائیں طرف گول گھی والا اور بائیں طرف گول لکڑ والا ہے۔گھی کی ایک ، دو دکانیں رہ گئی ہیں اور گول لکڑ والے میں لکڑی ٹال ختم ہوئے مدت ہوئی۔ جھنگ بازار میں ایک پارک تھاجو دائرہ کی شکل میں تھا اور گول باغ کے نام سے معروف تھا، وہ بھی عرصہ ہوا ختم ہو گیا۔ اب یہاں ارشد مارکیٹ ہے، باغ کے سامنے بکرا منڈی تھی جہاں اب جامع مسجد ہے۔ عوام الناس اِسے مولانا محمد سردار احمد کی مسجد کے نام سے پکارتے ہیں۔ اِسی مسجد کے احاطے میں مولانا دفن ہیں۔ مولانا محمد سردار 1948ء میں فیصل آباد آئے اور گول باغ میں ڈیرہ ڈالا۔ یہیں درسِ حدیث کا آغاز کیا۔ 2 جنوری 1950ء کو’’ جامع رضویہ مظہرالسلام ‘‘ کے نام سے ایک دینی ادارے کی بنیاد رکھی۔ اِس ادارے سے اب تک ہزاروں علما کرام اور مشائخ عظام فارغ التحصیل ہو چکے ہیں۔ یہ بات بھی دلچسپی سے خالی نہیں ہے کہ شہرمیں رویتِ ہلال شوال پہ علما کا اختلاف ہو جایا کرتا تھا۔ اور اِسی فیصل آباد میں جب یہ لائلپور تھا دو عیدیں منائی جاتی رہی ہیں، ایک گروہ کہتا کہ کل روزہ ہے اور دوسرا کہتا کہ کل عید ہے۔ مساجد کے لائوڈ سپیکروں پر اپنے اپنے مؤقف کی بھر پور تائید کی جاتی ہے۔ مگر اِس اختلاف کے باوجود لوگ ایک دوسرے کو گلے لگاتے، بغض و کدورت کی فضا نہ جھنگ بازار میںرہی ہے اور نہ کبھی اِس شہر میں۔ اِسی مسجد کے پاس شہر کی واحد پرندہ مارکیٹ ہے جہاں پرندوں اور پالتو جانوروں کی خریدوفروخت ہوتی ہے ۔ یہیں سری پائے بھی بھوننے کے لیے بھٹیاں بنائی گئی ہیں سو محکمہ لائیو سٹاک اور محکمہ ماحولیات کے ملازمین کبھی کبھی قانونی کارروائی کرنے چلے آتے ہیں۔ میونسپل کارپوریشن کے عملے کی مضحکہ خیز کارروائی تو اکثر یہاں جاری رہتی ہے۔ کارپوریشن کی ٹوٹی اور خستہ حال گاڑی کے سامنے سے تجاوزات جلدی جلدی اُٹھائی جا رہی ہوتی ہیں اور گاڑی کے چند قدم گزرنے پر پھر ریڑھیاں اور چھابڑیاں آن موجود ہوتی ہیں۔ خبر نہیں گاڑی میں بیٹھے ملازمین پیچھے مڑ کر دیکھ سکتے ہیں یا نہیں؟ یا پھر حکومتیں اور حکومتی ادارے بس آگے کی سوچتے ہیں اور آگے دیکھتے ہیں، کہ ’’ مصداق ‘‘ پیچھے مڑنا یا پیچھے دیکھنا خطا خیال کرتے ہوں۔اِسی جھنگ بازار میں ہارڈ وئیر اور بچوں کے کھلونو ں کی بھی کچھ دکانیں ہیں ۔ بچوں کے کھلونوں کی دکانوں کی یہ بات بھی قابلِ ذکر ہے کہ ایک طرف تو بچہ کھلونا لینے کی ضد کر تا ہے اور دوسری طرف دکاندار کھلونا بیچنے پر بھرپور زور لگاتا ہے۔ دکان سے خالی ہاتھ نکلے گاہک کے بازوں پکڑ کر روکنا تو یہاں ایک عام سی بات ہے۔ اِس لیے شریف گاہک ’’ضداورزور‘‘ سے زچ ہو کر کچھ نہ کچھ خریدنے میں ہی عافیت جانتا ہے۔ سبزیوں اور پھلوں کے نرخ شام ڈھلے ہی گِر جاتے ہیں اِس لیے یہاں رات کو خریداروں کا رَش رہتا ہے۔

  2. اس مفید مراسلے کے لئے درج ذیل رُکن نے حبیب صادق کا شکریہ ادا کیا:

    Maria (01-03-2020)

  3. #2
    رکنِ خاص
    تاريخ شموليت
    Oct 2019
    پيغامات
    311
    شکریہ
    312
    262 پیغامات میں 265 اظہار تشکر

    جواب: فیصل آباد کا مشہور جھنگ بازار

    معلوماتی تحریر
    شیئر کرنے کا شکریہ

  4. اس مفید مراسلے کے لئے درج ذیل رُکن نے Maria کا شکریہ ادا کیا:

    حبیب صادق (01-04-2020)

  5. #3
    رکنِ خاص
    تاريخ شموليت
    Jun 2014
    پيغامات
    1,356
    شکریہ
    438
    426 پیغامات میں 446 اظہار تشکر

    جواب: فیصل آباد کا مشہور جھنگ بازار

    پسند اور جواب کا شکریہ

  6. اس مفید مراسلے کے لئے درج ذیل رُکن نے حبیب صادق کا شکریہ ادا کیا:

    Maria (01-04-2020)

اس موضوع کے کلیدی الفاظ (ٹیگز)

آپ کے اختيارات بسلسلہ ترسيل پيغامات

  • آپ نئے موضوعات پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ جوابات نہیں پوسٹ کر سکتے ہیں
  • آپ اٹیچمنٹ پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ اپنے پیغامات مدون نہیں کر سکتے ہیں
  •  
Cultural Forum | Study at Malaysian University