نتائج کی نمائش 1 تا: 2 از: 2

موضوع: دنیا کی مختلف جیلوں میں اب بھی تقریباً 11 ہزار پاکستانی قید

  1. #1
    رکنِ خاص
    تاريخ شموليت
    Jun 2014
    پيغامات
    1,342
    شکریہ
    438
    426 پیغامات میں 446 اظہار تشکر

    دنیا کی مختلف جیلوں میں اب بھی تقریباً 11 ہزار پاکستانی قید

    مشرف غداری کیس: لاہور ہائیکورٹ نے خصوصی عدالت کی تشکیل کالعدم قرار دیدی
    لاہور ہائیکورٹ کے فل بنچ نے مشرف غداری کیس کا فیصلہ سنانے والی خصوصی عدالت کی تشکیل کالعدم قرار دے دی، درخواست سابق صدر پرویز مشرف کی جانب سے دائر کی گئی تھی. خصوصی عدالت نے آئین شکنی کیس میں* پرویز مشرف کو سزائے موت سنائی تھی۔


    لاہور ہائیکورٹ کے آج کے اس اہم فیصلے میں تین رکنی بنچ کا کہنا تھا کہ ملزم کی عدم موجودگی میں کیس کا ٹرائل بھی غیر قانونی ہے۔ کیس کی سماعت کے دوران لاہور ہائیکورٹ نے دو اہم قانونی نکات پر سوال اٹھائے۔


    عدالت نے استفسار کیا کہ کیا خصوصی عدالت کی تشکیل کا معاملہ کابینہ اجلاسوں میں زیر غور آیا؟ عدالتی استفسار پر ایڈیشنل اٹارنی جنرل اشتیاق اے خان نے کہا کہ یہ معاملہ کابینہ اجلاسوں میں زیر غور نہیں آیا۔


    اس پر عدالت نے پیش کئے گئے ریکارڈ کا جائزہ لیتے ہوئے ریمارکس دیئے کہ وفاقی حکومت کے ریکارڈ کے مطابق خصوصی عدالت کی تشکیل اور شکایت درج کرنے کا کوئی ایجنڈہ ہے نہ ہی کوئی نوٹیفیکشن۔


    سماعت کے دوران جسٹس مظاہر علی اکبر نقوی نے ریمارکس دئیے کہ ایمرجنسی تو آئین میں شامل ہے، اگر ایسی صورتحال پیدا ہو جائے کہ حکومت ایمرجنسی لگا دے تو کیا اس حکومت کے خلاف بھی غداری کا مقدمہ چلے گا؟ اس پر ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے کہا کہ جی ہاں آئین کے تحت ایسا کیا جا سکتا ہے۔


    جسٹس مظاہر علی اکبر نقوی نے مزید استفسار کیا کہ تو پھر آئین سے انحراف کیسے ہو گیا؟ عدالت نے سماعت کے دوران مزید استفسار کیا کہ کیا کہ آئین میں ترمیم کے بعد کسی ملزم کو ماضی سے جرم کی سزا دی جا سکتی ہے؟


    اس پر سرکاری وکیل نے کہا کہ نئی قانون سازی کے بعد جرم کی سزا ماضی سے نہیں دی جا سکتی۔ سرکاری وکیل نے اپنے دلائل میں مزید کہا کہ اٹھارہویں ترمیم میں آرٹیکل چھ میں معطلی، اعانت اور معطل رکھنے کے الفاظ شامل کئے گئے تھے۔ اس پر عدالت نے کہا کہ پارلیمنٹ نے تین لفظ شامل کرکے پورے آئین کی حیثیت کو بدل دیا۔


    یاد رہے کہ گذشتہ برس ستائیس دسمبر کو پرویز مشرف نے خصوصی عدالت کا فیصلہ لاہور ہائیکورٹ میں چیلنج کیا تھا۔ اس فیصلے میں سابق صدر کو آرٹیکل چھ کے تحت سزائے موت کا مرتکب قرار دیا گیا تھا۔



    دنیا کی مختلف جیلوں میں اب بھی تقریباً 11 ہزار پاکستانی قید
    دنیا کے مختلف ممالک کی جیلوں میں اب بھی دس ہزار آٹھ سو چھیانوے پاکستانی قید ہیں۔ ان ممالک میں متحدہ عرب امارات، چین، ایران، بھارت، یونان، عراق، کویت، ملائیشیاء، ترکی، تھائی لینڈ، سپین، اٹلی، فرانس اور کینیڈا سمیت کئی دیگر ممالک شامل ہیں۔


    دنیا نیوز کو موصول دستاویزات کے مطابق اومان، سری لنکا، قطر روس، پرتگال، ناروے، ساؤتھ افریقہ، ہنگری، آسٹریلیا، بحرین، افغانستان اور بنگلا دیش کی جیلوں میں بھی سینکڑوں پاکستانی قید ہیں۔


    دستاویز کے مطابق 4 ہزار 120 پاکستانی منشیات سمگلنگ، 1 ہزار 195 غیر قانونی امیگریشن جبکہ 1 ہزار 737 قتل، اغوا اور چوری کی جرائم میں قید ہیں۔


    ان میں سے 190 پاکستانی انسانی سمگلنگ، 165 ڈکیتی، 374 فراڈ، 467 پاکستانی ویزا مدت ختم اور 2 ہزار 61 پاکستانی معمولی جرائم کی وجہ سے جیل میں ہیں۔

  2. اس مفید مراسلے کے لئے درج ذیل رُکن نے حبیب صادق کا شکریہ ادا کیا:

    Maria (01-14-2020)

  3. #2
    رکنِ خاص
    تاريخ شموليت
    Oct 2019
    پيغامات
    311
    شکریہ
    312
    262 پیغامات میں 265 اظہار تشکر

    جواب: دنیا کی مختلف جیلوں میں اب بھی تقریباً 11 ہزار پاکستانی قید

    حالات حاضرہ سے آگاہ رکھنے کا شکریہ

اس موضوع کے کلیدی الفاظ (ٹیگز)

آپ کے اختيارات بسلسلہ ترسيل پيغامات

  • آپ نئے موضوعات پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ جوابات نہیں پوسٹ کر سکتے ہیں
  • آپ اٹیچمنٹ پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ اپنے پیغامات مدون نہیں کر سکتے ہیں
  •  
Cultural Forum | Study at Malaysian University