پاکستان محفوظ ملک، برطانیہ نے اپنے شہریوں کیلئے سفری ایڈوائزری تبدیل کردی

برطانیہ نے پاکستان کو محفوظ ملک اور امن وامان کی صورتحال بہتر قرار دیتے ہوئے سفری ایڈوائزری تبدیل کر دی ہے۔ برطانوی ہائی کمیشن کا کہنا ہے کہ گزرے پانچ سال کے دوران امن کی بحالی حکومتی کاوششوں کا نتیجہ ہے۔

برطانیہ کی حکومت نے پاکستان میں امن وامان کی بہتر صورت حال کا اعتراف کرتے ہوئے اپنے شہریوں کو سفر کے لیے پابندیوں میں نرمی کا اعلان کیا ہے۔

اسلام آباد میں قائم برطانوی ہائی کمیشن کی جانب سے جاری اعلامیے کے مطابق برطانیہ نے آج سفری ہدایات تبدیل کردی ہے جو پاکستان میں سکیورٹی کی صورت حال کی بہتری کا عکس ہے۔

اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ یہ اعلان برطانیہ کا پاکستان کے لیے سفری ہدایات کے تفصیلی جائزے کا نتیجہ ہے جو ملک میں سیکیورٹی صورت حال کا وسیع جائزے کی بنیاد پر کیا گیا۔ 2015 کے بعد یہ پہلی اہم پیش رفت ہے۔

اعلامیے کے مطابق سکیورٹی کی بہتر صورتحال کے نتیجے میں جون 2019 میں برٹش ایئرویز نے پاکستان نے اپنی پرواز بحال کردی اور اکتوبر 2019ء میں ڈیوک اینڈ ڈچز آف کیمبرج نے پاکستان کا دورہ کیا۔پاکستان کے مختلف سیاحتی مقامات کا ذکر کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ تبدیلیوں سے برطانوی شہریوں کو پاکستان کے شمالی علاقہ جات بشمول کیلاش اور بمبورت وادیوں تک بذریعہ سڑک جانے کی اجازت ہو گئی۔

پاکستان کے لیے برطانوی ہائی کمشنر ڈاکٹر کرسچین ٹرنر کا کہنا تھا کہ دسمبر2019 میں پاکستان میں اپنی ذمہ داریاں سنبھالنے کے بعد سفری ہدایات کا جائزہ ترجیحی بنیادوں پر لیا۔ان کا کہنا تھا کہ حکومتِ پاکستان کی گذشتہ پانچ برسوں کے دوران امن و امان کو بہتر کرنے کی ان تھک کوششوں کا نتیجہ ہے۔



برطانوی ہائی کمشنر کا کہنا تھا کہ مجھے خوشی ہے کہ اب برطانیہ کے شہری پاکستان میں خوبصورت سیاحتی مقامات سے زیادہ لطف اندوز ہوسکیں گے۔

واضح رہے کہ برٹش ایئرویز نے ستمبر 2008ء میں اسلام آباد کے میریٹ ہوٹل میں ہونے والے بم دھماکے کے بعد پاکستان کے لیے اپنی پروازوں کو غیر معینہ مدت کے لیے بند کردیا تھا۔برٹش ایئرویز نے 2018 میں پاکستان کی سکیورٹی کی صورت حال کو بہتر تسلیم کرتے ہوئے اپنی پروازیں بحال کرنے کا اعلان کردیا تھا۔ اس وقت کے برطانوی ہائی کمشنر تھومس ڈریو نے ٹویٹر پر بیان جاری کرتے ہوئے کہا تھا کہ ہیتھرو ایئرپورٹ سے اسلام آباد کے نئے ایئرپورٹ کے لیے براہ راست پروازوں کا آغاز آئندہ جون سے کیا جائے گا۔

بعد ازاں 3 جون 2019ء کو برٹش ایئرویز کی پرواز ba261، بوئنگ طیارے 787 میں 200 سے زائد مسافروں کو لے کر صبح 9 بج کر 15 منٹ پر اسلام آباد پہنچی تھی۔

پاکستان کے لیے پروازوں کے حوالے سے کہا گیا تھا کہ شیڈول کے مطابق برٹش ایئر ویز کی ہفتہ وار 3 پروازیں اسلام آباد سے لندن اور لندن سے اسلام آباد چلائی جائیں گی۔

14 اکتوبر 2019 کو برطانوی شہزادہ ولیم اور ان کی اہلیہ کیٹ مڈلٹن تاریخی دورے پر پاکستان پہنچ گئے تھے اور پاکستان کے مختلف شہروں کے علاوہ شمالی علاقہ جات اور لاہور کا بھی دورہ کیا تھا۔

وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ برطانیہ کی ٹریول ایڈوائزی میں تبدیلی کا کریڈٹ پوری قوم اور مسلح افواج کو جاتا ہے۔ میری ٹریول ایڈوائزری پر اپنے برطانوی ہم منصب سے بات ہوئی تھی جبکہ امریکی صدر سے بھی اس معاملے پر گفتگو ہوئی۔

انہوں نے بتایا کہ سعودی عرب، ترکی اور ملائیشیا سے سیاحت کے حوالے سے بات چیت چل رہی ہے۔ توقع یہ ممالک سیاحت کے فروغ میں ہماری مدد کریں گے۔

شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ وزیراعظم نے محمد بن سلمان سے پاکستان میں سیاحت کے حوالے سے سرمایہ کاری کی درخواست کی ہے۔ میرٹ پر کیس دیکھا گیا تو پاکستان گرے لسٹ سے بھی نکل جائے گا۔