توریت کا نزول

قرآنِ مجید میں حضرت موسیٰ علیہ السلام کا جو یہ واقعہ موجود ہے کہ اللہ تعالیٰ نے ان کو نئی شریعت اور کتاب دینے کے لئے کوہِ طور پر پہلے تیس (30) راتوں کا اعتکاف کرنے کا حکم فرمایا اور پھر مزید دس (10) راتوں کا اضافہ فرماکر کل چالیس (40) راتیں مکمل ہونے پر اُن کو شریعت اور کتاب (توریت) عطا فرمائی تو ان چالیس (40) راتوں کے بارے میں حضرات مفسرین نے لکھا ہے کہ یہ چالیس (40) راتیں ذی قعدہ کے پورے مہینے اور ذی الحجہ کے پہلے عشرے کی تھیں۔ چنانچہ امام ابن کثیر ؒ لکھتے ہیں کہ ’’حضرت موسیٰ علیہ السلام کے اعتکاف کی میعاد عید الاضحی کے دن پوری ہوئی تھی اور اسی دن آپ ؑ کو اللہ تعالیٰ سے ہم کلامی کا شرف نصیب ہوا تھا۔‘‘ (تفسیر ابن کثیرؒ: 3/421)