نتائج کی نمائش 1 تا: 5 از: 5

موضوع: مسلم سائنسداں

  1. #1
    معاون
    تاريخ شموليت
    Dec 2010
    پيغامات
    50
    شکریہ
    8
    5 پیغامات میں 5 اظہار تشکر

    مسلم سائنسداں


    ابن ابی اصیبعہ

    ان کا پورا نام "موفق الدین ابو العباس احمد بن سدید الدین القاسم" ہے، ان کا تعلق طب میں مشہور ایک خاندان سے تھا اور موفق الدین اس خاندان کے مشہور ترین فرد تھے، 600 ہجری میں دمشق میں پیدا ہوئے اور "ابا العباس" کنیت پائی اور پھر اپنے دادا کے لقب "ابن ابی اصیبعہ" سے مشہور ہوئے، درس و تدریس، طب و معالجہ کے ماحول میں تربیت ہوئی، علمی اور نظری تعلیم دمشق اور قاہرہ میں پائی، بیمارستانِ نوری میں طب کی خدمات سر انجام دیں، ان کے اساتذہ میں مشہور نباتاتی عالم اور "جامع المفردات" کے مصنف "ابن البیطار" شامل ہیں، وہ بیمارستانِ ناصری میں بھی خدمات انجام دیتے رہے اور وہیں پر مشہور طبیب اور "اقراباذین" المعروف "دستورِ بیمارستانی" کے مصنف "ابن ابی البیان" کے درس سے بھی مستفید ہوئے۔
    ابن ابی اصیبعہ زیادہ عرصہ مصر میں نہیں رہے اور 635 ہجری کو صرخد (اب سوریا میں یہ مقام صلخد کے نام سے مشہور ہے) کے امیر عز الدین ایدمر کی دعوت پر شام کوچ کر گئے اور وہیں پر 668 ہجری کو انتقال کر گئے۔
    ابن ابی اصیبعہ اپنی کتاب "عیون الانباء فی طبقات الاطباء" سے مشہور ہوئے جو کہ آج بھی عربوں کے ہاں طب کی تاریخ کا سب سے بڑا مصدر سمجھی جاتی ہے۔۔ ابن ابی اصیبعہ کی باتوں سے معلوم ہوتا ہے کہ انہوں نے اس کے علاوہ بھی تین کتابیں لکھی تھیں جو کہ ہم تک نہیں پہنچیں ان کتابوں کے نام یہ ہیں:
    1- حکایات الاطباء فی علاجات الادواء۔
    2- اصابات المنجمین۔
    3- کتاب التجارب والفوائد۔
    آخری کتاب کی تصنیف شروع ہی نہیں کی گئی تھی۔
    ابنِ باجہان کا پورا نام "ابو بکر بن یحیی بن الصائغ الثجیبی" ہے "ابن باجہ" کے لقب سے مشہور ہوئے، وہ اندلس میں عرب کے سب سے پہلے مشہور فلسفی تھے، فلسفہ کے علاوہ وہ سیاست، طبیعات، علمِ فلک، ریاضی، موسیقی اور طب میں بھی مہارت رکھتے تھے، خاص طور سے علمِ طب میں اس قدر شہرت پائی کہ ان کے عہد کے طبیب ان سے حسد کرنے لگے اور ایک سازش کے تحت انہیں زہر دے دیا گیا جس سے وہ فاس (مراکش) میں 529 ہجری کو انتقال کر گئے۔
    ابن ابی اصیبعہ تین مختلف زمروں (شروحات ارسطوطالیس، تصنیفاتِ اشراقیہ، طبی تصنیفات) میں 28 تصنیفات ابنِ باجہ سے منسوب کرتے ہیں، ان کی طبی تصنیفات یہ ہیں:
    1- کلام علی شیء من کتاب الادویہ المفردہ لجالینوس۔
    2- کتاب التجربتین علی ادویہ وافد۔
    3- رازی کی کتاب "الحاوی" کی اختصار بعنوان "اختصار الحاوی"۔
    4- کلام فی المزاج بما ہو طبی۔

  2. #2
    منتظم اعلی
    تاريخ شموليت
    Nov 2010
    پيغامات
    337
    شکریہ
    0
    6 پیغامات میں 7 اظہار تشکر

    RE: مسلم سائنسداں

    واہ نازک حسین...... میرا بھی ایسا کچھ دل کر رہا تھا کہ میں نامور مسلمان سائنسدانوں پر کچھ لکھوں.... اور کافی حد تک لکھ بھی چکا ہوں مگر ابھی اس قابل نہیں کہ یہاں پوسٹ کر سکوں....... کام کا بوجھ اس قدر زیادہ ہو چکا ہے کہ فورم کے لئے بہت کم وقت نکل پاتا ہے...... بہرحال میں اس پر ضرور لکھوں گا.... ان شاء اللہ

  3. #3
    ناظم خاص تانیہ کا اوتار
    تاريخ شموليت
    Nov 2010
    مقام
    گجرات
    پيغامات
    7,859
    شکریہ
    949
    877 پیغامات میں 1,102 اظہار تشکر

    RE: مسلم سائنسداں

    تھینکس فار شیئرنگ نازک حسین جی

  4. #4
    منتظم اعلی بےباک کا اوتار
    تاريخ شموليت
    Nov 2010
    پيغامات
    6,134
    شکریہ
    2,100
    1,211 پیغامات میں 1,583 اظہار تشکر

    RE: مسلم سائنسداں

    شکریہ ،نازک حسین صاحب ،
    مسلم سائینسدانوں پر آپ کی یہ تحریر ہمیں یہ بتاتی ہے کہ مسلمان بڑے زیرک اور ذھین تھے ، اب بھی یہ موجود ہیں ، بس ان کو رھنمائی کی سخت ضرورت ہے ، جب کہ ہماری حکومتیں ہمیں اغیار کی محکوم بنانے پر تلی ہوئی ہیں ،
    جزاک اللہ خیر..

  5. #5
    ناظم
    تاريخ شموليت
    Feb 2011
    پيغامات
    3,081
    شکریہ
    21
    91 پیغامات میں 134 اظہار تشکر

    RE: مسلم سائنسداں

    شئیرنگ کاشکریہ۔

آپ کے اختيارات بسلسلہ ترسيل پيغامات

  • آپ نئے موضوعات پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ جوابات نہیں پوسٹ کر سکتے ہیں
  • آپ اٹیچمنٹ پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ اپنے پیغامات مدون نہیں کر سکتے ہیں
  •  
Cultural Forum | Study at Malaysian University