نتائج کی نمائش 1 تا: 3 از: 3

موضوع: آسان علاج

  1. #1
    معاون
    تاريخ شموليت
    Dec 2010
    پيغامات
    50
    شکریہ
    8
    5 پیغامات میں 5 اظہار تشکر

    آسان علاج



    [size=large]پڑھائی بلڈ پریشر کم کرتی ہے
    اعلیٰ تعلیم

    تعلیم اور بلڈ پریشر میں گہرا تعلق دیکھا گیا ہے

    امریکہ میں کی جانے والی ایک تحقیق کے مطابق زیادہ عرصہ تک تعلیم حاصل کرنے سے اگرچہ امتحان دینے کا دباؤ تو رہتا ہے لیکن جسم میں خون کا دباؤ بہتر ہو جاتا ہے۔

    ہائی بلڈ پریشر، یا ہائیپر ٹینشن، کی وجہ سے دل کا دورہ، فالج کا حملہ یا گردے ناکام ہو جاتے ہیں۔
    بی ایم سی پبلک ہیلتھ میں شائع ہونے والی ایک تحقیق کے مطابق اس کا تعلق مردوں سے زیادہ عورتوں میں ہوتا ہے۔
    برٹش ہارٹ فاؤنڈیشن کا کہنا ہے کہ تحقیق دل کی بیماری اور غربت میں تعلق بھی ظاہر کرتی ہے۔
    اعلیٰ درجوں تک تعلیم حاصل کرنے سے دل کی بیماری کا خطرہ کم رہتا ہے۔ تحقیق کاروں کا خیال ہے کہ اس کی وجہ بلڈ پریشر ہو سکتا ہے۔
    تحقیق کے لیے تین ہزار آٹھ سو نوے افراد کا گزشتہ تیس سال کا ڈیٹا دیکھا گیا۔ لوگوں کو تین گروہوں میں تقسیم کیا گیا جس میں کم تعلیم (بارہ سال یا کم عمر)، درمیانی تعلیم (تیرہ سال سے سولہ سال)، اور اعلیٰ تعلیم (سترہ سال اور زیادہ) جیسے گروہ بنائے گئے۔
    اس کے بعد تیس سال کے عرصے کا اوسط سِسٹولک بلڈ پریشر نکالا گیا۔
    کم تعلیم یافتہ عورتوں کا بلڈ پریشر 3.26 ایم ایم ایچ جی تھا جو کہ اچھی تعلیم والوں سے زیادہ تھا۔ مردوں میں یہ فرق 2.26 ایم ایم ایچ جی تھا۔
    سگریٹ نوشی، بلڈ پریشر کی ادویات کا استعمال اور شراب نوشی کا اثر بھی مدِ نظر رکھا گیا اور ان کا اثر بھی خون کے دباؤ پر رہا لیکن بہت کم مقدار میں۔
    [/size]

  2. #2
    ناظم
    تاريخ شموليت
    Feb 2011
    پيغامات
    3,081
    شکریہ
    21
    91 پیغامات میں 134 اظہار تشکر

    RE: آسان علاج

    بہت شکریہ۔

  3. #3
    ناظم خاص تانیہ کا اوتار
    تاريخ شموليت
    Nov 2010
    مقام
    گجرات
    پيغامات
    7,869
    شکریہ
    949
    880 پیغامات میں 1,107 اظہار تشکر

    RE: آسان علاج

    تھینکس فار شیئرنگ

آپ کے اختيارات بسلسلہ ترسيل پيغامات

  • آپ نئے موضوعات پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ جوابات نہیں پوسٹ کر سکتے ہیں
  • آپ اٹیچمنٹ پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ اپنے پیغامات مدون نہیں کر سکتے ہیں
  •  
Cultural Forum | Study at Malaysian University