نتائج کی نمائش 1 تا: 5 از: 5

موضوع: فلسفہ صحت ومرض

  1. #1
    رکنِ خاص
    تاريخ شموليت
    Apr 2011
    پيغامات
    291
    شکریہ
    18
    35 پیغامات میں 52 اظہار تشکر

    فلسفہ صحت ومرض

    دور حاضر میں لوگوں کے اندر صحت اور مرض کے بارے میں متضادآراء ہیں ۔اس مختصر سی بحث کا مقصد صرف اور صرف قارئین کے اند ر اس شعور کو اجاگر کرنا ہے کہ صحت کس چیز کا نام ہے اور مرض کیا بلا ہے کیونکہ اکثر لوگ آج کل یہی سمجھتے ہیں کہ جسم کا موٹا تازہ ہونا ہی صحت ہے خواہ نظام ہائے جسمانی درست ہوں یا نہ ہوں بلکہ بعض اوقات استحالے (Metabolism)کے نظام میں بگاڑ کے سبب بھی جسم پھولنا شروع ہو جاتا ہے جو کہ صحت نہیں بلکہ مرض ہے۔
    انسانی جسم خالق کائنات کی تخلیق کا شاہکار ہے ۔انسانی جسم کی یہ پیچیدہ مشین لاتعدادچھوٹے چھوٹے خلیات(Cells) پر مشتمل ہے۔جب ایک جیسے خلیات ملتے ہیں تو ان سے بافتیں(Tissues) تنظیم پاتی ہیں ،ایک جیسی بافتیں مل کر اعضاء اور ایک جیسے افعال سرنجام دینے والے اعضاء باہم مل کرایک نطام کو تشکیل دیتے ہیں ۔انسانی جسم مختلف نظام ہائے جسمانی پر مشتمل ہے جیسے نظام ہضم ،نظام تنفس ،نظام اعصاب وغیرہ ۔اگر کسی نظام کے کسی عضو میں نقص واقع ہو جائے اور وہ عضو اپنے انجام کار میں کوتاہی برتنے لگے تو ایسی صورت میں متعلقہ نظام میں خلل واقع ہوجاتا ہے اور جسم انسانی کی یہی حالت مرض کہلاتی ہے صحت اور مرض کی مزید وضاحت یوں کی جاسکتی ہے۔
    صحت انسانی جسم کی ایسی حالت ہے جس میں تمام نظام ہائے جسمانی اور ان کے متعلقہ اعضاء اپنے افعال پوری تندہی اور بطریق احسن انجام پارہے ہوں ایسی حالت کو اصطلاح طب میں صحت کے نام سے جانا جاتا ہے ۔
    صحت یہ نہیں ہے کہ جسم موٹا تازہ ہو اور جسم پر چربی چڑھی ہو وغیرہ بلکہ ان حالات میں بعض افراد موٹاپے کا شکار ہو جاتے ہیں اور معمولی حرکت سے ایسے لوگوں کا سانس بھی پھولنے لگتا ہے یہی مرض کی علامت ہے کیونکہ مرض کی تعریف یوں کی جاسکتی ہے ،کہ
    مرض نام ہے انسانی جسم میں کسی نظام یا اس کے کسی عضو کے فعل کا بگاڑ خواہ ایسا شخص موٹا تاہ ہو یا دبلا پتلا ہو اگر اس کا کوئی نظام یا عضو اپنے فعل سے کوتاہی برتتا ہے اور اپنا کام درست طریق سے انجام نہیں دے پارہا تو ایسا شخص بیمار کہلائے گا۔
    لہذا درج بالا تشریحات سے ثابت ہوا کہ صحت جسم کے موٹا ہونے یا جسم پر زائد گوشت ہو نے کا نام نہیں بلکہ صحت اعضاء کے درست افعال کی انجام دہی کا نام ہے۔اسی طرح دبلا پتلا ہونا مرض نہیں بلکہ کسی عضو کے فعل میں نقص کا نام مرض ہے۔
    لیکن اس کایہ مطلب بھی نہیں کہ جسم پر زائد چربی یا گوشت کا ہونا مرض کی علامت ہے ہر گز ایسا نہیں بلکہ گوشت اور چربی جسم کی خوبصورتی میں اضافے کا باعث ہوتے ہیں اورکسی قدر جسم کے رگ و پٹھوں کی حفاظت بھی کرتے ہیں اور ایسا شخص اگر کسی مرض میں مبتلا نہیں تو وہ صحت مندہے لیکن اگر ایسا شخص زائد گوشت یا چربی کے باعث کسی مرض مثلاً بلڈ پریشر ،شوگر،دمہ وغیرہ میں مبتلا ہے تو وہ ایک موٹا تازہ جسم رکھنے کے باوجود بیمار ہے۔
    اسی طرح دبلا ہونے کا مطلب صحت نہیں ہے بلکہ ایسا شخص صحت مند اسی وقت ہو گا اگر اس کے تمام نظام ہائے جسمانی درست ہوں بصورت دیگر وہ شخص بیمار کہلائے گا ۔
    اس بحث کا مقصد صرف اور صرف عوام الناس کے اند ر اس شعور کو اجاگر کرنا ہے کہ صحت کس چیز کا نام ہے اور مرض کیا بلا ہے کیونکہ اکثر لوگ آج کل یہی سمجھتے ہیں کہ صرف موٹا تازہ ہونا ہی صحت ہے خواہ نظام ہائے جسمانی درست ہوں یا نہ ہوں بلکہ بعض اوقات استحالے (Metabolism)کے نظام میں بگاڑ کے سبب بھی جسم موٹاپے کا شکار ہو سکتا ہے۔
    اسے پڑھئے اور اپنی قیمتی اآراء سے نوازیے۔[

  2. #2
    ناظم
    تاريخ شموليت
    Nov 2010
    پيغامات
    754
    شکریہ
    148
    74 پیغامات میں 100 اظہار تشکر

    RE: فلسفہ صحت ومرض

    [size=large]
    :aslamalum:
    ماشاءاللہ محمد معروف بھائی واقعی آپ نے سچ بات سمجھائی
    کہ پتلا یا موٹا ہونا مرض نہیں یا تندرستی کی نشانی نہیں
    اصل چیز انسان کے جسم کے مکمل عضو کا ٹھیک کام کرنے
    کا نام تندرستی ہے
    واقعی اجکل اکثر لوگ اسی وہم میں مبتلا رہتے ہیں کوئی کہتا
    ہے میں پتلا ہوں بیماری ہے کوئی کہتا ہے میں موٹا ہوں بیماری ہے


    ماشاءاللہ اپ نے بہت اچھی بات سمجھائی بتائی کہ اصل بات کیا ہے
    تھنکس محمد معروف بھائی
    [/size]

  3. #3
    منتظم اعلی بےباک کا اوتار
    تاريخ شموليت
    Nov 2010
    پيغامات
    6,161
    شکریہ
    2,126
    1,234 پیغامات میں 1,606 اظہار تشکر

    RE: فلسفہ صحت ومرض


    بہت بہت شکریہ جناب معروف صاحب ،
    آپ کو اللہ تعالی نے خوب علم دیا ہے آپ ہم سب سے ضرور شئیر کرتے رہیں ، بالکل اسی طرح جس طرح آپ نے یہ مضمون لگایا ہے ،
    جزاک اللہ خیرا
    ..............................
    بہت زبردست معلوماتی مضمون ہے ،

  4. #4
    ناظم
    تاريخ شموليت
    Feb 2011
    پيغامات
    3,081
    شکریہ
    21
    91 پیغامات میں 134 اظہار تشکر

    RE: فلسفہ صحت ومرض

    مفید معلومات کےلیے بہت شکریہ

  5. #5
    ناظم اوشو کا اوتار
    تاريخ شموليت
    Dec 2010
    پيغامات
    357
    شکریہ
    58
    46 پیغامات میں 79 اظہار تشکر

    فلسفہ صحت ومرض

    معروف جی!
    “مرض“ کی بہت اچھے طریقے سے تشریح اور وضاحت فرمائی آپ نے۔
    ایک بہت مفید مضمون ہمارے ساتھ شیئر کرنے کے لیے آپ کا بہت شکریہ۔

آپ کے اختيارات بسلسلہ ترسيل پيغامات

  • آپ نئے موضوعات پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ جوابات نہیں پوسٹ کر سکتے ہیں
  • آپ اٹیچمنٹ پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ اپنے پیغامات مدون نہیں کر سکتے ہیں
  •  
Cultural Forum | Study at Malaysian University