نتائج کی نمائش 1 تا: 2 از: 2

موضوع: نیت میں کھوٹ ہے

  1. #1
    ناظم سیما کا اوتار
    تاريخ شموليت
    May 2011
    پيغامات
    2,514
    شکریہ
    409
    125 پیغامات میں 159 اظہار تشکر

    نیت میں کھوٹ ہے

    [size=x-large]”جب کل مذاکرات کرنے ہیں تو آج کیوں نہیں؟“ میڈیا کے مطابق یہ آج کے حامدکرزئی کی سوچ ہے۔ اب صدرکرزئی افغانستان میں فوجی حکمت عملی اور مستقبل کے لائحہ عمل سے متعلق اپنے خیالات یکسر تبدیل کرچکے ہیں۔ حالانکہ اس سے پہلے وہ امریکی حکومت کے طالبان سے مذاکرات کی مخالفت کرتے رہے ہیں۔خود امریکا نے بھی ماضی میں طالبان کے ساتھ مذاکرات سے انکارکیا اور فوج کشی کو ترجیح دی لیکن بعد میں امریکا نے بھی یہی کہاکہ ”جب کل مذاکرات کرنے ہیں تو آج کیوں نہیں“ یہ اور بات ہے کہ ان کا آج گزرے بھی کئی سال ہوگئے۔ امریکا اور برطانیہ کی کئی سال کی کوششوں کے باوجود وہ طالبان کو مذاکرات کی میز پرلانے میں کامیاب نہیں ہوئے۔ بلکہ ان کوششوں کے دوران انہوں نے بڑے بڑے دھوکے کھائے۔ افغان تاجروں نے برطانوی رائل ایئرفورس کے طیارے میں سیرکا مزہ لیا اور بقول امریکی حکام کے ڈالروں سے بھرے بریف کیس لے کر غائب ہوگئے۔ لیکن ساتھ ہی وہ اس بات کا خدشہ بھی ظاہرکرتے رہے کہ اس میں کچھ اندرونی کمزوریاں بھی موجود ہیں(یعنی بقول ان کے ایسی تمام دھوکا دہی کی وارداتوں میں افغان حکومت زیادہ اورامریکی کم شامل رہے ہیں)۔بہرحال اب امریکی دوبارہ اس نعرے کے تحت کوششوں میں مصروف ہیں۔ اب حامدکرزئی بھی پوری طرح ان سے اتفاق کررہے ہیں۔ امریکی وزیردفاع رابرٹ گیٹس نے تصدیق کی ہے کہ امریکا افغانستان میں طالبان کے ساتھ بات چیت کررہاہے۔ لیکن یہ بات چیت ابھی تک بالکل ابتدائی مراحل میں ہے۔ امریکا پہلے ہی یہ کہہ چکاہے کہ وہ اگلے مہینے جولائی سے اپنی 97 ہزار افواج کو افغانستان سے نکالنے کی ابتداءکررہاہے۔ اور 2014ءتک وہ تمام سیکورٹی ذمہ داریاں افغان سیکورٹی فورسزکے سپردکردے گا۔انخلاءکا یہ فیصلہ بقول امریکی حکام اسامہ کی ہلاکت اور بڑھتے ہوئے فوجی اخراجات کے باعث کیاگیاہے۔ جبکہ کہاجاتاہے کہ اسامہ کی ہلاکت کا فیصلہ بھی اسی باعث کیاگیا تاکہ افغانستان سے نکلنے کی ایک بڑی وجہ دنیا کے سامنے پیش کی جاسکے۔ ناٹو اور امریکا جب بھی افغانستان میں اپنی گزشتہ 10 سال کی کارکردگی کا جائزہ لیتے ہیں تو یاتو کرزئی حکومت پر الزامات لگاتے ہیں یا پاکستانی حکام پر۔ لہٰذا کہاجاسکتاہے کہ اب حامدکرزئی ناٹواورامریکی حکام سے مختلف پیغامات سن سن کر عاجزآگئے ہیں۔ پہلے بش نے افغانستان پر حملے کے ابتدائی چار سال میں کرزئی کی نصیحت کے برخلاف پورے افغانستان کے لیے وسائل اورفوج فراہم کرنے سے انکارکردیاتھا۔ اب اوباما بھی کوئی واضع پالیسی اختیارنہیں کرتے۔ کبھی فوجی کمک بھیجنے کا اعلان کرتے ہیں اورکبھی افغانستان سے نکلنے کی تاریخیں دینے لگتے ہیں۔بہرحال اب تو کرزئی امریکی اورناٹو سب ہی طالبان سے مذاکرات پر متفق ہوگئے ہیں۔ امریکی وزیردفاع کا یہ کہنا ہے کہ اب کی بار یہ یقینی بنایاجائے کہ رابطے حقیقی ہوں اور بااثر طالبان سے ہوں۔ جبکہ اس سلسلے میں امریکی ایلچی مارک گروسمین کو بات چیت کے آغازکے لیے کوئی معتبر راہنما دستیاب نہیں ہورہا۔پچھلے دنوں پاکستان میں افغانستان کے نئے سفیرمحمدعمرداود زئی نے جو غیرمعمولی شخصیت بتائے جاتے ہیں کہ وہ افغان حکومت کی جانب سے آزادانہ اقدام اٹھانے کا اختیاربھی رکھتے ہیں کہاکہ ”ہم جنگوں سے تھک گئے ہیں“ ہم کہیں بھی اور کسی بھی حالت میں جنگ کے حامی نہیں‘ جنگ جنگ سے ختم نہیں ہوتی“ صلح کے مشترکہ کمیشن کا قیام اسی سلسلے کی ایک کوشش ہے۔ اس کمیشن کی ذمہ داریوں میں سے ایک اہم ذمہ داری یہ بتائی گئی ہے کہ طالبان سے رابطہ کیاجائے اور بات کرنے کا سلسلہ شرو ع ہو۔پاکستانی حکومت اس سلسلے میں اہم کردار اداکرسکتی ہے۔ کیا بین الاقوامی برادری کو اس بات کا احساس ہوگیاہی؟ لیکن افغان خصوصاً طالبان کس حدتک پاکستان پربھروسہ کریںگی؟ اس بارے میں کچھ نہیں کہاجاسکتا ایک طرف امریکا اور برطانیہ کی حمایت یافتہ اقوام متحدہ کی کمیٹی افغانستان میں طالبان راہنماوں کے خلاف پابندیاں ختم کرنے کی تیاری کررہی ہے تاکہ طالبان کو امن مذاکرات میں شامل ہونے کے لیے سازگار ماحول فراہم ہوسکے۔ (شاید اسے ہی کہتے ہیں کبھی کے دن بڑے کبھی کی راتیں) اقوام متحدہ کی کمیٹی کے سربراہ مزید فرماتے ہیں کہ ”طالبان واپس آئیں گے ان کو افغان عوام کی حمایت حاصل ہے“ یہ بات اگر 9 سال پہلے دماغ میں آجاتی تو....تولاکھوں لوگ قتل نہ ہوتے‘ہزاروں معذورنہ ہوتی....بے شمار بچے یتیم نہ ہوتی.... دنیا جنگ کے ہولناک نتائج نہ سہتی خصوصاً پاکستان اور خودامریکا....لیکن صلح کی ان ساری کوششوں میں اب بھی کھوٹ ہے۔ کہ ایک طرف طالبان سے مذاکرات کے لیے تڑپ رہے ہیں دوسری طرف پاکستان کو شمالی وزیرستان میں فوجی کارروائی کے لیے اکسایا جارہاہے۔[/size]

  2. #2
    منتظم اعلی بےباک کا اوتار
    تاريخ شموليت
    Nov 2010
    پيغامات
    6,140
    شکریہ
    2,103
    1,215 پیغامات میں 1,587 اظہار تشکر

    RE: نیت میں کھوٹ ہے

    جزاک اللہ سیما جی
    اچھی معلومات شئیر کی ہین آپ نے ،
    بہت خوب

متشابہہ موضوعات

  1. ہماری ہر بات میں جھوٹ کیوں؟
    By ساجد تاج in forum قلم و کالم
    جوابات: 7
    آخری پيغام: 12-23-2012, 12:39 PM
  2. سب جھوٹ ہے
    By نگار in forum شعر و شاعری
    جوابات: 0
    آخری پيغام: 09-14-2012, 11:24 PM
  3. جوابات: 5
    آخری پيغام: 08-14-2012, 09:59 PM
  4. سچای زرور اور زرورجھوٹ مت بولنا
    By گلاب خان in forum متفرق موضوعات
    جوابات: 0
    آخری پيغام: 07-01-2012, 10:58 PM
  5. جھوٹ ہی جھوٹ
    By سیما in forum قلم و کالم
    جوابات: 0
    آخری پيغام: 05-30-2011, 04:55 AM

آپ کے اختيارات بسلسلہ ترسيل پيغامات

  • آپ نئے موضوعات پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ جوابات نہیں پوسٹ کر سکتے ہیں
  • آپ اٹیچمنٹ پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ اپنے پیغامات مدون نہیں کر سکتے ہیں
  •  
Cultural Forum | Study at Malaysian University