وکی لیکس کے بانی لندن میں گرفتار ۔ ( بی بی سی لندن)

امریکی سفارتی دستاویزات کو افشاء کرکے دنیا میں ہلچل مچا دینے والی والی ویب سائٹ وکی لیکس کے بانی جولین اسانش کو لندن میں گرفتار کر لیا گیا ہے۔

انتالیس سالہ جولین کو جو آسٹریلیا کے شہری ہیں، لندن میں میٹروپولیٹن پولیس نے گرفتار کیا۔ ان پر سویڈن میں دو خواتین پر جنسی حملے کا الزام ہے جس سے اسانش انکار کرتے ہیں۔

سکاٹ لینڈ یارڈ کا کہنا ہے کہ مسٹر اسانش کو گرفتاری کے یورپی وارنٹ کے تحت منگل کو اس وقت گرفتار کیا گیا جب وہ پہلے سے طے شدہ وقت کے مطابق صبح ساڑھے نو بجے لندن کے ایک تھانے میں پولیس کے سوالوں کا جواب دینے کے لیے آئے۔

بی بی سی کے سکیورٹی امور کے نامہ نگار فرینک گارڈنر کا کہنا ہے کہ اگر پولیس اسانش کوگرفتار کر لیتی ہے تو انہیں گرفتاری کے چوبیس گھنٹوں کے اندر اندر مجسٹریٹ کی عدالت میں پیش کیا جائے گا اور اس کے بعد انہیں سویڈن کے حوالے کرنے کا عمل شروع ہوگا۔

جولین اسانش پر سویڈن کے حکام کا الزام ہے کہ انھوں نے دو خواتین پر جنسی حملہ کیا۔ ان پر ریپ کا بھی الزام ہے۔ یہ تمام الزامات اگست سنہ دو ہزار کے مبینہ واقعات سے متعلق ہیں۔

مسٹر اسانش کے بارے میں خیال ہے وہ برطانیہ میں روپوش ہیں جولین اسانش کا کہنا ہے کہ ان کے خلاف کیس سیاسی بنیاد پر قائم کیا گیا ہے۔
گزشتہ روز لندن میں جولین اسانش کے وکیل مارک سٹیفنز نے کہا تھا کہ ان کے مؤکل کے خلاف کوئی کیس درج نہیں کیا گیا اور وہ رضاکارانہ طور پر ان کی پولیس سے ملاقات کرانے کی کوشش کر رہے ہیں۔

مسٹر اسانش کی گرفتاری کے یورپی وارنٹ سویڈن کی اعلٰی عدالت کے اس فیصلے کے بعد جاری کیے گئے ہیں جس کے تحت ان کی گرفتاری کے خلاف درخواست مسترد کر دی گئی تھی۔