صفحہ 1 از 2 12 آخریآخری
نتائج کی نمائش 1 تا: 10 از: 11

موضوع: حضرت خضر کي عبادت گاہ

  1. #1
    ناظم خاص تانیہ کا اوتار
    تاريخ شموليت
    Nov 2010
    مقام
    گجرات
    پيغامات
    7,877
    شکریہ
    952
    881 پیغامات میں 1,108 اظہار تشکر

    حضرت خضر کي عبادت گاہ

    [size=x-large][align=center]حضرت خضر کي عبادت گاہ

    مقدس شہر قم سے چھ کلومیٹر کے فاصلے پر حضرت خضر نبی (ع) سے منسوب پہاڑی ـ کوہ خضر ـ واقع ہے۔ اس پہاڑی کی چوٹی پر تین ہزار سال قبل ایک غار تھی جس میں حضرت خضر (ع) عبادت الہی کیا کرتے تھے۔ وہ پرانی غار آج ایک چھوٹی سی مسجد میں تبدیل ہوگئی ہے اور حال حاضر میں بھی اولیاء الہی کی قدمگاہ ہے۔


















    [/align]
    [/size]

  2. #2
    ناظم خاص تانیہ کا اوتار
    تاريخ شموليت
    Nov 2010
    مقام
    گجرات
    پيغامات
    7,877
    شکریہ
    952
    881 پیغامات میں 1,108 اظہار تشکر

    RE: حضرت خضر کي عبادتگاہ

    [align=center]






    [/align]

  3. #3
    رکنِ خاص سقراط کا اوتار
    تاريخ شموليت
    Nov 2010
    پيغامات
    1,469
    شکریہ
    35
    149 پیغامات میں 217 اظہار تشکر

    RE: حضرت خضر کي عبادتگاہ

    جزاک اللہ آپ کہ وجہ سے پہلی بار یہ جگہ دیکھنے کو ملی آپ اس کو اسلامک تصاویر کے شعبے میں منتقل کردیں

  4. #4
    ناظم اذان کا اوتار
    تاريخ شموليت
    Jan 2011
    پيغامات
    1,898
    شکریہ
    138
    108 پیغامات میں 161 اظہار تشکر

    RE: حضرت خضر کي عبادتگاہ

    [size=large]ویری نائس شیئرنگ
    بہت خوب
    زبردست
    جزاک اللہ
    [/size]

  5. #5
    منتظم اعلی بےباک کا اوتار
    تاريخ شموليت
    Nov 2010
    پيغامات
    6,204
    شکریہ
    2,188
    1,260 پیغامات میں 1,635 اظہار تشکر

    RE: حضرت خضر کي عبادت گاہ

    بہت خوب ، حضرت خضر علیہ السلام کی عبادت والی جگہ دیکھ کر احساس ہوتا ہے کہ ہم مسلمانوں کا ماضی کتنا شاندار رہا ، کہ ہم انبیاء علیہم السلام کے وارث ہیں ، اور اللہ تعالی ہمیں حقیقی وارث بننا نصیب فرمائے ، آمین

  6. #6
    ناظم
    تاريخ شموليت
    Feb 2011
    پيغامات
    3,081
    شکریہ
    21
    91 پیغامات میں 134 اظہار تشکر

    RE: حضرت خضر کي عبادت گاہ

    شئیرنگ کاشکریہ۔

  7. #7
    رکنِ خاص
    تاريخ شموليت
    Jun 2012
    پيغامات
    5,446
    شکریہ
    138
    96 پیغامات میں 104 اظہار تشکر

    RE: حضرت خضر کي عبادت گاہ

    جزاک اللہ بہت اعلی شئیرنگ ہے

  8. #8
    رکنِ خاص
    تاريخ شموليت
    Nov 2012
    پيغامات
    275
    شکریہ
    0
    3 پیغامات میں 5 اظہار تشکر

    حضرت خضر کي عبادت گاہ

    درباروںکو اسلام کے دائرے سے باہر ہی رکھنا چاہیے، جس کا تعلق اسلام سے نہیں ہے اُس کو اسلام کے زمرے میں رکھنا نہیں چاہیے

  9. #9
    رکنِ خاص نگار کا اوتار
    تاريخ شموليت
    Dec 2011
    پيغامات
    5,360
    شکریہ
    663
    357 پیغامات میں 424 اظہار تشکر

    حضرت خضر کي عبادت گاہ

    اقتباس اصل پيغام ارسال کردہ از: ساجد تاج پيغام ديکھيے
    درباروںکو اسلام کے دائرے سے باہر ہی رکھنا چاہیے، جس کا تعلق اسلام سے نہیں ہے اُس کو اسلام کے زمرے میں رکھنا نہیں چاہیے
    بلکل آپ نے ٹھیک کہا کہ اسلام میں دربار وغیرہ کا کوئی ذکر نہیں بلکہ فرمایا گیا ہے کہ جہاں بلند اور پختہ قبریں نظر آئے تو ان کو مٹا کر زمین کے ساتھ ہموار کر دیں
    قبر کی اونچائی ایک فٹ سے ڈیڑھ فت تک ہوتی ہے ، ویسے اب مجھے بھی صحیح اونچائی کا علم نہیں تھوڑا کنفیوز ہو رہا ہوں لیکن اسی کے لگ بھگ اونچائی کا ذکر ہے ۔

  10. #10
    ناظم
    تاريخ شموليت
    Nov 2010
    پيغامات
    754
    شکریہ
    148
    74 پیغامات میں 100 اظہار تشکر

    حضرت خضر کي عبادت گاہ

    اقتباس اصل پيغام ارسال کردہ از: نگار پيغام ديکھيے
    اقتباس اصل پيغام ارسال کردہ از: ساجد تاج پيغام ديکھيے
    درباروںکو اسلام کے دائرے سے باہر ہی رکھنا چاہیے، جس کا تعلق اسلام سے نہیں ہے اُس کو اسلام کے زمرے میں رکھنا نہیں چاہیے
    بلکل آپ نے ٹھیک کہا کہ اسلام میں دربار وغیرہ کا کوئی ذکر نہیں بلکہ فرمایا گیا ہے کہ جہاں بلند اور پختہ قبریں نظر آئے تو ان کو مٹا کر زمین کے ساتھ ہموار کر دیں
    قبر کی اونچائی ایک فٹ سے ڈیڑھ فت تک ہوتی ہے ، ویسے اب مجھے بھی صحیح اونچائی کا علم نہیں تھوڑا کنفیوز ہو رہا ہوں لیکن اسی کے لگ بھگ اونچائی کا ذکر ہے ۔
    اللہ کے بندو کدھر کی بات کدھر لے چلتے ہو
    سیانے ہو جاو یار
    جزاک اللہ خیر

صفحہ 1 از 2 12 آخریآخری

آپ کے اختيارات بسلسلہ ترسيل پيغامات

  • آپ نئے موضوعات پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ جوابات نہیں پوسٹ کر سکتے ہیں
  • آپ اٹیچمنٹ پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ اپنے پیغامات مدون نہیں کر سکتے ہیں
  •  
Cultural Forum | Study at Malaysian University