نتائج کی نمائش 1 تا: 2 از: 2

موضوع: اس سے پہلے کہ بے وفا ہو جائیں

  1. #1
    رکنِ خاص
    تاريخ شموليت
    Nov 2011
    پيغامات
    527
    شکریہ
    31
    49 پیغامات میں 71 اظہار تشکر

    اس سے پہلے کہ بے وفا ہو جائیں

    [size=x-large][align=center]اس سے پہلے کہ بے وفا ہو جائیں
    کیوں نہ اے دوست ہم جدا ہو جائیں

    تو بھی ہیرے سے بن گیا تھا پتھر
    ہم بھی کل جانے کیا سے کیا ہو جائیں

    تو کہ یکتا تھا بے شمار ہوا
    ہم بھی ٹوٹیں تو جا بجا ہو جائیں

    ہم بھی مجبوریوں کا عذر کریں
    پھر کہیں اور مبتلا ہو جائیں

    ہم اگر منزلیں نہ بن پائے
    منزلوں تک کا راستہ ہو جائیں

    دیر سے سوچ میں ہیں پروانے
    راکھ ہو جائیں یا ہوا ہو جائیں

    اب کے گر تو ملے تو ہم تجھ سے
    ایسے لپٹیں تری قبا ہو جائیں

    بندگی ہم نے چھوڑ دی ہے فراز
    کیا کریں لوگ جب خدا ہو جائیں
    [/align][/size]

  2. #2
    ناظم
    تاريخ شموليت
    Feb 2011
    پيغامات
    3,081
    شکریہ
    21
    91 پیغامات میں 134 اظہار تشکر

    RE: اس سے پہلے کہ بے وفا ہو جائیں

    واہ بہت خوب جناب ۔ شئیرنگ کاشکریہ۔

آپ کے اختيارات بسلسلہ ترسيل پيغامات

  • آپ نئے موضوعات پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ جوابات نہیں پوسٹ کر سکتے ہیں
  • آپ اٹیچمنٹ پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ اپنے پیغامات مدون نہیں کر سکتے ہیں
  •  
Cultural Forum | Study at Malaysian University