صفحہ 1 از 4 123 ... آخریآخری
نتائج کی نمائش 1 تا: 10 از: 32

موضوع: دکھی شاعری کی لڑی........

  1. #1
    رکنِ خاص
    تاريخ شموليت
    Nov 2011
    پيغامات
    527
    شکریہ
    31
    49 پیغامات میں 71 اظہار تشکر

    دکھی شاعری کی لڑی........

    [size=x-large][align=center] يہ قول کسي کا ہے کہ ميں کچھ نہيں کہتا
    وہ کچھ نہيں کہتا ہے کہ ميں کچھ نہیں کہتا

    سن سن کر ترے عشق ميں اغيار کے طعنے
    مير اہي کليجا ہے کہ ميں کچھ نہيں کہتا

    ان کا يہي سننا ہے کہ وہ کچھ نہيں سنتے
    ميرا يہي کہنا ہے کہ ميں کچھ نہيں کہتا

    خط ميں مجھے اول تو سنائي ہيں ہزاروں
    آخر ميں يہ لکھا ہے کہ ميں کچھ نہيں کہتا

    پھٹتا ہے جگر ديکھ کے قاصد کي مصيبت
    پوچھوں تو يہ کہتا ہے کہ ميں کچھ نہيں کہتا

    يہ خوب سمجھ ليجئے غمار وہي ہے
    جو آپ سے سے کہتا ہے کہ ميں کچھ نہيں کہتا

    تم کو يہي شاياں ہے کہ تم ديتے ہوئے وشنام
    مجھ کو يہي زيبا ہے کہ ميں کچھ نہيں کہتا

    مشتاق بہت ہيں مرے کہنے کے پر اے داغ
    يہ وقت ہي ايسا ہے کہ ميں کچھ نہيں کہتا

    [/align][/size]

  2. #2
    رکنِ خاص
    تاريخ شموليت
    Nov 2011
    پيغامات
    527
    شکریہ
    31
    49 پیغامات میں 71 اظہار تشکر

    RE: دکھی شاعری کی لڑی........

    [size=x-large][align=center]زخم تنہائي ميں خوشبو حنا کس کي تھي
    سايہ ديوار پر ميرا تھا صدا کس کي تھي

    اس کي رفتار سے لپٹي رہيں آنکھيں ميري
    اس نے مڑ کر بھي نا ديکھا وفا کس کي تھي

    آنسوں سے ہي بھر گيا دامن ميرا
    ہاتھ تو ميں نے اٹھائے تھے دعا کس کي تھي

    ميري آنکھوں کي زبان کوئي سمجھتا کيسے
    زندگي اتني دُکھي ميرے سوا کس کي تھي

    آگ سے دوستي اس کي تھي جلا گھر ميرا
    دے گيا کس کو سزا اور خطا کس کي تھي
    [/align][/size]

  3. #3
    رکنِ خاص
    تاريخ شموليت
    Nov 2011
    پيغامات
    527
    شکریہ
    31
    49 پیغامات میں 71 اظہار تشکر

    RE: دکھی شاعری کی لڑی........

    [size=x-large][align=center]آہٹ پے اس کي چونک سا جاتا ہوں
    نا چاہتے ہوئے بھي اس کو بھول جانا چاہتا ہوں

    نا جانے کيوں اس کي يادوں ميں گم ہو جاتا ہوں
    ميں اس کي يادوں سے بھي نکال جانا چاہتا ہوں

    ميں نے اس کي محبت کا کھايا ہے دھوکہ
    اب ميں محبت کے اس دھوکے سے نکال جانا چاہتا ہوں

    وہ جو چہرے پے ڈلے بيٹھے ہيں پردہ معصوميت کا
    اس کے چہرے سے وہ پردہ اٹھانا چاہتا ہوں

    حسن پرستي نے کيا ہے ہم کو برباد
    حسن پرستوں کو يہ بات سمجھانا چاہتا ہوں

    يہ آگ ہے اس سے مت کھيلو جل جائو گئے
    مگر ميں وہ پروانہ ہوں جو جل جانا چاہتا ہوں

    زندگي نے جس طرح جھنجھوڑا ہے ميري زندگي کو
    ميں اب اس زندگي سے نکال جانا چاہتا ہوں

    اور جب کبھي ميں ہوتا ہوں تنہا
    تو دل کھول کر رونا چاہتا ہوں

    پيار محبت کون کرتا ہے يہاں پر کسي کو
    ميں يہ پيغام عام کرنا چاہتا ہوں
    [/align][/size]

  4. #4
    رکنِ خاص
    تاريخ شموليت
    Nov 2011
    پيغامات
    527
    شکریہ
    31
    49 پیغامات میں 71 اظہار تشکر

    RE: دکھی شاعری کی لڑی........

    [size=x-large][align=center]تيرے پاس آنے کو جي چاہتا ہے
    نئے زخم کھانے کو جي چاہتا ہے

    ادھر آئے شايد وہ موج ترنم
    غزل گنگنانے کو جي چاہتا ہے

    زمانہ ميرا آزمايا ہوا ہے
    تجھے آزمانے کو جي چاہتا ہے

    وہي بات رہ رہ کے ياد آ رہي ہے
    جسے بھل جانے کو جي چاہتا ہے

    لبوں پر ميرے کھلتا ہے تبسم
    جب آنْسُو بہانے کو جي چاہتا ہے

    کئي مرتبہ دل پہ بجلي گري ہے
    مگر مسکرانے کو جي چاہتا ہے

    تکلف نا کر آج برق تجلي
    نشيمن جلانے کو جي چاہتا ہے

    رخ زندگي سے نقاب اُلٹ کر
    حقيقت دکھانے کو جي چاہتا ہے
    [/align][/size]

  5. #5
    رکنِ خاص
    تاريخ شموليت
    Nov 2011
    پيغامات
    527
    شکریہ
    31
    49 پیغامات میں 71 اظہار تشکر

    RE: دکھی شاعری کی لڑی........

    [size=x-large][align=center]مٹ گيا ہوں مجھ کو مٹا رہنے دو
    ميرے جذبات کے شعلوں کو بجھا رہنے دو

    درد سہنے کي ہو گئي ہے اب عادت مجھ کو
    ميرے رستے ہوئے زخموں کو ہرا رہنے دو

    اب تو تعبير کي حسرت ہي نہيں ہے مجھ کو
    ميري آنکھوں ميں ميرا خواب چھپا رہنے دو

    مسکراہٹ پہ ميرا حق ہي نہيں ہے يارو
    ميرے ہونٹوں سے تبسم کو خفا رہنے دو

    دل جو ٹوٹا ہے تو آنکھيں نا چھلک جائيں
    آج آنکھوں کو ان اشکوں سے بھرا رہنے دو
    [/align][/size]

  6. #6
    رکنِ خاص
    تاريخ شموليت
    Nov 2011
    پيغامات
    527
    شکریہ
    31
    49 پیغامات میں 71 اظہار تشکر

    RE: دکھی شاعری کی لڑی........

    [size=x-large][align=center]جب تنہائي رقص کرتي ہے
    جب وقت تھم سا جاتا ہے
    جب وحشت بے لباس ہونے لگتي ہے
    جب نغمگي بھي شور بنے لگتي ہے
    جب انسيت بھي اذيت بن جاتي ہے
    جب خواب ، عذاب لگنے لگتے ہے
    جب احساس کے سمندر کا
    ہر موتي ٹوٹ ٹوٹ جاتا ہے
    جب موت ، زدگي بن جاتي ہے
    اور زندگي ، موت بن جاتي ہے
    تب ايسے ميں جاناں
    تيري ياد اور بھي ستاتي ہے
    [/align][/size]

  7. #7
    رکنِ خاص
    تاريخ شموليت
    Nov 2011
    پيغامات
    527
    شکریہ
    31
    49 پیغامات میں 71 اظہار تشکر

    RE: دکھی شاعری کی لڑی........

    [size=x-large][align=center]کب ميں نے يہ کہا
    تيرے بن ميں جي لوں گا
    ہاں کہا تھا تو بس اتنا
    يہ زہر بھي پي لوں گا
    اور جاناں
    تم تو جانتي ہو نا!
    جو جينے کا زہر پيا کرتے ہيں
    وہ بھلا کب جيا کرتے ہيں
    [/align][/size]



  8. #8
    رکنِ خاص
    تاريخ شموليت
    Nov 2011
    پيغامات
    527
    شکریہ
    31
    49 پیغامات میں 71 اظہار تشکر

    RE: دکھی شاعری کی لڑی........

    [size=x-large][align=center]وہ جانتي تھي کہ وفا کا اَجْر نہيں ہوتا
    محبتوں ميں صبر کا ثمر نہيں ہوتا
    وہ جانتي تھي
    محبت دکھوں کا صحرا ہے
    جہاں سراب سي خوشياں ہيں
    اور عذاب سے غم
    جہاں ہے پياس جدائي کي بے ’ تحاشہ مگر
    ملن کي بارشيں ہوتي ہيں جس ديار ميں کم
    وہ جانتي تھي
    محبت خراج مانگتي ہے
    وہ جس کو دل کا لہو دے کہ جگمگايا ہو
    اندھيري راہ کہ ليے وہ چراغ مانگتي ہے
    وہ جانتي تھي
    محبت وہ رہ ’ گزر ہے جہاں
    بچھے ہيں کانچ جدائي کہ بے ’ شمار مگر
    برہنہ پا ہي انہيں پار کرنا پڑتا ہے
    غموں کي دھوپ ميں اب سائبان کوئي نا ہو
    کسي ياد کي چادر کو تان کر خود پر
    تمام آہيں دبا کر گزارنا پڑتا ہے
    وہ جانتي تھي کہ وفا کا اَجْر نہيں ہوتا
    محبت ميں صبر کا ثمر نہيں ہوتا
    ہج ’ آر کي راہ ميں ہوتي ہے بے ’ تحاشہ گھٹن
    وہاں کبھي بھي ہوا کا گزر نہيں ہوتا
    وہ جانتي تھي پھر بھي روگ لے بيٹھي
    کسي کہ پيار ميں نا جانے کيوں جوگ لے بيٹھي
    [/align][/size]

  9. #9
    رکنِ خاص
    تاريخ شموليت
    Nov 2011
    پيغامات
    527
    شکریہ
    31
    49 پیغامات میں 71 اظہار تشکر

    RE: دکھی شاعری کی لڑی........

    [size=x-large][align=center]تم مجھ کو گڑيا کہتے ہو
    ٹھيک ہي کہتے ہو
    کھيلنے والے سب ہاتھوں کو
    ميں گڑيا ہي لگتي ہوں
    جو پہنا دو ، مجھ پہ سجے گا
    ميرا کوئي رنگ نہيں
    جس بچے کے ہاتھ تھاما دو
    ميري کسي سے جنگ نہيں
    سوچتي جاگتي آنکھيں ميري
    جب چاہے بينائي لے لو
    کوک بھرو اور باتيں سنو
    يا ميري گويائي لے لو
    مانگ بھرو ، سندور لگائو
    پيار کرو ، آنکھوں ميں بساؤ
    اور پھر جب دل بھر جائے
    دل سے اٹھا کے تک پہ رکھ دو
    تم مجھ کو گڑيا کہتے ہو
    ٹھيک ہي کہتے ہو
    [/align][/size]

  10. #10
    رکنِ خاص
    تاريخ شموليت
    Nov 2011
    پيغامات
    527
    شکریہ
    31
    49 پیغامات میں 71 اظہار تشکر

    RE: دکھی شاعری کی لڑی........

    [size=x-large][align=center]سوچ کے وسيع سمندر ميں

    احساس کي کشتي ميں بيٹھ کر

    مجھے اس پار جانا ہے

    جہاں ميري جنت ہے

    ليکن

    طغياني سے ڈر لگتا ہے

    اس طغياني سے جس ميں

    ميري کشتي کہيں گم ہو جاتي ہے

    اور شايد ميں بھي
    [/align][/size]

صفحہ 1 از 4 123 ... آخریآخری

متشابہہ موضوعات

  1. جوابات: 4
    آخری پيغام: 11-24-2012, 07:31 AM
  2. کبھی ساحل تو کبھی سیل ِ خطر ٹھہرے گی
    By سیدہ سارا غزل in forum میری شاعری
    جوابات: 4
    آخری پيغام: 05-03-2012, 03:25 PM
  3. دوست بھی ملتے ہیں محفل بھی جمی رہتی ہے
    By ایم-ایم in forum احمد فراز
    جوابات: 1
    آخری پيغام: 04-16-2012, 10:31 AM
  4. دوست بھی دشمن نہ تھے دل بھی عدو میرا نہ تھا
    By گلاب خان in forum متفرق شاعری
    جوابات: 1
    آخری پيغام: 04-03-2012, 01:14 PM
  5. جوابات: 1
    آخری پيغام: 04-03-2012, 10:01 AM

آپ کے اختيارات بسلسلہ ترسيل پيغامات

  • آپ نئے موضوعات پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ جوابات نہیں پوسٹ کر سکتے ہیں
  • آپ اٹیچمنٹ پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ اپنے پیغامات مدون نہیں کر سکتے ہیں
  •  
Cultural Forum | Study at Malaysian University