[align=center][/align]

بھارت کے شہر ناگپور میں رہنے والی دو فٹ کی جیوتی امگے کو گنز بک آف ورلڈ ریکارڈ نے دنیا کی سب سے چھوٹی خاتون قرار دیا ہے۔
جیوتی کا قد چوبیس اعشاریہ سات انچ ہے اور وہ اب تک دنیا کی سب سے چھوٹی خاتون مانی جانے والی امریکی شہری برجِٹ جارڈن سے بھی سات سینٹی میٹر چھوٹی ہیں۔
جیوتی بونے پن کی ایک قسم کا شکار ہیں اور اس بات کی امید نہیں ہے کہ وہ اس سے زیادہ طویل ہوں گی۔
واضح رہے کہ سنہ دو ہزار نو میں جیوتی امگے کا قد 61.95 سینٹی میٹر تھا اور اس وقت انہیں دنیا کی سب سے چھوٹی نوجوان لڑکی کا خطاب دیا گیا تھا۔
اب تک کی سب سے چھوٹی خاتون ہالینڈ کی پالین مسٹرس (1876-1895) تھیں جن کا قد 61 سینٹی میٹر ناپا گیا تھا۔
جیوتی امگے کو ناگپور میں ان کے والدین کی موجودگی میں گنیز بک آف ورلڈ ریکارڈ کا سرٹیفیکیٹ دیا گیا۔
اس موقع پر جیوتی کا کہنا تھا کہ ’اگر میں اتنی چھوٹی نہیں ہوتی تو مجھے جاپان ، یورپ سمیت کئی دوسرے ممالک میں گھومنے کا موقع نہیں ملتا۔‘
گنیز بک آف ورلڈ ریکارڈ کے اہلکار کے مطابق ’ہماری پالیسیوں کے مطابق جیوتی امگے کا قد چوبیس گھنٹوں میں ڈاکٹروں کی ایک ٹیم نے تین بار ناپا۔‘
جیوتی امگے چار سال کی عمر سے اسکول جا رہی ہیں اور انہوں نے حال ہی میں ہائی سکول کا امتحان پاس کیا ہے۔
جیوتی امگے یونیورسٹی کی ڈگری بھی لینا چاہتی ہیں۔