نتائج کی نمائش 1 تا: 10 از: 10

موضوع: ماں ۔ تیری بہت یاد آتی ہے

  1. #1
    معاون
    تاريخ شموليت
    Jul 2012
    پيغامات
    83
    شکریہ
    2
    30 پیغامات میں 39 اظہار تشکر

    ماں ۔ تیری بہت یاد آتی ہے

    [align=center][size=xx-large]ماں تیری بہت یاد آئی اے (صباملک)[/size]

    ربا تو ماں کیوں بنائی اے
    ماں بنا کے جدائی کیوں پائی اے
    بابل دا کار چھڈ کے جدوں میں پیا گھر آئی
    ماں مینوں تیری بہت یاد آئی
    لوکاں دے حج عمرہ خانہ کعبہ ویکھیاں ہوئے
    میرا حج عمرہ ماں تینوں ویکھیاں ہوئے
    لوکاں دی جنت اسمان اوتے
    میری جنت تیرے پیراں تھلے
    تری دعا دے نال بسطامی، رحمتہ اللہ علیہ ہوئے
    تری شان وچ رب دی قدرت پائی اے
    اے تیری تدبیر ساڈی تقدیر، آزمائش وی ساڈی
    ایس گل دی سمجھ مینوں بڑی دیر نال آئی اے
    اج جدائی دی واری میری اے، کل کسی ہور دی اے
    ربا میں ہن نہیں کیہندی
    تو ماں کیوں بنائی اے
    ماں بنا کے جدائی کیوں پائی اے[/align]

  2. #2
    رکنِ خاص بےلگام کا اوتار
    تاريخ شموليت
    May 2012
    پيغامات
    11,245
    شکریہ
    2
    14 پیغامات میں 23 اظہار تشکر

    RE: نظم

    بہت اچھے جناب

  3. #3
    ناظم سیما کا اوتار
    تاريخ شموليت
    May 2011
    پيغامات
    2,514
    شکریہ
    409
    125 پیغامات میں 159 اظہار تشکر

    RE: نظم

    بہت خوب شکریہ بھائی

  4. #4
    رکنِ خاص نگار کا اوتار
    تاريخ شموليت
    Dec 2011
    پيغامات
    5,360
    شکریہ
    663
    357 پیغامات میں 424 اظہار تشکر

    RE: نظم

    لوکاں دے حج عمرہ خانہ کعبہ ویکھیاں ہوئے
    میرا حج عمرہ ماں تینوں ویکھیاں ہوئے

    زبردست ۔ بہت خوب جناب

  5. #5
    منتظم اعلی بےباک کا اوتار
    تاريخ شموليت
    Nov 2010
    پيغامات
    6,160
    شکریہ
    2,120
    1,233 پیغامات میں 1,605 اظہار تشکر

    RE: ماں ۔ تیری بہت یاد آتی ہے

    [align=center][/align]

    بہت خوب روشن خیال جی ، زبردست نظم پیش کی آپ نے ،
    سچے دل کی آواز ، شکریہ

  6. #6
    منتظم اعلی بےباک کا اوتار
    تاريخ شموليت
    Nov 2010
    پيغامات
    6,160
    شکریہ
    2,120
    1,233 پیغامات میں 1,605 اظہار تشکر

    RE: ماں ۔ تیری بہت یاد آتی ہے

    [align=center]میرے بچو،گر تم مجھ کو بڑھاپے کے حال میں دیکھو
    اُکھڑی اُکھڑی چال میں دیکھو
    مشکل ماہ و سال میں دیکھو
    صبر کا دامن تھامے رکھنا
    کڑوا ہے یہ گھونٹ پہ چکھنا
    ’’اُف ‘‘ نہ کہنا،غصے کا اظہار نہ کرنا
    میرے دل پر وار نہ کرنا
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ۔۔۔۔۔
    ہاتھ مرے گر کمزوری سے کا نپ اٹھیں
    اور کھانا،مجھ پر گر جائے تو
    مجھ کو نفرت سے مت تکنا،لہجے کو بیزار نہ کرنا
    بھول نہ جانا ان ہاتھوں سے تم نے کھانا کھانا سیکھا
    جب تم کھانا میرے کپڑوں اور ہاتھوں پر مل دیتے تھے
    میں تمہارا بوسہ لے کر ہنس دیتی تھی
    کپڑوں کی تبدیلی میں گر دیر لگا دوں یا تھک جاؤں
    مجھ کو سُست اور کاہل کہہ کر ، اور مجھے بیمار نہ کرنا
    بھول نہ جانا کتنے شوق سے تم کو رنگ برنگے کپڑے پہناتی تھی
    اک اک دن میں دس دس بار بدلواتی تھی
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

    میرے یہ کمزور قدم گر جلدی جلدی اُٹھ نہ پائیں
    میرا ہاتھ پکڑ لینا تم ،تیز اپنی رفتار نہ کرنا
    بھول نہ جانا،میری انگلی تھام کے تم نے پاؤں پاؤں چلنا سیکھا
    میری باہوں کے حلقے میں گرنا اور سنبھلنا سیکھا
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ۔۔۔۔۔
    جب میں باتیں کرتے کرتے،رُک جاؤں ،خود کو دھراوں
    ٹوٹا ربط پکڑ نہ پاؤں،یادِ ماضی میں کھو جاؤں
    آسانی سے سمجھ نہ پاؤں،مجھ کو نرمی سے سمجھانا
    مجھ سے مت بے کار اُلجھنا،مجھے سمجھنا
    اکتاکر، گھبراکر مجھ کو ڈانٹ نہ دینا
    دل کے کانچ کو پتھر مار کے کرچی کرچی بانٹ نہ دینا
    بھول نہ جانا جب تم ننھے منے سے تھے
    ایک کہانی سو سو بار سنا کرتے تھے
    اور میں کتنی چاہت سے ہر بار سنا یاکرتی تھی
    جو کچھ دھرانے کو کہتے،میں دھرایا کرتی تھی
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ۔۔۔۔۔

    اگر نہانے میں مجھ سے سُستی ہو جائے
    مجھ کو شرمندہ مت کرنا،یہ نہ کہنا آپ سے کتنی بُو آتی ہے
    بھول نہ جانا جب تم ننھے منے سے تھے اور نہانے سے چڑتے تھے
    تم کو نہلانے کی خاطر
    چڑیا گھر لے جانے میں تم سے وعدہ کرتی تھی
    کیسے کیسے حیلوں سے تم کو آمادہ کرتی تھی
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    گر میں جلدی سمجھ نہ پاؤں،وقت سے کچھ پیچھے رہ جاؤں
    مجھ پر حیرت سے مت ہنسنا،اور کوئی فقرہ نہ کسنا
    مجھ کو کچھ مہلت دے دینا شائد میں کچھ سیکھ سکوں
    بھول نہ جانا
    میں نے برسوں محنت کر کے تم کو کیا کیا سکھلایا تھا
    کھانا پینا،چلنا پھرنا،ملنا جلنا،لکھنا پڑھنا
    اور آنکھوں میں آنکھیں ڈال کے اس دنیا کی ،آگے بڑھنا
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    میری کھانسی سُن کر گر تم سوتے سوتے جاگ اٹھوتو
    مجھ کو تم جھڑکی نہ دینا
    یہ نہ کہنا،جانے دن بھر کیا کیا کھاتی رہتی ہیں
    اور راتوں کو کُھوں کھوں کر کے شور مچاتی رہتی ہیں
    بھول نہ جانامیں نے کتنی لمبی راتیں
    تم کو اپنی گود میں لے کر ٹہل ٹہل کر کاٹی ہیں
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    گر میں کھانا نہ کھاؤں تو تم مجھ کو مجبور نہ کرنا

    جس شے کو جی چاہے میرا اس کو مجھ سے دور نہ کرنا
    پرہیزوں کی آڑ میں ہر پل میرا دل رنجور نہ کرنا
    کس کا فرض ہے مجھ کو رکھنا
    اس بارے میں اک دوجے سے بحث نہ کرنا
    آپس میں بے کار نہ لڑنا
    جس کو کچھ مجبوری ہو اس بھائی پر الزام نہ دھرنا
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    گر میں اک دن کہہ دوں عرشی ، اب جینے کی چاہ نہیں ہے
    یونہی بوجھ بنی بیٹھی ہوں ،کوئی بھی ہمراہ نہیں ہے
    تم مجھ پر ناراض نہ ہونا
    جیون کا یہ راز سمجھنا
    برسوں جیتے جیتے آخر ایسے دن بھی آ جاتے ہیں
    جب جیون کی روح تو رخصت ہو جاتی ہے
    سانس کی ڈوری رہ جاتی ہے
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    شائد کل تم جان سکو گے ،اس ماں کو پہچان سکو گے
    گر چہ جیون کی اس دوڑ میں ،میں نے سب کچھ ہار دیا ہے
    لیکن ،میرے دامن میں جو کچھ تھا تم پر وار دیا ہے
    تم کو سچا پیار دیا ہے
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    جب میں مر جاؤں تو مجھ کو
    میرے پیارے رب کی جانب چپکے سے سرکا دینا
    ا ور ،دعا کی خاطر ہاتھ اُٹھا دینا
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

    میرے پیارے رب سے کہنا،رحم ہماری ماں پر کر دے
    جیسے اس نے بچپن میں ہم کمزوروں پر رحم کیا تھا
    بھول نہ جانا،میرے بچو
    جب تک مجھ میں جان تھی باقی
    خون رگوں میں دوڑ رہا تھا
    دل سینے میں دھڑک رہا تھا
    خیر تمہاری مانگی میں نے
    میرا ہر اک سانس دعا تھا[/align]

  7. اس مفید مراسلے کے لئے درج ذیل رُکن نے بےباک کا شکریہ ادا کیا:

    شاہنواز (07-05-2014)

  8. #7
    معاون
    تاريخ شموليت
    Jul 2012
    پيغامات
    83
    شکریہ
    2
    30 پیغامات میں 39 اظہار تشکر

    RE: ماں ۔ تیری بہت یاد آتی ہے


  9. #8
    رکنِ خاص
    تاريخ شموليت
    Jul 2012
    پيغامات
    117
    شکریہ
    0
    1 پیغام میں 1 اظہار تشکر

    RE: ماں ۔ تیری بہت یاد آتی ہے

    بہت خوب بابا جی زبردست جزاک اللہ

  10. #9
    ناظم اذان کا اوتار
    تاريخ شموليت
    Jan 2011
    پيغامات
    1,898
    شکریہ
    138
    108 پیغامات میں 161 اظہار تشکر

    RE: ماں ۔ تیری بہت یاد آتی ہے

    [align=center][/align]

  11. #10
    رکنِ خاص نگار کا اوتار
    تاريخ شموليت
    Dec 2011
    پيغامات
    5,360
    شکریہ
    663
    357 پیغامات میں 424 اظہار تشکر

    جواب: ماں ۔ تیری بہت یاد آتی ہے

    ماں تیری بیت یاد آ رہی

    بہترین شیئرنگ کرنے پہ آپ سب کا بہت بہت شکریہ

  12. اس مفید مراسلے کے لئے درج ذیل رُکن نے نگار کا شکریہ ادا کیا:

    شاہنواز (07-05-2014)

متشابہہ موضوعات

  1. کلام کرتی نہیں بولتی بھی جاتی ہے
    By ایم-ایم in forum امجد اسلام امجد
    جوابات: 2
    آخری پيغام: 07-29-2012, 12:01 PM
  2. میں کہتا ہوں مجھے تم ہنستی گاتی اچھی لگتی ہو
    By ایم-ایم in forum فرحت عباس شاہ
    جوابات: 2
    آخری پيغام: 04-16-2012, 09:31 AM
  3. میں تو لفظ لفظ تیری تیری ذات ہوں
    By عرفان in forum متفرق شاعری
    جوابات: 2
    آخری پيغام: 04-03-2012, 01:03 PM
  4. یوں دل میں تیری یاد اتر آتی ہے جیسے
    By تانیہ in forum متفرق شاعری
    جوابات: 1
    آخری پيغام: 04-03-2012, 10:01 AM
  5. نا قابل یقین طلسماتی لباس کی تیاری میں پیشرفت
    By گلاب خان in forum جدید دنیا اور سائنس
    جوابات: 1
    آخری پيغام: 12-09-2010, 09:42 PM

آپ کے اختيارات بسلسلہ ترسيل پيغامات

  • آپ نئے موضوعات پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ جوابات نہیں پوسٹ کر سکتے ہیں
  • آپ اٹیچمنٹ پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ اپنے پیغامات مدون نہیں کر سکتے ہیں
  •  
Cultural Forum | Study at Malaysian University