نتائج کی نمائش 1 تا: 3 از: 3

موضوع: چاہت میں ہم نے طور پرانے بدل دیئے

  1. #1
    ناظم خاص تانیہ کا اوتار
    تاريخ شموليت
    Nov 2010
    مقام
    گجرات
    پيغامات
    7,874
    شکریہ
    949
    881 پیغامات میں 1,108 اظہار تشکر

    چاہت میں ہم نے طور پرانے بدل دیئے

    چاہت میں ہم نے طور پرانے بدل دیئے
    جذبہ ہر ایک سنبھال کے خانے بدل دیئے
    بےفائدہ ہے لوٹ کے آنا ہواؤں کا
    ہم نے سبھی پرانے ٹھکانے بدل دیئے
    سوچا اسے تو ہم نے نہ ملنے کی ٹھان لی
    دیکھا اسے تو سارے بہانے بدل دیئے
    روکے کہاں رکے ہیں محبت کے قافلے
    بس یوں ہوا کہ دل نے زمانے بدل دیئے
    دیکھا تو اپنا آپ تھا نوک شکست پر
    یوں وقت نے ہمارے نشانے بدل دیئے

  2. #2
    رکنِ خاص نگار کا اوتار
    تاريخ شموليت
    Dec 2011
    پيغامات
    5,360
    شکریہ
    663
    357 پیغامات میں 424 اظہار تشکر

    RE: چاہت میں ہم نے طور پرانے بدل دیئے

    [size=xx-large][align=center]روکے کہاں رکے ہیں محبت کے قافلے
    بس یوں ہوا کہ دل نے زمانے بدل دیئے[/align]
    [/size]

    زبردست


  3. #3
    ناظم
    تاريخ شموليت
    Feb 2011
    پيغامات
    3,081
    شکریہ
    21
    91 پیغامات میں 134 اظہار تشکر

    RE: چاہت میں ہم نے طور پرانے بدل دیئے

    روکے کہاں رکے ہیں محبت کے قافلے
    بس یوں ہوا کہ دل نے زمانے بدل دی

    واہ بہت خوب۔ شکریہ

آپ کے اختيارات بسلسلہ ترسيل پيغامات

  • آپ نئے موضوعات پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ جوابات نہیں پوسٹ کر سکتے ہیں
  • آپ اٹیچمنٹ پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ اپنے پیغامات مدون نہیں کر سکتے ہیں
  •  
Cultural Forum | Study at Malaysian University