نتائج کی نمائش 1 تا: 3 از: 3

موضوع: چھینکنے کاانداز شخصیت کے چھپے راز ظا ہر کر سکتا ہے

  1. #1
    ناظم خاص تانیہ کا اوتار
    تاريخ شموليت
    Nov 2010
    مقام
    گجرات
    پيغامات
    7,867
    شکریہ
    949
    880 پیغامات میں 1,107 اظہار تشکر

    چھینکنے کاانداز شخصیت کے چھپے راز ظا ہر کر سکتا ہے


    دھماکے دار اور بلند آواز چھینکنے والا شخص ملنسار اور دوستانہ رویہ رکھنے والا ہوتا ہے، یہ بات ایک نئی امریکی تحقیق میں سامنے آئی ہے کہ چھینکنے کے مختلف انداز آپکی شخصیت کے چھپے راز ظاہر کرتے ہیں۔تحقیق میں مزیدبتایا گیا ہے کہ صاف گو اوردوستانہ رویہ رکھنے والے لوگ کھل کر بلند آواز میں چھینکتے ہیں جبکہ شرمیلے افرادسانسوں کیساتھ اسے روکنے کی کوشش کرتے ہیں۔تحقیق کار نے اپنی رپورٹ میں واضح کیا کہ انسانی چھینک بھی قہقہوں اور ہنسی کی طرح ہوتی ہے، کچھ زوردار آواز میں ہنسنے اور قہقہے لگانے کے عادی ہوتے ہیں توکچھ دبی دبی ہنسی یا مسکراہٹ پر ہی اکتفا کر لیتے ہیں۔طبی و سائنسی ماہرین کا ماننا ہے کہ چھینکناطبی فوائد کیساتھ ساتھ ایک نفسیاتی علامت ہے جو ہماری چھپی شخصیت کی عکاسی کرتی ہے۔



  2. اس مفید مراسلے کے لئے درج ذیل رُکن نے تانیہ کا شکریہ ادا کیا:


  3. #2
    رکنِ خاص
    تاريخ شموليت
    Apr 2011
    پيغامات
    291
    شکریہ
    18
    35 پیغامات میں 52 اظہار تشکر

    جواب: چھینکنے کاانداز شخصیت کے چھپے راز ظا ہر کر سکتا ہے

    چھنک کا شمار شفائی امراض میں ہوتا ہے اسی لئے چھنیک آنے پر نبی کریم ص نے الحمدللہ پڑھنے کا فرمایا ہے۔
    مزید اچھی معلومات شئیر کرنے کا شکریہ ۔
    لائی حیات آئے قضا لے چلی چلے
    اپنی خوشی نہ آئے نہ اپنی خوشی چلے

  4. اس مفید مراسلے کے لئے درج ذیل رُکن نے محمدمعروف کا شکریہ ادا کیا:


  5. #3
    معاون
    تاريخ شموليت
    Mar 2013
    پيغامات
    67
    شکریہ
    33
    24 پیغامات میں 36 اظہار تشکر

    جواب: چھینکنے کاانداز شخصیت کے چھپے راز ظا ہر کر سکتا ہے

    بہت دلچسپ معلومات شیئر کی ہیں تانیہ جی
    شکریہ
    تیرے نین ہیں میرا آشیاں
    میرا نام نورِ عیون ہے

آپ کے اختيارات بسلسلہ ترسيل پيغامات

  • آپ نئے موضوعات پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ جوابات نہیں پوسٹ کر سکتے ہیں
  • آپ اٹیچمنٹ پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ اپنے پیغامات مدون نہیں کر سکتے ہیں
  •  
Cultural Forum | Study at Malaysian University