نتائج کی نمائش 1 تا: 2 از: 2

موضوع: اے میری سوچ کی محور۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

Hybrid View

  1. #1
    منتظم اعلی
    تاريخ شموليت
    Feb 2013
    پيغامات
    234
    شکریہ
    291
    119 پیغامات میں 184 اظہار تشکر

    اے میری سوچ کی محور۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔


    اے میری سوچ کی محور، تم اپنے سارے دکھ رو لو
    سمجھ لو مجھ کو چارہ گر، تم اپنے سارے دکھ رو لو


    اِسے تم مشورہ سمجھو یا میرا تجربہ سمجھو!
    یہ دل ہوجائے گا پتھر، تم اپنے سارے دکھ رو لو


    مجھے خاموش اشکوں سے بہت ہی خوف آتا ہے
    نہ رکھو آنکھ یوں بنجر، تم اپنے سارے دکھ رو لو


    تمہیں اس کی خبر ہوگی، یہ اک دن خُوں رلائے گا
    بُھلا کر خواب کا پیکر، تم اپنے سارے دکھ رو لو


    مری جاں! یہ نہیں سوچو، سمیٹوں گا اِنہیں کیسے
    مرے شانے پہ سَر رکھ کر، تم اپنے سارے دکھ رو لو


    سُنا ہے اُس کی آنکھوں میں تمہارے زخم کھلتے ہیں
    تمہیں کہتا ہے جو اکثر، تم اپنے سارے دکھ رو لو


    سُنو! نامہرباں آنکھیں تمہیں ایسے ہی دیکھیں گی
    نہیں بدلے گا یہ منظر، تم اپنے سارے دکھ رو لو


    اگر یوں اشک رونے سے انَا پر چوٹ پڑتی ہے
    ہنسی کی اوڑھ کر چادر، تم اپنے سارے دکھ رو لو


    بتا دینا یہ میرا دل تمہارے غم سے بوجھل ہے
    اُسے کہنا یہ نامہ بَر، تم اپنے سارے دکھ رو لو
    نحن عشاق الحسین ع
    اگر آپ حق پر کھڑے ہیں توآپ کو چلا کربات کرنے کی ضرورت نہیں
    اور اگر آپ حق پر نہیں ہیں تو چلا کربات کرنے کا کوئی فائدہ نہیں


  2. #2
    ناظم خاص تانیہ کا اوتار
    تاريخ شموليت
    Nov 2010
    مقام
    گجرات
    پيغامات
    7,862
    شکریہ
    949
    878 پیغامات میں 1,104 اظہار تشکر

    جواب: اے میری سوچ کی محور۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

    واہ واہ ۔۔۔۔۔۔بہت خوب
    زبردست



آپ کے اختيارات بسلسلہ ترسيل پيغامات

  • آپ نئے موضوعات پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ جوابات نہیں پوسٹ کر سکتے ہیں
  • آپ اٹیچمنٹ پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ اپنے پیغامات مدون نہیں کر سکتے ہیں
  •  
Cultural Forum | Study at Malaysian University