نتائج کی نمائش 1 تا: 1 از: 1

موضوع: غیر مسلمو ں کی نظر میں

  1. #1
    ناظم
    تاريخ شموليت
    Nov 2010
    پيغامات
    1,307
    شکریہ
    0
    50 پیغامات میں 68 اظہار تشکر

    غیر مسلمو ں کی نظر میں

    قرآن مجید میں اللہ تبارک و تعالیٰ نے اپنے پیارے نبی کی اطاعت کو اپنی اطاعت قرار دیتے ہوئے آپ کو تمام جہانوں کیلئے رحمت بنا کر بھیجنے کی خوشخبری دی ہے۔
    یہاں چند غیر مسلم شخصیات کے تاثرات جو نبی پاک کے بارے میں انہوں نے بیان کیے درج ذیل ہیں۔
    (2) چین کے بانی ماﺅزے تنگ کہتے ہیں
    ” مسلمانو! تم سیرت محمد اور قرآن کا صرف مطالعہ کرتے ہو لیکن ہم اس پر عمل کرتے ہیں ہماری ترقی و کامرانی اور خوشحالی کی بنیاد یہی تو ہے “ جارج برناڈ شاہ بنی پاک کے بارے میں رائے دیتے ہوئے کہتے ہیں کہ ´! ” آنے والے 100 سال میں ہماری دنیا کا مذہب اسلام ہوگا مگر یہ اسلام وہ ہوگا جو محمد کے زمانے میں دلوں، دماغوں اور روحوں میں جاگزیں تھا میری رائے میں آپ پوری بنی نوع انسان کے محافظ تھے “۔
    انقلاب فرانس کے بانی اور حکمران نپولین بونا پارٹ محمد کے بارے میں کہتے ہیں کہ” وہ دن دور نہیںجب میں دنیا کے تمام تعلیم یافتہ دانا اور مہذب انسانوں کوقرآن کی صداقتوں اور محمد کی تعلیمات پر دوبارہ جمع کرونگا ۔ قرآن اور سیرت محمد ہی وہ واحد صداقت ہے جودنیا کو حقیقی مسرت سے ہمکنار کرسکتی ہے “۔
    مہاتما گاندھی، محمد کے بارے میں اپنے خیالات یوں بیان کرتے ہیں کہ ” سیرت النبی کے مطالعے سے میرے اس عقیدے میں مزید پختگی اور استحکام آگیا کہ اسلام نے تلوار کے بل پر رسوخ حاصل نہیں کیا بلکہ رسول کی انتہائی بے نفی، عمود و مواثیق کا انتہائی احترام، اپنے رفقاءاور پیروکاروں کے ساتھ گہری وابستگی ، جرا¿ت، بے خوفی اللہ تعالیٰ پر کامل بھروسہ اور مقصد و نصب العین پر کامل بھروسہ و حقیقی اسباب تھے جوہر رکاوٹ اور مشکل کو اپنی ہمہ گیری میں بہا کر لے گئے “۔
    عظیم ہندو مفکر اور شاعر فراق گور کھپوری آپ کے بارے میں لکھتے ہیں کہ ”میرا اٹل ایمان ہے کہ پیغمبر اسلام حضرت محمد کی ہستی بنی نوع انسان کیلئے ایک رحمت تھی۔ آپ نے تاریخ و تمدن‘ تہذیب و اخلاق کو وہ کچھ دیا جو شاید ہی کوئی بڑی ہستی دے سکتی ہو“۔
    مشہور انگریز ناقد اور مورخ کار لائل کہتا ہے کہ !
    ”محمد ایک بڑی زبردست طاقت کا نام ہے جسے تسلیم کئے بغیر چارہ نہیں “ دورِ جدید کے عظیم فلاسفر برٹرینڈر سل نبی پاک کی شان ان الفاظ میں بیان کرتے ہوئے کہتے ہیں کہ!
    عیسائی اور یہودیت اپنی تمام سرگرمیاں دکھا چکیں لیکن بنی نوع انسان امن و آشتی اور روح و دماغ کی عافیت سے محروم رہا‘ اب اسلام کی باری ہے جو یقیناً اقوام عالم کو حقیقی اخوت و تحفظ‘ پاسداری اور خوشحالی اخلاص سے سرفراز کرے گا“
    مندرجہ بالا چند بیانات اور تاثرات اُن غیر مسلم شخصیتوں کے بیان کئے گئے ہیں ورنہ تاریخ عالم آپ کی سچائیوں‘ عظمتوں اور بنی نوع انسان کیلئے رحمتوں کے خزانوں سے بھری پڑی ہے جسے جو چاہے سمیٹ لے اس میں کوئی قید نہیں۔

    [size=x-large] ناراضگی ظاہر کرنا دل میں برائی رکھنے سے بہتر ہے[/size]

  2. اس مفید مراسلے کے لئے درج ذیل رُکن نے گلاب خان کا شکریہ ادا کیا:

    بےباک (01-17-2014)

آپ کے اختيارات بسلسلہ ترسيل پيغامات

  • آپ نئے موضوعات پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ جوابات نہیں پوسٹ کر سکتے ہیں
  • آپ اٹیچمنٹ پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ اپنے پیغامات مدون نہیں کر سکتے ہیں
  •  
Cultural Forum | Study at Malaysian University