نتائج کی نمائش 1 تا: 2 از: 2

موضوع: جلا وطنی

  1. #1
    رکنِ خاص
    تاريخ شموليت
    Jun 2014
    پيغامات
    5,512
    شکریہ
    654
    715 پیغامات میں 742 اظہار تشکر

    جلا وطنی



    جاتے سال کی آخری شب ہے
    چہل چراغ کی روشنیوں سے
    بادۂ گلگوں کی رنگت سے
    جگر جگر کرتے پیمانے
    جیسے جاتے سال کی گھڑیاں
    جیسے دیے سے ہوا کی چاہت
    جیسے دید کی آخری ساعت
    جیسے بھولتی یاد کی کڑیاں
    خواب اگر جھوٹے ہوتے ہیں
    کب سچی تعبیریں ہوں گی
    ہاتھوں میں گلدستے لیکن
    پاؤں میں زنجیریں ہوں گی
    آؤ آخری رات ہے سال کی
    دل کہتا ہے بزمِ وصال کی
    سب شمعیں، ساری خوشبوئیں
    تن من میں رس بس جانے دو
    یہ جو لہو سے اَبر اٹھا ہے
    آج کی رات برس جانے دو
    لیکن باہر جھانک کے دیکھو
    جیسے آج کی رات ستارے
    چُپ بیٹھے آکاش کنارے
    جاگ رہے ہیں، سوچ رہے ہیں
    جاتے سال کی آخری شب ہے
    کل کا سورج کیسے ہو گا
    ٭٭٭

  2. #2
    منتظم اعلی بےباک کا اوتار
    تاريخ شموليت
    Nov 2010
    پيغامات
    6,205
    شکریہ
    2,192
    1,260 پیغامات میں 1,635 اظہار تشکر

    جواب: جلا وطنی

    احمد فراز کی شاعری واقعی دل کو چھو لینے والی ہے ،
    آپ کے ذوق کی داد دینی پڑتی ہے ،
    شاندار
    ہم کو کمال حاصل ہے غم سے خوشیاں نچوڑ لیتے ہیں ۔
    اردو منظر ٰ معیاری بات چیت

  3. اس مفید مراسلے کے لئے درج ذیل رُکن نے بےباک کا شکریہ ادا کیا:

    حبیب صادق (06-11-2014)

آپ کے اختيارات بسلسلہ ترسيل پيغامات

  • آپ نئے موضوعات پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ جوابات نہیں پوسٹ کر سکتے ہیں
  • آپ اٹیچمنٹ پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ اپنے پیغامات مدون نہیں کر سکتے ہیں
  •  
Cultural Forum | Study at Malaysian University