آہ فلسطین
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ۔
فلسطین دنیا کی سب سے مظلوم مسلم عوام جو کہ اپنوں کے ہی ہاتھوں ظلم کا شکار ہے۔ حیران ہونے کی ضرورت نہیں ہے کہ اسرائیلی اپنےنہیں ہیں وہ درندہ صفت قوم ہے میں اپنے تمام مسلم امت ،ااوہ میں یہاں امت کا لفظ غلط لکھ گیا ہوں صرف مسلم ہی اصل قصور وار ہیں ، امت کل لفظ ہم نے خود اپنی ڈکشنری سے نکال دیا ہے کہ اگر ہم امت ہوتے توکوئی بھی مسلمان بھائی آج اتنی تکلیف میں نہ ہوتا، کیا کشمیر، کیا سنکیانگ چین کا مسلم صوبہ سابقہ شمال داغستان اوراس کا سابقہ دارلحکومت کاشغر، سابقہ برما میانمار اور بوسنیا اور کس صوبہ کی بات کرو روس کا چیچینیا اورکہیں بھی آج مسلمان رسوا نہ ہورہا ہوتا ۔ مسلم خلافت ختم ہوئی اور اب یورپین خلافت شروع ہوئی یعنی غیروں اور غیر مسلم نے ہماری ہی بساط ہم پر پلٹ دی اب کسی بھی یورپی ملک پر آنچ آتی ہ ے تو پورا کا پوار یورپ ایک ہوجاتا ہےاور جب ہم پر آنچ آتی ہے تو ہم مسلم اپنی اپنی بغلیں جھانکنے لگتے ہیں کہ کسی طرح ہماری جانیں بچ جائیں ۔ جب ہم خدا کی رسی کو چھوڑ دیں گے اور بیرونی آقاؤں کی چاپلوسی میں لگے ہوئے ہیں۔ مسئلہ یہ ہےکہ ہم دوبارہ ایک امت کب بنیں گے۔اس وقت جب ہم اپنا سب کچھ لٹا چکے ہوں گے اس وقت جب فلسطین کا بچہ بچہ لہولہان ہوچکا ہوگا اور وہ سب کچھ لٹا چکے ہوں گے