نتائج کی نمائش 1 تا: 3 از: 3

موضوع: جب ہم کہیں نہ ہوں گے

  1. #1
    رکنِ خاص نگار کا اوتار
    تاريخ شموليت
    Dec 2011
    پيغامات
    5,360
    شکریہ
    663
    357 پیغامات میں 424 اظہار تشکر

    جب ہم کہیں نہ ہوں گے

    جب ہم کہیں نہ ہوں گے، تب شہر بھر میں ہوں گے
    پہنچے گی جو نہ اُس تک، ہم اُس خبر میں ہوں گے

    تھک کر گریں گے جس دَم، بانہوں میں تیری آ کر
    اُس دَم بھی کون جانے، ہم کس سفر میں ہوں گے


    اے جانِ! عہد و پیماں، ہم گھر بسائیں گے، ہاں
    تُو اپنے گھر میں ہو گا، ہم اپنے گھر میں ہوں گے


    میں لے کے دل کے رِشتے، گھر سے نکل چکا ہوں
    دیوار و دَر کے رِشتے، دیوار و دَر میں ہوں گے


    تِرے عکس کے سِوا بھی، اے حُسن! وقتِ رُخصت
    کچھ اور عکس بھی تو، اس چشمِ تر میں ہوں گے


    ایسے سراب تھے وہ، ایسے تھے کچھ کہ اب بھی
    میں آنکھ بند کر لوں، تب بھی نظر میں ہوں گے


    اس کے نقوشِ پا کو، راہوں میں ڈھونڈنا کیا
    جو اس کے زیرِ پا تھے وہ میرے سر میں ہوں گے


    وہ بیشتر ہیں، جن کو، کل کا خیال کم ہے
    تُو رُک سکے تو ہم بھی اُن بیشتر میں ہوں گے


    آنگن سے وہ جو پچھلے دالان تک بسے تھے
    جانے وہ میرے سائے اب کِس کھنڈر میں ہوں گے


  2. اس مفید مراسلے کے لئے درج ذیل رُکن نے نگار کا شکریہ ادا کیا:

    بےباک (11-17-2014)

  3. #2
    ناظم
    تاريخ شموليت
    Nov 2010
    پيغامات
    754
    شکریہ
    148
    74 پیغامات میں 100 اظہار تشکر

    جواب: جب ہم کہیں نہ ہوں گے

    ہممممممممممممم
    بہت اعلی انتخاب نگار بھائی
    گر نہیں مجھ کو میسر اب تیری محفل تو کیا
    کیا یہ کم ہے اب بھی تیرا دوست کہلاتا ہوں


  4. اس مفید مراسلے کے لئے درج ذیل رُکن نے عبادت کا شکریہ ادا کیا:

    نگار (11-17-2014)

  5. #3
    رکنِ خاص نگار کا اوتار
    تاريخ شموليت
    Dec 2011
    پيغامات
    5,360
    شکریہ
    663
    357 پیغامات میں 424 اظہار تشکر

    جواب: جب ہم کہیں نہ ہوں گے

    پسند کرنے کا بہت بہت شکریہ عبادت بھائی

آپ کے اختيارات بسلسلہ ترسيل پيغامات

  • آپ نئے موضوعات پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ جوابات نہیں پوسٹ کر سکتے ہیں
  • آپ اٹیچمنٹ پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ اپنے پیغامات مدون نہیں کر سکتے ہیں
  •  
Cultural Forum | Study at Malaysian University