نتائج کی نمائش 1 تا: 1 از: 1

موضوع: 18 نومبر شبلی نعمانی کا یوم وفات

  1. #1
    ناظم جاذبہ کا اوتار
    تاريخ شموليت
    Dec 2013
    مقام
    کراچی ، پاکستان
    پيغامات
    603
    شکریہ
    814
    381 پیغامات میں 573 اظہار تشکر

    18 نومبر شبلی نعمانی کا یوم وفات

    آج 18 نومبر اُردو زبان کو علمی سرمائے سے مالا مال کرنے والے نامور ادیب " علامہ شبلی نعمانی " کا یوم وفات ہے۔
    علامہ شبلی نعمانی کا اصل نام محمد شبلی تھا تاہم حضرت امام ابو حنیفہ کے اصل نام نعمان بن ثابت کی نسبت سے انہوں نے اپنا نام شبلی نعمانی رکھ لیا تھا۔ وہ 1857ء میں اعظم گڑھ کے ایک نواحی قصبے میں پیدا ہوئے۔ آپ کی تعلیم بڑے اچھے ماحول اور اپنے عہد کے اعلیٰ ترین درس گاہوں میں ہوئی۔
    1882ء میں وہ علی گڑھ کالج کے شعبۂ عربی سے منسلک ہوگئے، یہاں انہیں سرسید احمد خان اور دوسرے علمی اکابر کی صحبت میسر آئی، جس نے ان کے ذوق کو نکھارنے میں اہم کردار ادا کیا۔
    علامہ شبلی نعمانی کا ایک بڑا کارنامہ ندوۃ العلما کا قیام ہے۔ ان کی زندگی کا حاصل ان کی تصنیف سیرت النبی سمجھی جاتی ہے تاہم بدقسمتی سے ان کی زندگی میں اس معرکہ آرا کتاب کی فقط ایک جلد شائع ہوسکی تھی۔ ان کے انتقال کے بعد یہ کام ان کے لائق شاگرد سید سلیمان ندوی نے پایہ تکمیل کو پہنچایا۔ شبلی نعمانی کی دیگر تصانیف میں شعر العجم، الفاروق، سیرت النعمان، موازنۂ انیس و ادبیر اور الغزالی کے نام سرفہرست ہیں۔
    علامہ شبلی نعمانی کا انتقال 18 نومبر 1914 میں ہوا ۔ آپ کا مزار اعظم گڑھ میں واقع ہے۔
    پوچھتے کیا ہو جو حال شب ِتنہائی تھا
    رخصت ِصبر تھی یا ترک ِشکیبائی تھا
    شب ِفرقت میں دل ِغمزدہ بھی پاس نہ تھا
    وہ بھی کیا رات تھی،کیا عالم ِتنہائی تھا
    میں تھا یا دیدہء خوں نابہ فشاں بھی شب ِہجر
    ان کو واں مشغلہء انجمن آرائی تھا
    پار ہائے دل خونیں کی طلب تھی پیہم
    شب جو آنکھوں کی مری ذوق ِخود آرائی تھا
    رحم تو ایک طرف پایہ شناسی دیکھو
    قیس کو کہتے ہیں ،مجنوں تھا ،صحرائی تھا
    آنکھیں قاتل سہی پر زندہ جو کرنا ہوتا
    لب میں ایحان تو اعجاز ِمسیحائی تھا
    دشمن ِجان تھے ادھر ہجر میں درد و غم و رنج
    اور ادھر ایک اکیلا ترا شیدائی تھا
    کون اس راہ سے گذرا ہے کہ ہر نقش ِقدم
    چشم ِعاشق کی طرح اس کا تماشائی تھا
    ہم نے بھی حضرت شبلی کی زیارت کی تھی
    یوں تو ظاہر میں مقدس تھا یہ شیدائی تھا
    علامہ شبلی نعمانی
    جاذبہ


    اردومنظرفورم

  2. اس مفید مراسلے کے لئے درج ذیل رُکن نے جاذبہ کا شکریہ ادا کیا:

    شاہنواز (11-18-2014)

آپ کے اختيارات بسلسلہ ترسيل پيغامات

  • آپ نئے موضوعات پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ جوابات نہیں پوسٹ کر سکتے ہیں
  • آپ اٹیچمنٹ پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ اپنے پیغامات مدون نہیں کر سکتے ہیں
  •  
Cultural Forum | Study at Malaysian University