نتائج کی نمائش 1 تا: 2 از: 2

موضوع: ایسی وحشت پہ میں قربان بھی ہو سکتا ہوں

  1. #1
    ناظم جاذبہ کا اوتار
    تاريخ شموليت
    Dec 2013
    مقام
    کراچی ، پاکستان
    پيغامات
    603
    شکریہ
    814
    382 پیغامات میں 575 اظہار تشکر

    Smile ایسی وحشت پہ میں قربان بھی ہو سکتا ہوں


    ایسی وحشت پہ میں قربان بھی ہو سکتا ہوں
    میں جو دریا ہوں بیابان بھی ہو سکتا ہوں

    ہسنے رونے کے علاوہ بھی رسائی ہے مری
    میں اگر چاہوں تو حیران بھی ہو سکتا ہوں

    میں کہ جس خاک میں پامال ہوا جاتا ہوں
    میں اُسی خاک پہ احسان بھی ہو سکتا ہوں


    مجھہ پہ مشکل نہ بنا گزری ہوئی یادوں کو
    میں تجھے بھول کے آسان بھی ہو سکتا ہوں

    اتنے غم دیتے ہوئے یہ بھی نہ سوچا اُس نے
    میں کسی غم میں پریشان بھی ہو سکتا ہوں

    میں کہ جس شوق میں آباد ہوں مقصود وفا
    میں اُسی شوق میں ویران بھی ہو سکتا ہوں

    مقصود وفا





    جاذبہ


    اردومنظرفورم

  2. #2
    ناظم خاص تانیہ کا اوتار
    تاريخ شموليت
    Nov 2010
    مقام
    گجرات
    پيغامات
    7,869
    شکریہ
    949
    880 پیغامات میں 1,107 اظہار تشکر

    جواب: ایسی وحشت پہ میں قربان بھی ہو سکتا ہوں

    واہ واہ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔



  3. اس مفید مراسلے کے لئے درج ذیل رُکن نے تانیہ کا شکریہ ادا کیا:

    جاذبہ (11-22-2014)

آپ کے اختيارات بسلسلہ ترسيل پيغامات

  • آپ نئے موضوعات پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ جوابات نہیں پوسٹ کر سکتے ہیں
  • آپ اٹیچمنٹ پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ اپنے پیغامات مدون نہیں کر سکتے ہیں
  •  
Cultural Forum | Study at Malaysian University