نتائج کی نمائش 1 تا: 1 از: 1

موضوع: جہانِ کہنہ کے مفلوج فلسفہ دانو۔۔۔۔

  1. #1
    منتظم اعلی
    تاريخ شموليت
    Feb 2013
    پيغامات
    234
    شکریہ
    291
    119 پیغامات میں 184 اظہار تشکر

    جہانِ کہنہ کے مفلوج فلسفہ دانو۔۔۔۔

    جہانِ کہنہ کے مفلوج فلسفہ دانو
    نظامِ نو کے تقاضے سوال کرتے ہیں
    یہ شاہراہیں اسی واسطے بنی تھیں کیا
    کہ اِن پہ دیس کی جنتا سسک سسک کے مرے
    زمیں نے کیا اسی کارن اناج اُگلا تھا
    کہ نسلِ آدم وحوا بلک بلک کے مرے
    ملیں اِسی لیے ریشم کے ڈھیر بنتی ہیں
    کہ دخترانِ وطن تار تار کو ترسیں
    چمن کو اس لیے مالی نے خوں سے سینچا تھا
    کہ اسکی اپنی نگاہیں بہار کو ترسیں
    زمیں کی قوتِ تخلیق کے خداوندو
    ملوں کے منتظمو، سطلنت کے فرزندو
    پچاس لاکھ افسردہ گلے سڑے ڈھانچے
    نظامِ زر کے خلاف احتجاج کرتے ہیں
    خموش ہونٹوں سے دم توڑتی نگاہوں سے
    بشر بشر کے خلاف احتجاج کرتے ہیں


    ساحر لدھیانوی
    نحن عشاق الحسین ع
    اگر آپ حق پر کھڑے ہیں توآپ کو چلا کربات کرنے کی ضرورت نہیں
    اور اگر آپ حق پر نہیں ہیں تو چلا کربات کرنے کا کوئی فائدہ نہیں


  2. اس مفید مراسلے کے لئے درج ذیل 2 اراکین نے aliimran کا شکریہ ادا کیا:

    بےباک (02-18-2015),تانیہ (02-13-2015)

آپ کے اختيارات بسلسلہ ترسيل پيغامات

  • آپ نئے موضوعات پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ جوابات نہیں پوسٹ کر سکتے ہیں
  • آپ اٹیچمنٹ پوسٹ نہیں کر سکتے ہیں
  • آپ اپنے پیغامات مدون نہیں کر سکتے ہیں
  •  
Cultural Forum | Study at Malaysian University